آسٹریلیا میں بچوں کا جنسی استحصال، کلیسا نے 276 ملین ڈالر ادا کر دیئے
  17  فروری‬‮  2017     |     دنیا

کینبرا(روزنامہ اوصاف) آسٹریلیا میں کیتھولک چرچ نے ماضی میں جنسی زیادتیوں کا شکار ہونے والے افراد کو زر تلافی ادا کرنا شروع کر دیا ہے۔جرمن ذرائع ابلاغ کے مطابق کلیسا نے یہ زر تلافی تقریباً ہر اس متاثرہ شخص کو دیا ہے، جس نے جنسی زیادتی کی شکایت درج کرائی تھی۔ جنسی زیادتی کا شکار ہونے والے افراد میں آسٹریلوی کیتھولک چرچ نے مجموعی طور پر 213 ملین امریکی ڈالر کے برابر (276 ملین آسٹریلوی ڈالر) بطور زر تلافی تقسیم کیے ہیں۔اوسطاًہر متاثرہ شخص کو اکانوے ہزار آسٹریلین ڈالر دیے گئے ہیں۔ اس ضمن میں مکمل کی گئی ایک تحقیقاتی رپورٹ میں اس زر تلافی کی ادائیگی کی تفصیلات جاری کی گئی ہیں۔اس تفتیشی رپورٹ کو مرتب کرنے والے رائل کمیشن میں شامل استغاثہ کے ایک وکیل بیرسٹر گیل فرنیس کے مطابق چرچ نے 1980ءسے لے کر 2015ءتک زر تلافی کی ادائیگی کا سلسلہ جاری رکھا۔پادریوں اور دیگر کلیسائی شخصیات کی جانب سے کی گئی جنسی زیادتیوں کے ان واقعات نے آسٹریلوی معاشرے کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا تھا۔رواں ماہ کے اوائل میں 4400 سے زائد افراد نے دعویٰ کیا تھا کہ انہیں بھی بچپن میں جنسی استحصال کا نشانہ بنایا گیا تھا۔ یہ تعداد ان 30 ہزار سے زائد افراد کی ہے، جن کو تلافی کے طور پر کیتھولک چرچ نے ادائیگی کر دی ہے۔ ابھی کئی سو دیگر متاثرین کے دعووں کی چھان بین کی جا رہی ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

دنیا

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved