’’امریکہ اور روس کے جنگی طیارے آمنے سامنے‘‘
  19  اپریل‬‮  2017     |     دنیا
واشنگٹن (آئی این پی)امریکی وزارت دفاع نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکی طیاروں نے 2 روسی TU-95 بمبار طیاروں کی پرواز میں مداخلت کر کے انہیں آگے بڑھنے سے روک دیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطا بق دو امریکی F-22 ریپٹر جنگی طیاروں نے الاسکا کے جوار میں دو روسی TU-95 بمبار طیاروں کی پرواز میں مداخلت کر کے انہیں آگے بڑھنے سے روک دیا۔امریکی وزارت دفاع پینٹا گون کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق روسی طیاروں کو الاسکا کے علاقے میں امریکی فضائی حدود کی طرف بڑھنے کی وجہ سے روکا گیا ہے۔پینٹاگون پیسیفک فورسز کمانڈ آفس کے ترجمان میجر گیرے راس نے کہا ہے کہ روسی طیاروں کو روکنے کا واقعہ سوموار کے روز الاسکا کے جزیرے کوڈیاک سے 160 کلو میٹر دور پیش آیا ہے۔راس نے طیاروں کے درمیان کوئی مواصلاتی رابطہ نہ ہونے کا ذکر کیا اور کہا کہ شمالی امریکہ ائیر ڈیفنس کمانڈ آفس شمالی امریکہ کی فضائی حدود پر بغور نگاہ رکھے ہوئے ہے اور ملکی فضائی خود مختاری کی ضمانت کے لئے اور فضائی حدود کے تحفظ کے لئے ہمہ وقت تیار ہے۔واضح رہے کہ امریکی جنگی طیاروں نے جولائی 2015 کو بھی کیلیفورنیا کے کھلے سمندر میں امریکی فضائی حدود سے قریب آنے والے روسی جنگی طیاروں کا روکا تھا ۔

اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 



 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

دنیا

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved