08:18 am
’نواز شریف‘ کا ایک خطرناک بیان جس کو بھارت نے اپنے حق میں استعمال کرلیا، افسوسناک خبر

’نواز شریف‘ کا ایک خطرناک بیان جس کو بھارت نے اپنے حق میں استعمال کرلیا، افسوسناک خبر

08:18 am

دی ہیگ(مانیٹرنگ ڈیسک) عالمی عدالت انصاف میں پاکستان میں پکڑے جانے والے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کا کیس زیر سماعت ہے۔ کلبھوشن یادیو کیس کی عالمی عدالت میں سماعت کے دوران پاکستانی وکیل خاور قریشی کے جاندار دلائل سن کر بھارتی وکیل سر پکڑ کر بیٹھ گئے تھے۔ جس سے خیال کیا جا رہا تھا کہ اب بھارت کی اس کیس میں شکست یقینی ہے کیونکہ بھارت کے پاس ثبوت کے طور پر پیش کرنے کے لیے کچھ نہیں رہا ۔ تاہم سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جس میں دیکھا گیا کہ عالمی عدالت میں بھارت کے وکیل نے پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف کے بیان ''پاکستان میں متحرک عسکریت پسند تنظیمیں ممبئی میں بھارتیوں کی ہلاکت کی ذمہ دارہیں'' کو پاکستان کے خلاف ثبوت کے طور پر پیش کر دیا۔ بھارتی وکیل نے کہا کہ پاکستان نے بڑے دہشتگرد حملوں میں ملوث دہشتگردوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی نہ ہی ان کا کوئی ٹرائل کیا گیا۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کے قومی اخبار ڈان نے سابق وزیراعظم نواز شریف کا ایک انٹرویو کیا جس میں انہوں نے ممبئی حملوں میں پاکستان میں موجود تنظیموں کے ملوث ہونے کا اعتراف کیا تھا۔ اس حوالے سے دی ہیگ میں موجود اُردو پوائنٹ کے نمائندہ خصوصی محمد کامران نے بھی سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو پیغام جاری کیاجس میں انہوں نے عالمی عدالت انصاف میں بھارتی وکیل کی جانب سے نواز شریف کے بیان کو بطور ثبوت پیش کرنے کا احوال بتایا۔ انہوں نے اپنے ویڈیو پیغام میں نہایت افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آج میں نواز شریف اور ان کے چاہنے والوں سمیت مسلم لیگ ن کے حامیوں کو مبارکباد پیش کرنا چاہتا ہوں، کہ اُن کے محبوب قائد نے پاکستان کی اتنی بڑی خدمت کی ہے۔ محمد کامران نے کہا کہ میرے خیال میں اب اس میں کسی قسم کا شک و شُبہ نہیں رہا کہ نواز شریف کس کے لیے کام کرتے رہے ہیں اور اب بھی کس کے لیے کام کر رہے ہیں۔ سوشل میڈیا پر بھارتی وکیل کی جانب سے نواز شریف کے بیان کو عالمی عدالت میں ثبوت کے طور پر پیش کرنے اور بھارتی وکیل کے بیان کی ویڈیو پر سابق وزیراعظم نواز شریف کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ سوشل میڈیا صارفین کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے ممبئی حملوں میں پاکستان کے ملوث ہونے سے متعلق تردید کی بجائے ایسا بیان دیا جو آج عالمی عدالت میں بطور ثبوت پیش کر دیا گیا ہے۔ سوشل میڈیا صارفین کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے اس ایک بیان کی وجہ سے کلبھوشن یادیو کیس میں پاکستان کی یقینی جیت پر بھی شکوک پیدا ہو گئے ہیں، اگر پاکستان کلبھوشن یادیو کیس ہار گیا تو اس ضمن میں تمام تر ذمہ داری نواز شریف پر عائد ہو گی۔ کچھ صارفین نے تو مسلم لیگ ن کے فالوورز کو بھی ہدایت کی کہ اب ہوش کے ناخن لیں اور دیکھیں کہ کون پاکستان کے ساتھ ہے اور کون پاکستان کے دشمنوں کے ساتھ ہے۔ یاد رہےکہ گذشتہ برس ملتان میں ریلی کے دوران قومی اخبار کو دئے گئے ایک انٹرویو کے دوران سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا تھا کہ ممبئی حملوں میں پاکستان میں متحرک عسکریت پسند تنظیمیں ملوث تھیں، یہ لوگ ممبئی میں ہونے والی ہلاکتوں کے ذمہ دار ہیں، مجھے سمجھائیں کہ کیا ہمیں انہیں اس بات کی اجازت دینی چاہیے کہ سرحد پار جا کر ممبئی میں 150 لوگوں کو قتل کردیں۔ نواز شریف کے متنازعہ بیان کو بھارتی میڈیا نے بھارت کی فتح قرار دیا تھا۔ جس کے بعد اب نواز شریف کے اس بیان کو پاکستان کے خلاف ثبوت کے طور پر استعمال کیا جارہاہے۔