06:43 am
کیا میں نے خودکشی کرلی؟

کیا میں نے خودکشی کرلی؟

06:43 am

اللہ جانے یہ میرا مقدر تھا یا بلی کے بھاگوں چھینکاٹوٹاتھا مجھے  معلوم نہیں......میرے خوابوں کی تعبیر کیاملی کہ میں تو چیونٹی بھرا کباب بن کررہ گیا۔
اللہ جانے یہ میرا مقدر تھا یا بلی کے بھاگوں چھینکاٹوٹاتھا مجھے  معلوم نہیں......میرے خوابوں کی تعبیر کیاملی کہ میں تو چیونٹی بھرا کباب بن کررہ گیا۔ میرے اردگرد ایسے ایسے تجربہ کار کاری گر جمع ہوگئے کہ میں سمجھا کہ اب تو کشتی پار لگی ہی لگی۔ میری ایک خراب عادت ہے اپنی اس خراب عادت کاپتہ تواب چلاکہ میں کوئی قدم اٹھانے سے پہلے اپنے ساتھیوں سے مشورہ ضرور کرتاہوں۔ میں نے ملنے والی کرسی سنبھالنے سے پہلے اپنے گرد گھیراڈالنے والے احباب جوواقعی بڑے بڑے سابقہ تجر بہ کار کاری گراور ہمیشہ ہر کرسی کے ساتھ چپکے رہنے والے‘ میں نے ان کے گھیرے میں آکرایسے ایسے بڑے بڑے اعلان پراعلان کردے جس سے میرے مخالفین کے منہ کھلے کے کھلے رہ گے۔ میرے ساتھی بغلیں بجانے لگے۔ پہلے تومیں بھی بہت خوش ہوامیرااعتماد بھی بحال ہونے گالیکن جلد ہی آٹے دال کابھائو معلوم ہوگیا۔ پہلے سودن گزرگئے اعلان کردہ معاملات جوں کے توں رہے ایک اعلان آنکھیں بند کرکے یہ بھی کردیاتھا کہ مرجائوںگاسسرال نہیں جائوں گا۔ کرسی سنبھالے ابھی بقول شخصے جمعہ جمعہ آٹھ دن بھی نہیں گزرے تھے کہ  چودہ طبق روشن ہونا شروع ہوگے۔
 مشیران ناہنجاراب بھی مشوروں پر مشورے دیتے نہیں تھک رہے تھے ایک دن مجبور ہوکر اپنے خزانچی اور بھوں پومشیر کی چھٹی کرناپڑی پھر کچھ ردوبدل کے بعد حسب عادت پھر مشورہ کیا مشورہ دینے والے وہی کھسے پٹے پرانے پاپیوں نے اب کے مشورہ دیا کہ اگر فوری آپ نے سسرال والوں سے رابطہ نہ کیا پھرتولٹیاہی ڈوب سکتی ہے اور کرسی بھی کھسک سکتی ہے مجبوراً سسرال والوں سے سلسلہ جنبانی شروع کیاتووہ اپنے لائولشکر سمیت گھر میں تو گھسے ہی گھسے اب عرب کے اونٹ کی مانندکوشش کررہے ہیں کہ کرسی کوباہر کردیں۔ کرسی پرتو میرا قبضہ ہے پھر میراکیاہوگامیرے اردگرد جمع گھسے پٹے میرے حواریوں کاکہنا اب بھی یہی ہے فکر کی کوئی بات نہیں اس طرح تو ہوتا ہے اس طرح کے کاموں میں ابھی تو بہت سے تجربات سے گزناہوگا ابھی توابتدا ہے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں۔ ہم ہیں ھخ سب کچھ ٹھیک ہوجائے گا۔  
مخالفین ہیں کہ انہیں چین نہیں پڑرہا ان میں سے ہر ایک  کی زبان بادن گز کی ہے جسے وہ دھواں دھار چلارہے ہیں مجھے بارباریاد دلانے سے باز نہیں آتے کہ سودن گذر گئے کچھ نہیں ہوا۔  سسرال والے بن بلائے آگئے۔ اب خطرہ یہ بتایا جارہا ہے کہ کرسی توجائے جائے گی کہیں گھر بھی ہاتھوں سے نہ نکل جائے۔ ان لوگوں کاخیال ہے کی میں نے چنیدہ افراد کو نکال کر غیر معیاری غیر چنیدہ لوگوں کو اپنی کرسی کے  اردگرد جمع کرلیا ہے۔ کہیں نئے آنے والے میری لٹیا ہی نہ ڈبودیں مجھے کرسی نے بری طرح جکڑلیاہے میں اب اپنی فطرت کے خلاف کرسی سے چمٹا رہناچاہتا ہوں کمبل کی طرح میرے ساتھیوں کامیرا مفاد بھی اسی میں ہے۔ دوستوں کاکہنا ہے قبضہ سچا جھگڑا جھوٹا‘ویسے مخالفین  نے مجھے جھوٹا کہنا شروع کردیاہے مجھے پتہ ہے کوئوں کے کوسنوں سے ڈھور نہیں مراکرتے۔ میرے گھروالوں کاخیال ہے میں تو نہیں میرے ضمیرنے خودکشی کرلی ہے ان کے خیال میں خودکشی مجھے کرناچاہیے تھی لیکن انھیں کیامعلوم کرسی کانشہ کیاہوتاہے پھر منہ کو تواب خون لگاہے ابھی کیسے مجھ سے جان چھوٹ سکتی ہے۔
 یہ اوربات کہ سسرالیوں نے جو حساب کتاب پھیلاناشروع کیاہے اس سے ڈربھی لگ رہا ہے کہیں ساری کے چکر میں آدھی سے بھی ہاتھ نہ دھونے پڑجائیں پھر ہم نہ گھر کے رہیں گے نہ گھاٹ کے‘ لیکن ہمارے مخلص یہ بھی پتہ نہیں وہ مخلص ہیں بھی کہ نہیں ‘مشورہ دے رہے ہیں کوئی فکر کی بات نہیں تجربہ کرنے سے ہی بندہ کچھ سیکھتا ہے ۔ وہ مشہو رمثل نہیں سنی بندہ گاتے گاتے ہی گویابنتاہے‘ جتنے پرانے پاپی آپ کی مخالفت کررہے ہیں وہ کون سے اپنی اماں کے پیٹ سے سیاست سیکھ کرآئے تھے سب نے اپنے اپنے وقت میں گھر کولوٹابھی اور آگ بھی جتنی لگاسکتے تھے لگائی ابھی  تو آپ کو کرسی سنبھالے دن ہی کتنے ہوئے ہیں۔ ہمارے پاس تو بڑاوقت پڑا ہے مخا لفین شورمچارہے ہیں وہ تو آخیر تک مچاتے رہیں گے ان کاتوفی الحال یہی کام رہ گیاہے آپ کی کرسی مضبوط ہے فکر کی کوئی بات نہیں آپ توپہلی بارکرسی نشین ہوئے ہیں ہمیں تو ہرکرسی نشین کاتجربہ ہے یہ معاملات تو یوں ہی چلتے چلاتے ہیں گھبرانے کی  قطعی ضرورت نہیں۔ خودکشی کریں آپ کے دشمن‘ سسرالی خزانچیوں نے اپنی بساط بچھالی ہے ضرور کچھ نہ کچھ ہوکر رہے گا ۔  فکر کیسی جوکچھ ہوناہے وہ توہوکررہے گا ۔ آریاپار ہم ہیںناں۔ گھبرانے کی ضرورت نہیں ۔