04:02 pm
موسیٰ علیہ السلام کی شکست کے لئے بلعم بار عور کی دعا

موسیٰ علیہ السلام کی شکست کے لئے بلعم بار عور کی دعا

04:02 pm

‮وہ موسیٰ علیہ اسلام کا امتی تھا اور ایک عبادت گزار شخص تھا۔ وہ شہر کنعان کا رہائشی تھا۔ حضرت موسیٰ علیہ السلام کعنان پر حملہ آور ہوئے تھے۔ وہاں کے لوگوں نے اس سے درخواست کی کہ وہ موسیٰ علیہ السلام کی شکست کے لئے دعا کرے۔ وہ اس امر پر راضی ہو گیا اور اپنے دین و ایمان سے ہاتھ دھو بیٹھا اور ذلیل و خوار ہوا کیونکہ اس نے موسیٰ علیہالسلام سے مقابلہ کیا تھا۔ بیمار اس سے دم کروانے آتے تھے
اور شفا یاب ہو جاتے تھے لیکن اب اس میں غرور تکبر نے سر اٹھایا تھا اور اللہ تعالیٰ نے شیطان کی مانند اسے برائی میں مشہور فرما دیا تھا تاکہ لوگوں کے لئے عبرت کا سامان بن جائے۔ ہاروت اور ماروت نے بھی غرور اور تکبر کی وجہ سے نقصان اٹھایا تھا۔ ان کو اپنی پار سائی پر ناز تھا ، لیکن قضائے الہی کے سامنے دم مارنے کی کسے جرات ہے۔ جب وہ دنیا داروں کے عیوب دیکھتے تو ان پر غصہ دکھاتے لیکن ان کی نظر اپنے عیوب پر نہ پڑی تھی۔ بد صورت کو جب آئینہ دکھایا گیا، اسے آئینے پر غصہ آگیا اورا س نے اپنا منہ دوسری جانب پھیر لیا۔ خود پسند دوسروں کے عیب پر آگ بگولہ ہو جاتا ہے لیکن اپنے عیوب کو بھول جاتا ہے۔ اللہ تعالیٰ نے ہاروت ماروت سے فرمایا کہ کلمہ شکر ادا کرو کہ تم شہوت سے بچے ہوئے ہو اور تمہاری پارسائی محض اس وجہ سے کہ تم میری حفاظت کے حصار میں ہو۔ اپنی پارسائی کو منجانب اللہ سمجھو وگرنہ شیطان کے غلبے میں آجاؤ گے جس طرح پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وسلم کا کاتب وحی شیطان کے غلبے میں آ گیا تھا۔

تازہ ترین خبریں