05:08 pm
خاندانی منصوبہ بندی کے حوالے سے شعوربیدارکرنیکی ضرورت ہے،راجہ اعظم

خاندانی منصوبہ بندی کے حوالے سے شعوربیدارکرنیکی ضرورت ہے،راجہ اعظم

05:08 pm

شگر ( نامہ نگار) یونین کونسل مرہ پی شگر کے زیر اہتمام شگر مرہ پی میں خاندانی منصوبہ بندی کے موضوع پر سیمینار (اہتمام نسل نو) کے عنوان سے تقریب منعقد کیا گیا سیمنار سے خطاب کرتے ہوے سابق رکن اسمبلی راجہ اعظم خان نے کہا ایک بہترین معاشرے کی تشکیل میں منصوبہ بندی کا اہم کردار ہوتا ہے بنی نوع انسان کو اللہ تعالیٰ نے شعور اور وسیع سچ کا مالک بنا کر پیدا کیا ہے انسان کو اللہ نے ہر مشکل اور سختی سے مقابلے کی صلاحیت بھی عطا کی ہے
تاہم بہت سارے معاملات میں انسان کی نا سمجھی اور کوتاہی دراصل انسانوں کے لئے پریشانی کا سبب بن جاتا ہے انہوں نے کہا بچوں کی پیدائش ایک فطری عمل ہے تاہم اس میں سمجھداری اور ذمہ داری سے کام لے تو ہم اپنے بچوں کو ایک بہترین مستقبل اور معاشرہ دینے میں کامیاب ہوتے ہیں وقت کی سب سے بڑی ضروت تیزی سے بڑھتی ہوئی آبادی پر قابو پانا ہے ہمیں آبادی پر کنٹرول کرتے ہوئے جو بچے پیدا ہوتے ہیں انہیں معاشرے کا بہترین اور کار آمد شہری بنانے میں کردار ادا کرنے کی ضرورت ہیجب ہم وسائل کے حساب سے پچوں کی پیدائش کے حوالے سے منصوبہ بندی کرینگے تو یقیناً غربت میں کمی اور خوشحال معاشرے کی تشکیل ممکن ہوگی جب بچے کم ہونگے تو ہم محدود وسائل میں بھی ان کی بہترین تربیت اور تعلیم کا بندوبست کر سکتے ہیں انہوں نیکہا ہمیں بچے اور بچیوں کے فرق کو بھی ختم کرنا ہوگا اور جتنے حقوق لڑکوں کی ہے اتنی ہی اہمیت لڑکیوں کی بھی ہونی چاہیئے تقریب سے خطاب میں معروف عالم دین علامہ شیخ جواد حافظی نے کہا بچوں کی پیدائش کے حوالے سے جو ضروری معلومات اور شعور اجاگر کرنے کے لئے عملی اقدامات وقت کی ضرورت ہیں انہوں نیکہا خاندانی منصوبہ بندی کے حوالے سے نوجوانوں اور نئے شادی شدہ جوڑوں میں آگاہی پیدا کرنے کی ضرورت ہے بچوں کی پیدائش میں صحت کے ساتھ ساتھ دینی احکامات پر بھی عمل ضروری ہے اور بچوں کو دینی احکامات کی روشنی میں زندگی گزارنے کی ترغیب دینا بھی بہت ضروری ہے انہوں نیکہا خاندانی منصوبہ بندی کے حوالے سے شعور پیدا کرنے کی ضرورت ہے اس سلسلے میں معاشرے کے تمام طبقے کو ملکر کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے انہوں نیکہا اسوقت گلگت بلتستان میں بہت سارے علاقوں میں غیر معیاری اشیائ￿ کی خریدوفروخت تشویشناک حد تک بڑھ چکی ہے انہوں نیکہا موجودہ دور میں غیر صحت مند بچوں کی پیدائش اور بچے بچیوں میں بیماریوں کی بنیادی وجہ ناقص اور غیر معیاری خوراک ہے انہوں نیکہا بچوں کی پیدائش پر اسلام اور شریعت میں کوئی پابندی نہیں مگر یہ بھی انصاف نہیں کہ وسائل سے بڑھ کر بچوں کی پیدائش ہو اور وہ اولاد معاشرے میں وبال بن جائے بچوں کی پیدائش میں شرعی احکامات کے ساتھ ساتھ حفظان صحت کے، اصولوں کی پاسداری بھی ضروری ہے اس تقریب سے خطاب میں اسوہ ایجوکیشن سسٹم شگر کے پرنسپل فدا حسین نے کہا خاندانی منصوبہ بندی پر عمل پیرا ہوکر آئندہ نسلوں کے مستقبل کو نہ صرف محفوط بنایا جاسکتا ہے بلکہ انکی بہترین تعلیم وتربیت کے زریعے ان کو معاشرے کا کار آمد فرد بھی بنایا جا سکتا ہے انہوں نیکہا یورپ کی ترقی کا بنیادی وجہ یہی ہے کہ انہوں نے خاندانی منصوبہ بندی کو اہمیت دی اور ایک منصوبہ بندی اور سمجھداری کے ساتھ بچوں کی پیدائش کا سلسلہ شروع کیا یہی وجہ ہے آج یورپ میں غربت کی شرح بھی کم ہے اور وہ لوگ ایک کامیاب قوم کی حیثیت سے زندگی گزاررہے ہیں تقریب سے خطاب میں ڈاکٹر محمد رضا نے کہا خاندانی منصوبہ بندی کے ساتھ ساتھ صحت مند بچوں کی پیدائش پر توجہ بہت ضروری ہے ہمیں پری میرج کونسلنگ کی بھی بہت ضرورت ہے بہتر منصوبہ بندی سے ہی بچوں کے مستقبل کو محفوظ بنایا جاسکتا ہے انہوں نیکہا حمل کا دورانیہ بچوں کی صحت مند پیدائش کے لئے بہت اہمیت کا حامل ہیں ایک صحت مند ماں ہی ایک صحت مند بچے کو جنم دے سکتی ہیں اس لئے دوران حمل خواتین کو انتہائی نگہداشت اور خیال رکھنے کی ضرورت ہے شرکائ￿ سے خطاب کرتے ہوئے سابق میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر حسن خان اماچہ نے کہا خاندانی منصوبہ بندی کے بارے میں شگر کی تاریخ میں پہلی بار تقریب کا اہتمام انتہائی حوصلہ افزائ￿ ہے انہوں نیکہا بچوں کی پیدائش میں وقفے اور منصوبہ بندی کی بہت زیادہ اہمیت ہے انہوں نیکہا خاندانی منصوبہ بندی کے بارے میں شعور کے لئے علمائ￿ کو اہم اور مثبت کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے اور علمائ￿ ہی اس معاملے میں عام لوگوں کا بہتر رہنمائی کرسکتے ہیں انہوں نیکہا صحت مند بچے کی پیدائش میں ماں کی صحت کا اہم کردار ہو تا ہے جس کے ضروری ہے کہ بچے کے پیدائش کے دوران ماں کی خوراک میں کوئی کمی نہ ہو اور بہترین خوراک میسر ہو مرہ پی شگر میں منعقدہ خاندانی منصوبہ بندی کے تقریب میں عوام کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

تازہ ترین خبریں