05:16 pm
وزیربرقیات جان بوجھ کر رابطہ سڑک چھومیک پل کوسیاسی ایشوبنارہے ہیں(تقی اخوانزادہ)

وزیربرقیات جان بوجھ کر رابطہ سڑک چھومیک پل کوسیاسی ایشوبنارہے ہیں(تقی اخوانزادہ)

05:16 pm

سکردو(پ ر) پاکستان تحریک انصاف گلگت بلتستان کے سیکرٹری اطلاعات تقی آخوند زادہ نے میڈیا کو جاری بیان میں کہا ہے کہ رابطہ سڑک چھومیک پل کو وزیر برقیات اکبر تابان نے جان بوجھ کر سیاسی ایشو بنا رہا ہے چھومیک کے عوام کو فائدہ پہنچانا موصوف کی سرشت میں شامل ہی نہیں ہے چونکہ انہیں پتہ ہے کہ زیادہ تر لوگوں نے پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دیا ہے پی سی ون میں تبدیلی اسی سلسلے کی کڑی ہے سڑک کو پی سی ون کے مطابق بنایا جائے
اسی میں سب کی بھلائی ہیچند بااثر افراد اور وزیر برقیات اکبر تابان اپنے آپ کو فائدہ پہنچانے کے لیے اصل نقشے میں رد و بدل کیا گیا ہے جس میں مبینہ طور پر محکمہ تعمیرات کے اعلیٰ افسران ملوث ہے مذکورہ لوگوں کی معاونت سے وزیر برقیات دھونس دھمکی کے ذریعہ پمپ سے سڑک گزارنا چاہتے تھے اب وہاں سے ممکن نہ ہونے کی صورت روخ کہیں اور موڑنے کا پلان بنایا ہے انہیں پتہ ہے کہ پی ٹی ڈی سی موٹل معاملے پر پی ایم سیکرٹریت نے پہلے ہی نوٹس لے رکھا ہے لہٰذا وہاں سے ممکن نہیں ہے اب ضلعی انتظامیہ پر دباؤ بڑھا کر وزیر برقیات اکبرتابان روخ کو کہیں اور موڑا جارہا ہے جوکہ سراسر بدنیتی پر مبنی ہے چھومیک عوام سے موصوف کی دشمنی کھل کر سامنے آیا جس کا برملا اظہار عمائدین چھومیک سے ملاقات میں انہوں کیا ہے ان کا کہنا کہ چھومیک سے روڈ گزارنا میرے لئے سیاسی نقصان ہے انہیں بخوبی اندازہ ہے کہ چھومیک کے زیادہ تر عوام نے پاکستان تحریک انصاف کو سپورٹ کیا تھا جس کے نتیجے میں موصوف سڑک کو اصل نقشے سے ہٹانا چاہتے ہیں ہے عوامی خواہشات کے برخلاف کام کرنے والوں کے خلاف وزیر امور کشمیر و گورنر گلگت بلتستان اور چیف سیکریٹری فوری طور پر نوٹس لیں۔انہوں نے کہا کہ وزیر برقیات اپنے مفاد کے لیے پی ٹی ڈی سی موٹل سے سڑک گزارنے کے لئے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہے ہیں جن میں محکمہ تعمیرات کے اعلی آفیسرز کی ایما شامل ہیں۔ اصل پی سی ون کے مطابق لاگت بھی کم ہے جبکہ بائی پاس سے چند قدم کے فاصلے پر ہے پہلے ہی سے سرکاری دو سڑک موجود ہے چند لاکھ میں لنک ممکن ہے بائی پاس چھومیک پل سے لنک ہو کر کے آگے بڑھ رہا ہے وزیر برقیات پمپ سے گزارنے پر بضد اس لئے ہے کہ کسی نہ کسی طریقے سے چھومیک عوام کو کوئی فائدہ نہ پہنچے جس میں پی ڈبلیو ڈی کے چند کرپٹ آفیسرز بھی ملوث ہیں مذکورہ معاملہ وزیراعظم سطح تک پہنچنے کے باوجود نیب اور ایف آئی کی خاموشی سمجھ سے باہر ہے عوامی فلاحی منصوبوں پر سیاست چمکانے والوں کے خلاف قانونی کاروائی ہونی چاہیے سرکاری خزانے کو نقصان پہنچانے والے جو بھی ہوں انہیں جیل بھیج دینی چاہیے تاکہ کرپشن کرنے والوں کے لیے نشان عبرت بنیں۔

تازہ ترین خبریں