05:36 pm
اپیلیٹ کوٹ میں چیف جج کی تعیناتی،نئی سمری میں فضل چودھری کانام شامل کیاجائے(وفاقی حکومت کی ہدایت)

اپیلیٹ کوٹ میں چیف جج کی تعیناتی،نئی سمری میں فضل چودھری کانام شامل کیاجائے(وفاقی حکومت کی ہدایت)

05:36 pm

گلگت ( اوصاف نیوز ) سپریم اپیلیٹ کورٹ گلگت بلتستان میں خالی چیف جج کی آسامی میں تقرری کیلئے سید ارشاد شاہ اور شفقت عباسی پر مشتمل سمری مسترد ہونے کے فوراً فضل چوہدری کا نام نئی سمری میں شامل کرنے کیلئے وفاقی حکومت نے صوبائی حکومت ( گورنر ) گلگت بلتستان کو ہدایات دیدیں ۔ تفصیلات کے مطابق 28اگست 2018کو سپریم اپیلیٹ کورٹ گلگت بلتستان کے چیف جج ڈاکٹر رانا محمد شمیم مدت ملازمت مکمل کرکے
سبکدوش ہونے سے سپریم اپیلیٹ کورٹ گلگت بلتستان میں سینئر جج جسٹس جاوید اقبال کو قائم مقام چیف جج کا چارج دیدیا گیا تھا گزشتہ ماہ جسٹس جاوید احمد بھی مدت ملازمت مکمل کرکے سبکدوش ہو گئے ، گورنر گلگت سے وفاق کو ارسال چیف جج کی آسامی پر تقرری کیلئے سید ارشاد شاہ کے نام کو فائنل کرکے سمری وفاق کو ارسال کر دی گئی تھی جو قانونی پیچیدگیوں کے باعث مسترد کر دی گئی اب سپریم اپیلیٹ کورٹ گلگت بلتستان میں چیف جج کی آسامی کیلئے نیا نام چوہدری فضل سامنے آگیا ، جو 2019کے ریفارمز کی تکمیل کے بعد وفاق کو ارسال کی جانے والی سمری میں فیورٹ ہوگا کیونکہ موصوف کا تعلق بابر اعوان سے بتایا جا رہا ہے جو پاکستان تحریک انصاف کے اہم مشاورتی و قانونی مشیر تصور کیا جاتا ہے 2019ریفارمز کے بعد بھجوائی جانے والی سمری میں تقریباً جوڈیشل کمیشن کا قیام عمل میں لانے اور ججوں کی تقرری جوڈیشل کمیشن کے ذریعے عمل میں لانے کا قومی امکان ہے اور 2019ریفارمز کو پارلیمنٹ کے ایکٹ کے ذریعے نافذ العمل ہوگا جس میں سپریم اپیلیٹ کورٹ کے چیف جج اور ججوں کی ماہوار تنخواہ اور مراعات بھی بحال کی سفارشات مرتب ہو چکی ہیںجو کہ 2018یں چیف جج اور ججز سپریم اپیلیٹ کورٹ ختم کیا گیا تھا ۔

تازہ ترین خبریں