06:31 pm
چلاس:واپڈاکالونی تھورپاورہائوس سے 2میگاواٹ بجلی حاصل نہ کی جاسکی

چلاس:واپڈاکالونی تھورپاورہائوس سے 2میگاواٹ بجلی حاصل نہ کی جاسکی

06:31 pm

چلاس(محمد قاسم)اندھیر نگری چوبٹ راج،واپڈا کالونی تھور چلاس میں تعمیر دو میگاواٹ ہائیڈرو پاور ہاوس واپڈا کی ناقص کارکردگی کی بھینٹ چڑھ گیا۔پاور ہاوس سے دو میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے صرف پانچ کلوواٹ بجلی پیدا ہو سکی۔ٹرائل کے دوران کم گیچ اور ناقص کوالٹی والے بڑے پائب جواب دے گئے۔دیامر ڈیم منصوبہ کی تعمیر کے لئے واپڈا کے انجنیئرز کے زیر نگرانی تعمیراتی منصوبے میں غیر معیاری
اور ناقص مٹیریل کے استعمال کے تمام ریکارڈ توڑ دئیے۔ہائیڈو پاور منصوبے میں بجلی کی فراہمی کے لئے پائب میں پانی چھوڑتے ہی پانی کا دباو برداشت نہیں کر سکے اور پائب ایک دم سکڑ گئے۔دو میگاواٹ کے منصوبے سے صرف پانچ کلو واٹ بجلی پیدا ہونا واپڈا انجینئر کی ناکامی اور ٹھیکداروں سے ملی بگھت کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ اس سے قبل واپڈا دیامر کے زیر نگرانی کروڑوں روپے کے سی بی ایم سکیموں میں ہونے والی کام کی ناقص کوالٹی کی وجہ سے عوام دیامر سراپا احتجاج ہوئے تھے اور جلسہ جلوس کر کے ٹھیکداروں اور غفلت کے مرتکب واپڈا انجینئرز کے خلاف کاروائی کا مطابعہ کیا تھا۔مگر اب تھور واپڈا کالونی ملازمین کی سہولت کے لئے تعمیر کیا گیا دو میگاوٹ واپڈا پاور ہاوس بھی واپڈا کی انجینئرز کی غفلت اور لاپرواہی کے بھیت چڑ گیا۔عوامی حلقوں نے واپڈا اپنے ناقص کارکردگی کو چھپانے کے لئے واپڈا سپوٹس کے کھیلوں کا انعقاد کر کے عوام کے لولی پاپ دے رہا ہے۔ کروڑوں روپے کا منظور شدہ سی بی ایم منصوبوں میں اب تک کسی قسم کی مثبت پیش رفعت نہیں کو رہی ہے۔ انہوں نے چئیرمین واپڈا نیپ اور دیگر وفاقی اور صوبائی تحقیقیاتی اداروں سے مطابعہ کرتے ہوئے کہا کہ واپڈا دیامر ڈیم منصوبہ کے ذمے دار واپڈا ماتھے پہ کلنک کا داغ بن گئے ہیں۔ان کی ناقص کارکردگی اور ترقیاتی منصوبوں میں ٹھیکداروں کے ساتھ مبنہ طور پہ ملی بگھت اور کمیشن خوری کر کے واپڈا کی ساگھ کو بری طرح متاثر کیا ہے۔ذمے دار ادارے ان کے خلاف سخت تحقیقات کر کے ملکی سطح کا میگا منصوبہ میں کرپشن لاپرواہی اور غفلت کے مرتکب ہونے پہ سخت سزا دے۔اور کام چور ٹھیکداروں کے خلاف بھی سخت کاروائی کرے جب کہ متاثرین ڈیم کی بہتری کے لئے سی بی ایم سکیموں پہ فوری کام شروع کریں۔