06:11 am
ڈیم فنڈ کے 9کروڑ کہاں گئے؟ تحقیقات کی جائے, سندھ حکومت

ڈیم فنڈ کے 9کروڑ کہاں گئے؟ تحقیقات کی جائے, سندھ حکومت

06:11 am

کرا چی (نیوز ایجنسی)مشیر اطلاعات قانون و اینٹی کرپشن سندھ بیرسٹر مرتضی وہاب نے کہا کہ ڈیم فنڈ میں مبینہ خرد برد کی اعلی سطح پر انکوائری کی جائے ،وفاقی وزیر کے بیان کے بعد ڈیم فنڈ سے متعلق شکوک و شبہات پیدا ہوگئے ہیں، گورنر ہاوس میں فنڈ ریزنگ تقریب میں وزیراعظم نے 76 کروڑ روپے جمع کرنے کی نوید سنائی تاہم گورنر سندھ نے76 کروڑ کے بجائے صرف 67کروڑ روپے کا چیک وزیراعظم کو پیش کیا،ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو سندھ اسمبلی میڈیا کارنر پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا،بیرسٹر مرتضی وہاب نے مزید کہا کہ دوسروں پر جھوٹے الزام لگانے والوں پر کرپشن ثابت ہورہی ہے۔ پی ٹی آئی کا جمہور اور نہ ہی جمہوریت سے کوئی تعلق ہے۔ آرٹیکل 149 کا حوالہ دینے والے آرٹیکل148اور150 کا مطالعہ بھی کرلیں،مرتضی وہاب کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی نے ہمیشہ الزام تراشی کی سیاست کی ہے، انہوں نے 22 سالہ سیاسی تاریخ میں دوسروں پر الزمات لگائے لیکن انکے الزامات آج تک ثابت نہیں ہوئے، عمران نیازی اور انکی ہمشیرہ پر الزام لگے تو وہ اسکا جواب نہیں دیتے۔ اکبر ایس بابر کی شوکت خانم اسپتال کی فنڈنگ کے خلاف پٹیشن ہے لیکن اسکا کچھ نہیں ہوا،انہوں نے کہا کہ وہ آج میں ایک اہم انکشاف کرنے جارہے ہیں، جو الزام نہیں بلکہ حقیقت ہے۔ بیرسٹر مرتضی وہاب نے بتایا کہ ایک وفاقی وزیر فیصل واوڈا نے اپنے انٹرویو میں ڈیم فنڈ میں کیش جمع کرانے کے بجائے چیک کی صوت میں جمع کرانے کی درخواست کی ہے، اسکی ضرورت کیوں پیش آئی،مرتضی وہاب نے کہا کہ کچھ عرصہ قبل گورنر ہاوس کراچی میں ڈیم فنڈ ریزنگ سے متعلق تقریب میں وزیراعظم عمران خان نیازی نے ٹوئٹ کیا کہ تقریب میں 76کروڑ روپے جمع کرلئے، اس تقریب کے منتظم فخر عالم نے بھی بیان دیا کہ تقریب میں 76کروڑ روپے جمع ہوگئے لیکن گورنر صاحب نے وزیراعظم کو67 کروڑ روپے کا چیک دیا۔ بتایا جائے کہ باقی پیسے کہاں گئے ؟ یہ سوال کوئی اپوزیشن رکن نہیں بلکہ وفاقی وزیر نے یہ سوال اٹھائے ہیں۔انہوں نے عدالت عظمی سے بھی معاملے کی تحقیقات کا مطالبہ کیااور کہا کہ اگر کوئی ہیرا پھیری ہورہی ہے تو اس کی انکوائری ہونی چاہئے۔ سندھ حکومت