07:17 am
’’ راولپنڈی‘‘ سے آنیوالے پیغام پر وزیراعظم نے اپنا فیصلہ سنادیا

’’ راولپنڈی‘‘ سے آنیوالے پیغام پر وزیراعظم نے اپنا فیصلہ سنادیا

07:17 am

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) نواز شریف کو لندن جانے دیا جائے،’’ راولپنڈی‘‘ سے آنیوالے پیغام پر وزیراعظم نے اپنا فیصلہ سنادیا، ڈیل میں نیا موڑآگیا۔۔نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئےسینئرصحافی و تجزیہ کار محمد مالک نے کہا کہ میری اطلاع یہ ہے کہ کچھ دن پہلے تک خاندانی ذرائع کے مطابق این آر او حاصل کرنے کی ایک کوشش اور کی گئی۔
شریف خاندان نے اپنے ایک عزیز کے ذریعے این آر او حاصل کرنے کی کوشش کی ۔ شریف خاندان کے اس عزیز نے وزیراعظم عمران خان کو اس حوالے سے پیغام بھجوایا لیکن وزیراعظم عمران خان نے اس کو ایک مرتبہ پھر سے مسترد کر دیا۔راولپنڈی میں بھی مسلم لیگ ن کے لیے ایک نرم گوشہ ہے اور کہا جا رہا ہے کہ میاں نواز شریف کو لندن جانے دیں ، سب کو سکون آ جائے گا۔ لیکن وزیراعظم عمران خان اپنی بات پر ڈٹے بیٹھے ہیں، وہ کسی کی بھی بات نہیں مان رہے ، ان کا کہنا ہے کہ کسی صورت این آر او نہیں دوں گا۔یاد رہے کہ شریف خاندان کے خلاف کیسز اور ان پر آنے والے ٹف ٹائم کے بعد اب شریف خاندان نے این آر او کے لیے کوششیں تیز کر دی ہیں۔اس حوالے سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق شریف خاندان کے کئی افراد اور قریبی رفقا نے وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کرنے کی کوشش کی لیکن وزیراعظم عمران خان نے انہیں ملاقات کے لیے وقت نہیں دیا۔ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے سابق حکمران خاندان کو کرپشن کے معاملے پر کسی قسم کا ریلیف نہ دینے اور نیب سے پلی بارگین کا پیغام ملا۔انہیں مشورہ دیا گیا کہ وہ اپنے معاملات نیب سے طے کریں، پلی بارگین کرلیں اور اس کے بعد جہاں جانا چاہیں چلے جائیں۔ذارئع کےمطابق وزیر اعظم اپنے ان رفقا پر بھی برہم ہو گئے جنہوں نے شریف فیملی کے قریبی دوستوں کے لئے ان سے ملاقات کا وقت مانگا ۔ وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ریلیف کا صرف او صرف ایک ہی راستہ ہے اور وہ پلی بارگین ہے اس کے علاوہ میں کسی کو این آر او کی صورت میں ہرگز کسی قسم کا ریلیف نہیں دوں گا۔

تازہ ترین خبریں