10:30 am
سحر و افطار میں پانی یا پھلوں کے رس زیادہ پیئیں: طبی ماہرین

سحر و افطار میں پانی یا پھلوں کے رس زیادہ پیئیں: طبی ماہرین

10:30 am

اسلام آباد(نیو زڈیسک)حالیہ عرصے کے دوران رمضان المبارک گرمیوں میں آ رہا ہے۔ سخت گرمی میں روزہ رکھنے کے باعث جسم میں پانی کی کمی واقع ہوسکتی ہے۔ماہرین طب کا کہنا ہے کہ سخت گرمی میں جاری روزوں کے دوران سحر و افطار میں پانی کا استعمال بڑھانا چاہیئے۔ پانی یا پھلوں کے رس زیادہ سے زیادہ پیئیں۔ اپنی غذا میں دودھ اور دہی کا استعمال بھی ضرور کریں۔طبی ماہرین کے مطابق رمضان المبارک میں سخت گرمی کے
باعث جسم میں پانی کی کمی کو پورا کرنے کے لیے سات آسان طریقوں پر عمل کرنیکی کوشش کریں۔طبی ماہرین کے مطابق سحری میں کم از کم 2 گلاس پانی لازمی پیئیں۔ روزوں میں جوس اور کولڈ ڈرنک سے اجتناب کریں کیونکہ یہ آپ کے وزن میں اضافہ کا باعث بن سکتی ہیں۔طبی ماہرین کا مزید کہنا ہے کہ ایسی غذاؤں کا استعمال کریں جن میں پانی کی مقدار زیادہ ہو جیسے تربوز، کھیرا، سلاد وغیرہ۔ یہ آپ کے جسم کی پانی کی ضرورت کو پورا کریں گے۔طبی ماہرین کے مطابق افطار کے اوقات میں ایک ساتھ 7 یا 8 گلاس پانی پینے سا ہماری صحت کیلئے نقصان دہ بھی ہوسکتا ہے جبکہ روزہ کے بعد کھجور اور 2 گلاس پانی کے ساتھ افطار کریں۔طبی ماہرین کے مطابق رات میں نماز تراویح اور دوسری عبادات کے لیے جائیں تو پانی کی بوتل ساتھ لے کر جائیں۔ رات کو ایک پانی کی بوتل اپنے قریب رکھیں۔ کوشش کریں کہ گرم اور دھوپ والی جگہوں پر کم سے کم جائیں۔

تازہ ترین خبریں