02:28 pm
پاکستانی ڈرامہ انڈسٹری بھارت سے پھر آگے نکل گئی

پاکستانی ڈرامہ انڈسٹری بھارت سے پھر آگے نکل گئی

02:28 pm

ممبئی (مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستانی ڈراموں کی مقبولیت بھارت میں بہت زیادہ ہے۔ دونوں ملکوں کے تعلقات اس وقت کشیدگی کے بد ترین دور میں داخل ہوچکے ہیں۔تاہم پھر بھی دونوں ملکوں کی شوبزانڈسٹری جغرافیائی اور نظریاتی سرحدیں پھلانگ کر بھی ایک دوسرے کے حوالے سے بات کرتی ہوئی دکھائی دیتی ہے۔فلم انڈسٹری میں تو بھارت دنیا بھر میں اپنی مقبولیت کے اعتبار سے دنیا بھر میں دوسرا بڑا ملک ہے
لیکن پاکستانی ڈرامہ انڈسٹری ہمیشہ کی طرح اب بھی بھارت پر اپنی برتری قائم کیے ہوئے ہے۔ بھارت کی صف اول کی اداکارہ عالیہ بھٹ نے بھی اپنی اداکاری میں نکھار پیدا کرنےکےلئے ایک پاکستانی اداکارہ کی کارکردگی کو دیکھنا شروع کر دیا ہے۔ بھارتی میڈ یا رپورٹس کے مطابق فلم ’کلنک‘کے ڈائریکٹر نے عالیہ بھٹ کو کردار میں نکھار لانے کے لیے پاکستانی ڈرامہ ’زندگی ہے گلزار‘میں صنم سعید کی اداکاری دیکھنے کا مشورہ دیا جس پر انہوں نے عمل کیا اور پھر میڈ یا کو انٹر ویو دیتے ہوئے اس بات کا اعتراف بھی کیا ۔عالیہ بھٹ سے جب پوچھا گیا کہ وہ روپ کا کردار ادا کرنے کے لیے کس سے متاثر ہوئیں تو انہوں نے صنم سعید کا نام لیا۔اس کے ساتھ انہوں نے فلم کے ہدایت کار ابھیشیک ورمان کے کہنے پر ڈرامہ سیریل ’زندگی گلزار ہے‘ دیکھا جس میں عالیہ کو صنم سعید کے کردار پر غور کرنے کو کہا اور اس سے وہ بے حد متاثر ہوئیں۔اداکارہ نے بتایا کہ روپ کا کردار کشف سے بہت مماثلت رکھتا ہے اور وہ بھی ویسے ہی حالات کا سامنا کرے گی، کیونکہ ذمہ داریاں سنبھالنی ہوں گی تو وہ ہمیشہ خوش نہیں ہوتی وہ کمزرو بھی ہے لیکن طاقتور بھی۔عالیہ بھٹ کا کہنا تھا کہ کردر نبھانے میں یہ بہت مشکل کام ہوتا ہے کہ ایک ساتھ بہت سارے تاثرات کا مظاہرہ کیا جائے جیسے ناخوش ہونا، کمزور اور طاقتور اور یہ سب کشف کے کردار میں تھا، ابھیشیک مجھے کہتے رہتے تھے تمہیں پریشان ہونا چاہیے۔دوسری جانب صنم سعید نے عالیہ بھٹ کے بیان پر خوشی اور فخر محسوس کرتے ہوئے فلم ’کلنک‘ کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

تازہ ترین خبریں