10:50 am
فرنچ کنٹری طرز آرائش اپنا کر دیکھیں

فرنچ کنٹری طرز آرائش اپنا کر دیکھیں

10:50 am

ہم فرانسیسی خوشبوؤں اور عطریات سے تو بخوبی واقف ہیں۔گھروں کی آرائش اور فرنیچر سازی میں فرنچ کنٹری اسٹائل ہماری ثقافت سے قطعی طور پر متضاد نہیں حالانکہ تاریخی حوالہ جات سے پتہ چلتاہے کہ 1750میں فرانس کا یہ رجحان مقبول ہوا اور جسے دیگر رجحانات کے ساتھ باہمی اشتراک سے جدت دی گئی اور پاکستانی گھرانوں میں بھی اسے اپنا لیا گیا چونکہ یہ فطری ماحول سے مکمل ہم آہنگ اور مدھم تاثر لئے ہوتاہے۔
 
سفید لکڑی کے فرنیچر ممکن ہے کہ آپ بھی اس تصور کے حامی ہوں کہ آپ کے کھانے کی میز،کرسیاں اور دیگر فرنیچر سفید یادودھیا سفید رنگ کی لکڑی سے بنایا جائے۔کمرے کے رنگوں میں بھی سفیدی کا عنصر نمایاں رکھا جائے۔کہتے ہیں کہ 18ویں صدی کے فارم ہاؤسز اور اشرافیہ کے گھروں کے بھی ایسے ہی رنگ وروغن تھے اور یہ بہت حد تک خوشگوار تاثر دیتے تھے۔ راٹ آئرن سے اندرونی آرائش کا تصورکون کہتا ہے کہ راٹ آئرن کا استعمال صرف بیرونی مقامات(لان یا برآمد ے)کی حد تک ہی کیا جا سکتا ہے۔آپ لاؤنج کے صوفے بھی اس میٹریل میں بنا سکتے ہیں ۔دبیز کشنز یعنی گدوں کے ساتھ صوفے کی نشست بہت آرام دہ اور دلکش نظر آئے گی۔نیلی اور سفید پروسیلن کی کراکریآپ کے باورچی خانے کی کسی کیبنٹ میں نیلی اور سفید پروسیلن کی یہ کراکری رکھی ہوتو کتنی دلکش لگتی ہے۔یہ ماننے کی بات ہے کہ پاکستان کے شہر ملتان میں بھی کوزہ گرایسی شاندار ظروف سازی کرتے ہیں ۔فرانس میں Normandyنے یہ خوبصورت ظروف بنائے تھے ۔آج کل سرامکس سے برتن بنائے جاتے ہیں ۔ان نفیس برتنوں میں برنیاں،جگ،پیالے،طشتریاں اور کٹورے ،مرتبان اور چائے کی پیالیاں غرضیکہ بہت حد تک ورائٹی موجود ہے۔آپ کے کچن کی آرائشیہ دور اسمارٹ ٹیکنالوجی کا ہے اور انقلابی طرز اپنا کر چھتوں پر LEDلائٹس لگائی جاتی ہیں اور فرانسیسی طرز آرائش میں گہرے رنگوں کی الماریاں نہیں بنائی جاتیں۔گھروں کے رقبے مختصر ہو تے جارہے ہیں لہٰذا دودھیا رنگوں مثلاً مدھم گلابی،آسمانی ،کریم ،خاکی اور مکمل سفید رنگ سے کیبنٹس بنائی جاتی ہیں یوں چھوٹا سا کچن شاہی مطبخ خانے سے کم نہیں نظر آتا۔اس مخصوص طرز آرائش میں بھی راٹ آئرن استعمال کیا جاتاہے۔فرنچ کنٹری بیڈ روم اسٹائلدبیز گدوں اور پردوں سے آراستہ بستر اور اس پر جالی دار کپڑے کی جھالروں سے کی جانے والی سجاوٹ دیکھنے میں بہت حد تک پر آسائش مگر آرام دہ بھی ہوتی ہے۔یہاں بھی سفید چادروں کا استعمال زیادہ نظر آتا ہے۔اس طرزآرائش میں گہرے رنگوں کی آمیزش نہیں کی جاتی ۔نرم وگداز لحافوں اور ٹیکسٹائل کے نادر نمونے بھی یہاں دیکھے جاسکتے ہیں ۔کچھ لوگ پرنٹڈ پھول بوٹے والے پیٹرن پسند نہیں کرتے وہ ایمبر ائیڈری کے دیدہ زیب ڈیزائنوں کی مدد سے بسترکی چادریں استعمال کرتے ہیں ۔بستر بنانے یعنی زیر لحاف بچھائی جانے والی چادروں پر بیڈ اسپریڈ یا بیڈ کو ربچھانے اور پھرلحاف بچھانے کی روایت بھی انگلش اور فرنچ کنٹری ڈیکور میں نظر آئے گی اور دیکھنے میں یہ بہت پر آسائش(لگژری)تصور تو ہے مگر اتنا ہی سحر انگیز ،رومانوی اور آرام دہ بھی۔گھر کے داخلی راستےفرانس میں لوگ فانوس اور پنڈولم کلاک بہت پسند کرتے ہیں۔اینٹیک فرنیچر شاپ سے یہ پنڈولم کلاک مل جائے تو اسے پالش کرکے نیا جیسا بنایا جا سکتا ہے۔یہ نیا دکھائی دینے والا کلاک آپ کو صاحب ذوق ظاہر کرے گا اور آپ گھر میں داخل ہوتے ہی ایک خوش کن احساس سے لبریز شام گزار سکیں گے۔

تازہ ترین خبریں