11:17 am
جن لوگوں کے منہ سے سوتے ہوئے رال ٹپکنا شروع ہو جائے وہ بہت خوش قسمت ہیں کیونکہ ۔۔!

جن لوگوں کے منہ سے سوتے ہوئے رال ٹپکنا شروع ہو جائے وہ بہت خوش قسمت ہیں کیونکہ ۔۔!

11:17 am

سوتے ہوئے اکثر افراد کے منہ سے رال نکلنا شروع ہو جاتی ہے جسے باعث شرمندگی سجھا جاتا ہے ۔ تاہم سائنسدانوں نے ایسے افراد کو خوشخبری دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے افراد کو اب پریشان ہونے کی ضرورت نہیں بلکہ یہ آپ کیلئے خوش آئند ہے ۔ سائنسدانوں نے کہا ہے کہ جو لوگ پرسکون نیند سوتے ہیں اوران کے خواب مثبت نوعیت کے ہوتے ہیںان کے منہ سے نیند کے دوران رال بہنا شروع ہو جاتی ہے ۔نیند کے دوران رال بہنے کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ نیند کا ابتدائی مرحلہ جسے ’’ریپڈ آئی موومنٹ مرحلہ‘‘ کہتے ہیں جو کہ بغیر کسی رکاوٹ کے مکمل ہوا ۔
یہ اس بات کی علامت ہے کہ آپ کی نیند میں کوئی خرابی نہیں ہے ۔ آپ کا جسم اور دماغ نیند سے بھرپور استفادہ ہو رہا ہے ۔ ماہرین کے مطابق جن لوگوں کی رال نیند کے دوران کبھی نہیں نکلی انہیں نیند سے متعلق اکثر شکایات رہتی ہیں ۔ ان لوگوں کا شمار ایسے لوگوں میں ہوتا ہے جو یا تو پوری طرح سے نیند نہیں حاصل کر رہے یا پھر یہ پرسکون نیندحاصل کرنے سے قاصر ہیں ۔دوسری جانب 2 سال سے لے کر 6 سال کی عمر کے بچوں کو ساتھ لانے والی اکثر مائیں یہ شکایت کرتی ہیں کہ بچہ رات کو سوتے میں دانت پیستا ہے، منہ سے رال ٹپکتی ہے، صبح اٹھتے ہی پیٹ میں درد کی شکایت کرتا ہے، پیٹ میں گڑگڑ کی آوازیں آتی ہیں، کبھی پیٹ میں اپھارہ ہوجاتا ہے۔ کسی بچے کی شکایت یہ ہوتی ہے کہ کھاتا پیتا خوب ہے پھر بھی اس کو فوراً بھوک لگتی ہے، لیکن اس کے چہرے کا رنگ زرد ہے، آنکھوں میں چمک نہیں۔ کوئی ماں یہ شکایت کرتی ہے کہ بھوک نہیں لگتی اور بچہ شکایت کرتا ہے کہ اسے گھبراہٹ ہوتی ہے، دل ڈوبتا محسوس ہوتا ہے۔ کبھی شکایت ہوتی ہے کہ بچے کو آنکھوں کے سامنے اندھیرا محسوس ہوتا ہے، چکر آتے ہیں، معدے میں کوئی شے چاٹتی محسوس ہوتی ہے۔ کچھ مائیں یہ شکایت کرتی ہیں کہ بچہ رات کو بستر پر پیشاب کرتا ہے۔

تازہ ترین خبریں