گلگت،انجمن تاجران کا ٹیکسز کے خاتمے تک شٹر ڈاؤن ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان
  13  ‬‮نومبر‬‮  2017     |     گلگت بلتستان

گلگت ( نامہ نگار خصوصی ) انجمن تاجران نے حکومتی لولی پاپ کو مسترد کرتے ہوئے تمام غیر آئینی ، غیر قانونی ٹیکسز کے خاتمے تک شٹر ڈاؤن ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان کر دیا ، انجمن تاجران جی بی کے صدر محمد ابراہیم کے زیر صدارت منقد ہونے والے ہنگامی اہم اجلاس میں کور کمیٹی کے ممبران اور تمام تاجر تنظیموں کے نمائندگان نے شرکت کی اجلاس میں حکومت کی طرف سے بینک ٹرانزیکشن کے مد میں ہونے والی کٹوتی کے خاتمے کے حوالے سے کی جانے والی نوٹیفکیشن کو لالی پاپ قرار دیتے ہوئے اسے مسترد کر دیا گیا ۔ اس بات پر انتہائی غم و غصے کا اظہار کیا کہ وفاقی اور صوبائی حکومتیں ی بی کے عوام کو لولی پاپ دیتے ہوئے ایک نوٹیفکیشن جاری کے اہے ۔ انجمن تاجران اور تمام کاروباری تنظیمیں اس نوٹیفکیشن کو مسترد کرتی ہے اور حکومت پاکستان اور حکومت گلگت بلتستان سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ ود ہولڈنگ ٹیکس سمیت تمام ٹیکسز کو جی بی کے عوام سے جبراً وصول کیا جاتا ہے

فوری طور پر خاتمہ کیا جائے اور ٹیکسز کے حوالے سے نفاز کئے جانیو الے 2013کے آرڈر کو فی الفور منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا گیا ۔ اجلاس میں آج ہونے والے نوٹیفکیشن کو لولی پاپ قرار دیتے ہوئے اسے مسترد کر دیا گیا ، جب ایک ٹیکس غیر قانونی ہوتا ہے تو دیگر ٹیکسز کس طرح قانونی ہو سکتے ہیں وفاقی حکومت اور گلگت بلتستان کے صوبائی حکومتوں سے مطالبہ کیا کہ اپنے آپ کو اور جی بی کے عوام کو امتحان میں ڈالے بغیر فوری طور پر ٹیکسز کے خاتمے کا اعلان کرکے نوٹیفکیشن جاری کیا جائے۔ جی بی کے عوام اور تاجر برادری مزید کسی قسم کا ظلم برادشت کرنے اور غیر قانوی اور غیر آئینی ٹیکسز دینے کے متحمل نہیں ہو سکتے ۔ا جلاس میں انجمن تاجران کور کمیٹی کے ممبران سمیت صدر انجمن تاجران محمد ابراہیم جنرل سیکرٹری مسعود الرحمن ، کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر فردوس احمد ہوٹل ایسوسی ایشن کے صدر راجہ ناصر ، ایکشن کمیٹی کے فدا حسین نے شرکت کی ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اوصاف سپیشل

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved