گلگت، بلتستان کا اکلوتاڈسٹرکٹ ہسپتال محکمہ برقیات کا 1کروڑ 24لاکھ کا نادہندہ
  13  فروری‬‮  2018     |     گلگت بلتستان

گلگت (نامہ نگار)بلتستان ڈویژن کا اکلوتا DHQہسپتال قرضے تلے مفلوج ہو گیا،محکمہ برقیات کا قرضہ ایک کروڑ 24لاکھ سے تجاوز ہونے کا انکشاف،ڈی ایچ کیو ہسپتال کا قرض کون اتارے گا،دونوں سرکاری محکمے بے بس ہو گئے ، بتایا جاتا ہے کہ بلتستان ڈویژن کے اکلوتے بڑے DHQہسپتال میں تین ٹرانسفارمر لگے ہوئے ہیں جہاں سے ہسپتال کو بجلی فراہم کی جارہی ہے جس میں سے ایک لائن واپڈا پاور ہاؤسز سے دوسری کچورا سے اور تیسری لائن سرمک سے آنیوالی بجلی کی ہے بیک وقت تین لائنیں دینے کا بنیادی مقصد ہسپتال میں بجلی کی ترسیل کو برقرار رکھنا ہے تا کہ کسی بھی صورت میں بجلی کی سپلائی معطل نہ ہو۔ ذرائع کے مطابق DHQہسپتال کے پاس بجلی کے استعمال کی مقدار کو چیک کرنے کیلئے باقاعدہ کوئی انرجی میٹر نہیں نصب کئے گئے ہیں اور ٹرانسفارمروں سے براہ راست بجلی فراہم کی جارہی ہے اور محکمہ برقیات ٹرانسفارمروں کے لوڈ کے حساب سے بجلی کا بل بنا کر ہسپتال انتظامیہ کو دے رہا ہے ۔

ذرائع کے مطابق ہسپتال کے مخصوص ٹرانسفارمروں سے نزدیکی رہائش گھروں کیلئے بھی بجلی فراہم کی گئی ہے جس میں ہسپتال عملے کی ملی بھگت بتائی جاتی ہے اور نزدیکی تقریباً100سے زائد گھرانے ہسپتال کے خرچے پر مفت بجلی حاصل کر ذرائع کے مطابق ہسپتال کے مخصوص ٹرانسفارمروں سے نزدیکی رہائش گھروں کیلئے بھی بجلی فراہم کی گئی ہے جس میں ہسپتال عملے کی ملی بھگت بتائی جاتی ہے اور نزدیکی تقریباً100سے زائد گھرانے ہسپتال کے خرچے پر مفت بجلی حاصل کررہے ہیں۔ ڈی ایچ کیو ہسپتال میں چیک اینڈ بیلنس کا موثر نظام نہ ہونے کی وجہ سے بجلی کا بل تقریباً ایک کروڑ 24لاکھ سے تجاوز کر گیا ہے اور ہسپتال کے پاس اتنا بجٹ نہیں ہے کہ وہ یکمشت ادائیگی کر سکے جس کی وجہ سے سرکار کے دونوں ادارے بے بسی کی تصویر بن گئے ہیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز

اوصاف سپیشل

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved