’بہترین مسلمان بیوی وہ ہوتی ہے جسے جب بھی اس کا شوہر کہے وہ فوراً۔۔۔‘معروف عالم دین نے ایسی بات کہہ دی مسلمان دنگ رہ گئے
  23  فروری‬‮  2018     |     اوصاف سپیشل

لندن برطانیہ کے ایک مسلم عالم دین نے بہترین مسلمان بیوی کی خصوصیات بتاتے ہوئے ایسی بات کہہ دی ہے کہ ایک ہنگامہ برپا ہو گیا. میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق مشرقی لندن کی ایک مسجد میں امامت کے فرائض سرانجام دینے والے اس عالم نے کہا ہے کہ ”بہترین مسلمان بیوی وہ ہوتی ہے جسے جب اس کا شوہر کہے وہ اس کے ساتھ ازدواجی تعلق قائم کرے.شوہر کے کہنے پر ازدواجی تعلق سے انکار کرنے والی بیویاں کبھی بہترین نہیں کہلا سکتیں.“ خواتین کے حقوق کے لیے کام کرنے والی خواتین نے عالم دین کی اس بات پر ہنگامہ برپا کر رکھا ہے. یاسمین عبدالمجید اور مہرین بیگ نامی کارکنوں کا کہنا تھا کہ ”حقیقت یہ ہے کہ عورتوں کی جنسی خواہش مردوں سے کسی طور کم نہیں ہوتی.شوہروں کو بھی چاہیے کہ وہ بیویوں کی خواہشات کا احترام کریں. ان سے پیار کریں اور ان پر اعتماد کریں. اس کے بعد وہ اپنے ’مطالبات‘ کی فہرست ان کے سامنے رکھیں.“یوں تو پاکستان کے حوالے سے تاریخ میں بے شمار اولیائے کرام کی پیش گوئیاں موجود ہیں جبکہ حضورﷺ کی ایک حدیث مبارکہ بھی اس جانب اشارہ کرتی نظر آتی ہے کہ ’’مجھے ہند کی جانب سے خوشبو آتی ہے‘‘اس زمانے میں برصغیر کو ہند کہا جاتا تھا جس میں میانمار،ہندوستان، پاکستان، بنگلہ دیش کا خطہ آتا تھا۔ مگر آپ یہ جان کر حیران رہ جائیں گے کہ بھارت کو انگریزوں سے آزادی دلوانے والے اور پاکستا ن کے سخت ترین مخالف مہاتما گاندھی نے بھی پاکستان کے بارے میں پیش گوئی کی تھی جس کے بعد انہیں قتل کر دیا گیا تھا۔

پاکستان کے موقر قومی اخبار روزنامہ پاکستان لاہور کی ایک ریسرچ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ موجودہ دور کے ایک سیاح اور مورخ ناسٹرڈیم جون روگونے سترہ سال پہلے ’’ مہاتما گاندھی کی پیش گوئیاں‘‘ نامی پیش گوئیاں‘‘ نامی کتاب میں دعویٰ کیا تھا کہ نوّے کی دہائی میں ہندوستان کے دورے کے دوران اسے مہاتما گاندھی کی پیش گوئیوں کا جائزہ لینے کا موقع ملا اور اس نے ان پیش گوئیوں کے مطابق پاکستان ا ور بھارت کے جنگی حالات کا جائزہ لیتے ہوئے انکشاف کیا تھا کہ مہاتما گاندھی نے پاکستان اور بھارت کے درمیان چار جنگوں کی پیش گوئی کی تھی جن میں تین ہو چکی ہیں جبکہ چوتھی جنگ حتمی ہو گی۔ناسٹر ڈیم لکھتا ہے کہ مختلف جرائد میں یہ لکھا جاچکا ہے کہ قیام پاکستان کے بعد گاندھی نے پنڈت و نجومی بلوا کردونوں ملکوں کی کنڈلیاں بنوائی تھیں اوریہ حساب لگواکر اعلان کیاتھا کہ پاکستان اور انڈیا میں 4 جنگیں ہونگی اور چوتھی جنگ فیصلہ کن ہوگی۔ گاندھی جی نے اگرچہ یہ نہیں بتایاتھا کہ جنگ کا فاتح کون ہوگا۔ تاہم یہ ضرور کیا کہ اس کے بعد انہوں نے بھارت کو پاکستان کے خلاف جنگ سے روکنے کی ہر ممکن کوشش کی ،حتٰی کہ پاکستان کو اسکا حق دلوانے کے لیے بھوک ہڑتال بھی کر دی تھیجس پر انہیں قتل کر دیا گیا۔ انکے قاتلوں کا یہ تسلیم کرنا تھا کہ گاندھی جی کی پاکستان کے لئے ہمدردی سے بھارت اور ہندووں کو نقصان پہنچا ہے۔ گاندھی جی نے بھارتی حکومت کو پاکستان کے حصے کا خزانہ ۵۵۰ ملین روپے ادا کرنے پر زور دیا تھا اور انکی اس جدوجہد کو یہ نام دیا گیا کہ وہ مسلمانوں کے ساتھ امن قائم کرنے کے لئے کوششیں کررہے تھے جس کا انتہا پسند ہندووں کو رنج تھا۔بھارتی عسکری دانشوروں اور پنڈتوں کی نظر میں گاندھی جی کی چار پیش گوئیاں غیر معمولی اہمیت رکھتی ہیں لہذا وہ ان وچاروں میں مبتلا رہتے ہیں کہ پاکستان کو قابو کرکے کیسے گاندھی جی کی پیش گوئیوں کو جھوٹا ثابت کیا جائے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
82%
ٹھیک ہے
9%
کوئی رائے نہیں
9%
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

اوصاف سپیشل

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved