مہاتما گاندھی محمد علی جناح ؒکو بھارت کا پہلا وزیراعظم بنانا چاہتے تھے،
  9  اگست‬‮  2018     |     اوصاف سپیشل

تبت (مانیٹرنگ ڈیسک) تبت کے روحانی پیشوا دلائی لامہ نے انکشاف کیا کہ مہاتما گاندھی محمد علی جناح کو ہندوستان کا پہلا وزیراعظم بنانا چاہتے تھے۔ روحانی پیشوا دلائی لامہ نے کہا کہ اگر نہرو کی جگہ جناح کو وزیراعظم بنا دیاجاتا تو ہندوستان کبھی تقسیم نہ ہوتا۔ بھارت میں گووا انسٹیٹیوٹ آف مینجمنٹ کی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے تبت کے روحانی پیشوا دلائی لامہ نے مزید کہا کہ مہاتما گاندھی چاہتے تھے کہ وزیراعظم کا عہدہ جناح کو دیا جائے لیکن جواہر لعل نہرونے ایسا کرنے سے انکار کر دیا کیونکہ وہ خود وزیراعظم بننے کے خواہشمند تھے۔انہوں نے کہا کہ جواہر لعل نہروکی اس خود غرضی نے ہندوستان کی تقسیم میں اہم کردار ادا کیا۔۔پاکستان اور بھارت ایک ہوتے اگر جناح کو اس وقت وزیراعظم بنا دیا جاتا۔ ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا پنڈت نہروبہت

تجربہ کار تھے لیکن غلطی ہو جاتی ہے ۔تبت کے روحانی پیشوا دلالئی لامہ کی اس ویڈیو کو سوشل میڈیا پر مقبولیت حاصل ہو رہی ہے اور پاکستانی صارفین اس ویڈیو کو کافی فخر سے شئیر بھی کر رہے ہیں۔ اس ویڈیو کو دیکھ کر پاکستانی سوشل میڈیا صارفین کا کہنا ہے کہ بلا شُبہ محمد علی جناح کے مخالفین بھی اُس دور میں ان کی قابلیت اور سمجھداری کے قائل تھے ۔ یہی وجہ ہے کہ محمد علی جناح نہ صرف اپنے دوستوں میں بلکہ دشمنوں اور مخالفین میں بھی بے حد پسند کیے جاتے تھے۔ پاکستان کے بانی قائد اعظم محمد علی جناح کی شخصیت ہی ایسی تھی کہ کوئی بھی ان کی شخصیت سے متاثر ہوئے بغیر نہیں رہ سکتا تھا۔ محمد علی جناح کی ہی وجہ سے آج مسلمان اپنے الگ ملک اسلامی جمہوریہ پاکستان میں آزادانہ زندگی بسر کر رہے ہیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
92%
ٹھیک ہے
8%
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

اوصاف سپیشل

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved