تازہ ترین  
منگل‬‮   11   دسمبر‬‮   2018

میری ماں نے بچپن میں مجھے کہا’’ جا اللہ تجھے کعبہ کا امام بنائے‘‘ امام کعبہ شیخ السدیس کی دِلوں کو چھولینے والی کہانی


ایک لڑکا اپنے ہم عمر لڑکوں کی طرح بہت ذیادہ شرارتی تھا. مگر ایک دن ایسی غلطی اور شرارت کر دی کہ اس کے گھر مہمان آئے اور اس لڑکے کی ماں نے مہمانوں کے لیے سالن تیار کیا تو اس لڑکے نے سالن میں مٹی ڈال دی تو اُسکی ماں کو غصہ آگیا، غصے سے بھری ماں

نے لڑکے کو کہا (غصے سے بپھر جانے والی مائیں الفاظ پر غور کریں) لڑکے کی ماں نے کہاچل بھاگ اِدھر سے، اور جا اللہ تجھے کعبہ کا اِمام بنائےیہ بات بتاتے ہوئے شیخ صاحب پھوٹ پھوٹ کر رونے لگے، ذرا ڈھارس بندھی تو رُندھی ہوئی آواز میں بولے؛ اے اُمت اِسلام، جانتے ہو وہ شرارتی لڑکا کون تھا؟ دیکھو وہ شرارتی لڑکا میں کھڑا ہوں تمہارے سامنے اِمام کعبہ عبدالرحمٰن السدیس.اللہ اَکبر، اگر وہ شرارتی لڑکا شیخ عبدالرحمٰن السدیس حفظہ اللہ صاحب بذاتِ خود ہو سکتے

ہیں جو ماں کی دعا کی بدولت حرم شریف کے ہر دلعزیز اِمام بن کر عالم اِسلام میں دھڑکنے والے ہر دِل پر راج کر رہے ہیں!!! شیخ صاحب فرماتے ہیں کہ اے ماؤں، اپنے اولاد کے بارے میں اللہ سے ڈرتی رہو. چاہے کتنا ہی غصہ کیوں نہ ہو اُن کیلئے منہ سے خیر کے کلمے ہی نکالا کرو. اولاد کو لعن طعن اور بد دعائیں دینے والی مائیں سُن لیں کہ والدین کی ہر دُعا و بد دُعا قبول كي جاتي ہے۔




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں




     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved