تازہ ترین  
ہفتہ‬‮   19   جنوری‬‮   2019

ہر انسان کی پیدائش کیساتھ ایک جن (قرین) بھی پیدا ہوتا ہے جو انسان کو آخری سانس تک بہکاتا ہے ، نبی کریم ﷺ کا قرین کون تھا ؟ جب صحابہ ؓ نے رسول اللہ ﷺسے آپؐ کے قرین کےبارے میں پوچھا تو کیا جواب ملا ؟ جانیں


یہ کائنات ایک تسلسل کیساتھ اپنے مدار میں دوڑ رہی ہے ، انسان پیدا ہوتے ہیں اور پھر موت کیساتھ ان کا سفر تمام ہوتاہے ، روایات میں آتاہے کہ ہر انسان کے ساتھ ایک قرین (یعنی جن ) اور فرشتہ پیدا کیے جاتے ہیں۔ قرین انسان کو دم آخر بہکاتا رہتا ہے ۔
’’ ابن مسعود رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : تم میں

سے کوئی ایسا نہیں ہے ، مگر یہ کہ وہ اپنے ساتھی ایک جن اورایک فرشتے کے سپرد کر دیا گیا ہو ۔ لوگوں نے پوچھا : یا رسول اللہ ، کیا آپ کے ساتھ بھی یہی معا ملہ ہے؟ آپ نے فرمایا: ہاں ، میرے ساتھ بھی ، لیکن اللہ نے میری مدد کی ، چنانچہ وہ مسلمان ہو گیا ۔ لہٰذا وہ مجھے خیر ہی کی باتیں کہتا ہے۔ ‘‘
اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:
مفہوم:تم میں سے کوئ نہیں مگر اسکے ساتھ ایک قرین ساتھی بطور جن ہے
(صحیح مسلم، 2814)
کیا اللہ کے رسول کے ساتھ قرین تھا؟:
صحابہؓ نے پوچھا کیا آپ ﷺکے ساتھ بھی قرین ہے:
تو آپﷺ نے فرمایا:
مفہوم:ہاں مجھ پر بھی مگر اللہ نے میری مدد کی تو وہ جن مجھ پر ایمان لے آیا.اب وہ مجھے صرف خیر کی بات کرتا ہے
(صحیح مسلم، 2814)
بعض لوگوں نے قرین کو ہم زاد کا نام دیا ہوا.خاص طور پر بہروپیے،کاہن جادوگر وغیرہ اس قسم کے الفاظ بول کر عام لوگوں کو بے وقوف بناتے ہیں.اللہ نے قرآن میں قرین کے حوالہ سے فرمایا
اللہ تعالی نے فرمایا:
مفہوم:اس کا ہم نشین(شیطان) کہے گا.اے ہمارے رب! میں نے اسے گمراہ نہیں کیا تھا بلکہ یہ تو خود ہی دور دراز کی گمراہی میں تھا
(سورۃ ق 50 آیت: 27)
اس سے معلوم ہوا کہ وہ شیطان قرین بھی کچھ نہیں کرسکتا بس صرف وسوسہ ڈال سکتا ہے اور آگے اسکا اختیار نہیں اس ہمیں کسی بھی قسم کے شبہات وغصہ میں اعوذ بللہ من الشیطان الرجیم کہنے کا حکم ہے تاکہ شیاطین کے وسوسوں سے بچ سکیں




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں




     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved