10:59 am
پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے آفٹر شاکس،مہنگائی کے ستائے شہریوں کیلئے تشویشناک خبر آگئی

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے آفٹر شاکس،مہنگائی کے ستائے شہریوں کیلئے تشویشناک خبر آگئی

10:59 am

اسلام آباد(نیو زڈیسک) پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد اس کے آفٹر شاکس آنا شروع ہو گئے ہیں۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے جہاں شہری پریشان ہیں وہیں فضائی مسافر بھی مہنگائی کے بوجھ تلے دب گئے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد پاکستان کی قومی ائیر لائن پی آئی اے نے بھی اندرون ملک پروازوں کے لیے 5 ہزار روپے کے فکس چارجز مقرر کر دئے ہیں۔ان چارجز کا اطلاق 1 سے 20 کلو گرام پر مبنی اضافی سامان پر کیا گیا ہے۔
پی آئی اے کے پُرانے چارجز 100 روپے فی کلو گرام سے بھی کم تھے۔ تاہم اب فکس چارجز کے تحت 250 روپے فی کلو گرام وصول کیے جا رہے ہیں۔ پی آئی اے کی جانب سے مکمل تفصیلات تیار کر کے سول ایوی ایشن اتھارٹی کو جاری کر دی گئیں، نئے کرایوں اور قوانین کو یکم اپریل 2019 سے نافذ کیا گیا ۔پی آئی اے نے اندرون ملک مسافروں کے لئے 20 کلو کے زائد بیگج کا کرایہ 5000 روپے کر دیا، پرواز کی روانگی سے قبلٹکٹ ریفنڈ پر 2500 اور پرواز کے جانے کے بعد ریفنڈ میں 4000 روپے رائج کر دیئے گئے۔ پی آئی اے نے نئے قوانین کے ساتھ ساتھ اندرون ملک کے لیے اکانومی میں 10 درجات ایگزیکٹو میکانومی میں 3اور بزنس کے 4 درجات متعارف کروا دیئے۔ 5 سال سے زئد عمر والے بچوں کا پورا کرایہ وصول کیا جائے گا۔اضافی سامان پر مہنگے چارجز اور نئے قوانین کے باعث قومی ائر لائن کے ریونیو میں کمی کا خدشہ ہے، اندرون ملک کے مسافروں کی سفری سہولیات میں نئے قوانین کے اندارج کے بعد مسافروں کو زائد کرایوں کا سامان رہے گا۔ ترجمان پی آئی اے کے مطابق ایندھن کی قیمت میں اُتار چڑھاؤ کے بعد ہی چارجز فکس کیے گئے ہیں۔ یاد رہے کہ وفاقی حکومت نے اکتیس مارچ کو عوام پر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا بم گرایا تھا۔اوگرا نے وزارت پٹرولیم ڈویژن کی ہدایت کر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کیا تھا۔ اوگرا کی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے نوٹیفکیشن کے مطابق پٹرول اور ہائی اسپیڈ ڈیزل کی فی لیٹر قیمت 6روپے جبکہ لائٹ اسپیڈ ڈیزل اور مٹی کا تیل کی قیمت میں 3، 3روپے اضافہ کیا گیا۔ پٹرول کی قیمت میں 6 روپے اضافے کے بعد نئی قیمت 98روپے 89 پیسے فی لیٹر، ہائی اسپیڈ ڈیزل کی 6 روپے اضافے کے بعد نئی قیمت117 روپے 43 پیسے فی لیٹر، لائٹ ڈیزل کی نئی قیمت 3 روپے اضافہ کے بعد 80 روپے 54 پیسے فی لیٹر اور مٹی کے تیل کی نئی قیمت 3 روپے اضافے کے بعد 89 روپے 31پیسے فی لیٹر ہوگئی۔جس کے بعد عوام پر بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ کر کے ایک اور بم گرا دیا تھا جس کے بعد ان فضائی مسافروں پر بھی فکس چارجز کا بوجھ ڈال دیا گیا ہے۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ حکومت عوام کو ریلیف دینے کی بجائے عوام پر مہنگائی کو بوجھ ڈال رہی ہے