02:34 pm
عالمی منڈیوں میں تیل سستا ہونے کے باوجود پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 8روپے 90پیسے کے اضافے کا امکان

عالمی منڈیوں میں تیل سستا ہونے کے باوجود پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 8روپے 90پیسے کے اضافے کا امکان

02:34 pm

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)اگست کے مہینے میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 8 روپے 90 پیسے مہنگی ہونے کا امکان ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ پٹرول 5 روپے 15 پیسے فی لیٹر مہنگا کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہے جبکہ ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں بھی 5 روپے 65 پیسے فی لیٹر اضافے کی سفارش کی گئی۔
اس کے علاوہ لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 8 روپے 90 پیسے جبکہ مٹی کا تیل 5 روپے 38 پیسے مہنگا کرنے کی سفارش کی گئی۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ردوبدل سے متعلق تیار کی جانے والی سمری وزارت پٹرولیم کو ارسال کی جائے گی۔ جس کے بعد پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں رد وبدل کی حتمی منظوری وزیراعظم عمران خان دیں گے۔ پٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتوں پر عملدرآمد یکم اگست سے ہو گا۔ خیال رہے کہ اس سے قبل پٹرولیم مصنوعات سستی ہونے کا امکان ظاہر کیا جارہا تھا۔ 25 جولائی کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت کم ہونے سے آئندہ ماہ اگست ملک میں پٹرولیم مصنوعات سستی ہونے کا امکان ہے۔ خام تیل کی عالمی قیمت 62 ڈالر 47 سینٹ فی بیرل ہوگئی جبکہ 3 روز کے دوران خام تیل 4 ڈالر فی بیرل سستا ہوا ۔ جبکہ پاکستان کو سعودی عرب سے تیل کی فراہمی کا آغاز رواں ماہ سے ہو گا جس کے بعد آئندہ ماہ پٹرولیم مصنوعات 5 روپے تک سستی ہونے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کے حوالے سے حتمی سمری رواں ماہ کے آخر میں اوگرا کی جانب سے وزارت پٹرولیم کو ارسال کی جائے گی جس کی حتمی منظوری وزیر اعظم عمران خان دیں گے۔ جس کے بعد پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ردو بدل کا اطلاق یکم اگست سے ہو گا۔ یاد رہے کہ جون کے آخر میں بھی آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے یکم جولائی سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ردوبدل کی سفارشات پر مبنی سمری وفاقی حکومت کو پیش کی تھی۔ جس میں مٹی کا تیل 2 روپے 94 پیسے سستا کرنے پٹرول کی قیمت میں صرف 70 پیسے کی کمی جبکہ ہائی اسپیڈ ڈیزل میں 2 روپے 30 پیسے کا اضافہ کرنے کی سفارش کی تھی۔ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے تیل کی قیمتوں میں اضافے کی سمری وزارت خزانہ کو بھجوائی تھی۔ تاہم آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کی جانب سے بھجوائی جانے والی اس سمری پر وزیراعظم عمران خان نے یکم جولائی سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا تھا۔