تازہ ترین  
منگل‬‮   13   ‬‮نومبر‬‮   2018

چین کادورہ ….ایک نظر


٭وزیراعظم عمران خان چین کے پانچ روزہ دورے سے واپس آگئے، ڈالروہیں رہ گئے، سٹاک ایکس چینج گر گیا !O.. چین اب پاکستان میں جرائم ختم کرے گا، ٹیم آرہی ہے! O قومی اسمبلی میں شدید ہنگامہ ، گالیاں، ایک دوسرے پرحملے، اجلاس ملتوی! O ایک جماعت کے گھیراؤ جلاؤ سے پنجاب میں 25کروڑ92 لاکھ روپے کا نقصان، سرکاری رپورٹ! ہم پھر آسکتے ہیں، دھرنے والوںکا اعلان !O..ہندو آج دیوالی منا رہے ہیں، دہلی میں آتش بازی،پٹاخوں پر پابندی !O..پرویز مشرف اپنی حالت زار بیان کرتے ہوئے رو پڑا !O..ایران پر امریکی پابندیاں شروع ، بھارت کو تیل دینے کی اجازت !O..بیرونی سفارت خانوں نے آسیہ بی بی کے وکیل کوقید کرکے زبردستی باہر بھیج دیا !
٭وزیراعظم چین کے پانچ روزہ دورے کے بعد واپس آگئے ۔ دورے کے دورا ن مختلف شعبوں میں تعاون کے 15 معاہدوں پردستخط ہوئے ۔ سعودی عرب سے6 ارب ڈالر آنے کی خبر پر سٹاک ایکس چینج37 ہزار سے چھلانگ لگ کر40 ہزار یونٹ کی سطح پر بڑھ گیا۔ سرکاری ترجمانوں نے یقین دلایا کہ عمران خان چین سے ڈالروں کی بھاری امداد لے کر آرہے ہیں۔ سٹاک ایکس چینج مزید تیز ہوگیا۔ 42 ہزار یونٹوں سے اوپر چلاگیا۔ چین سے15 معاہدے ہوئے، ڈالروںکی امداد کاکوئی ذکرنہ ہوا، سٹاک ایکس چینج پھر گرپڑا۔ 41 ہزار کے قریب آگیا ۔ ایک خبر کے مطابق سرمایہ داروں کے ایک کھرب14 ارب ڈوب گئے! اب سرکاری وزرا تسلیاں دے رہے ہیں کہ ڈالروں کی امداد کی بات چیت جاری ہے! کیا مضحکہ خیز انداز ہے! اس قسم کے سارے معاملات کسی دورہ کے طے کرنے سے پہلے طے کیے جاتے ہیں۔ یہ عجیب دورہ ہے کہ دورہ ختم ہو گیا، بات چیت اب شروع ہوئی ہے! ویسے چین اپنی کرنسی میں کاروبار کرے گا تو بیچ میں ڈالر کیوں آئیں گے؟ بہرحال حکومتی بزرجمہروں کے مطابق ’’دورہ نہایت کامیاب رہا ہے‘‘۔
٭ایک اہم بات: وزیراعظم پاکستان نے ایک بار پھر بیرون ملک پاکستان کوجرائم سے بھرا ہوا ملک قرار دیا ہے اور چین سے جرائم کے روک تھام کے لیے رہنمائی مانگ لی ہے۔ اس پر چین کی انسداد جرائم کے ماہرین کی ٹیم پاکستان آ رہی ہے! وزیراعظم کے اس بیان کے دو اہم پہلو قابل غور ہیں۔ ایک تو یہ کہ جب آپ بار بار باہر جا کر پاکستان کو بدامنی اور جرائم سے بھرپور ملک ظاہر کرتے ہیں تو پھر یہاں باہر سے ، بلکہ اندرون ملک بھی کون سرمایہ دار سرمایہ کاری کرے گا؟ دوسری بات یہ کہ جرائم کے انسداد کے لیے چین سے مدد مانگ کر کیا آپ تسلیم نہیں کررہے ہیں کہ پاکستان میں پولیس، رینجر، ایف آئی اے،آئی ایس آئی وغیرہ انسداد جرائم کی16 ایجنسیاں ناکام اورناکارہ ہوچکی ہیں جو بیرون سے امداد طلب کرنے کی ضرورت پیش آگئی ہے؟ کیااب چین کے ماہرین کی ٹیم پاکستان کی وزارت داخلہ میں بیٹھ کرملکی معاملات کوکنٹرول کرے گی؟ کس کس بات پر کیا لکھا جائے؟
٭قومی اسمبلی میں ایک اورانتہائی ناگوارہنگامہ! کوئی نئی بات نہیں، تعلیم وتہذیب سے عاری لوگ اسمبلیوں میں آئیں گے تویہی کچھ ہوگا۔ الم ناک بات یہ ہے کہ اسمبلیوں میں اس با رخواتین ایسے ہنگاموں کا آغاز کرتی ہیں۔ ان میں مرد بھی شریک ہوجاتے ہیں۔ خواتین کی صنِف ایک خاص شائستگی متانت اور باوقار طرز عمل کا تقاضا کرتی ہے۔ مگر اسمبلیوں میں بعض خواتین اجلاس شروع ہوتے ہی جس انداز میں مخالفین پر نازیبا حملوں پر اترآتی ہیں اس پر کیا تبصرہ کیاجائے! تین چار خواتین تو شائد گھر سے ہی سوچ کر آتی ہیں کہ آج اسمبلی میںکیسے آگ بھڑکانی ہے۔ وزیراعظم سے ہزاراختلاف ہوں مگران کے منصب کا دھیان تو رکھنا پڑتا ہے۔ایک خاتون عمران خاں نیازی کو مشرقی پاکستان میں شکست کھانے والا بھگوڑا جنرل نیازی قرار دیں گی تو کیا جواب میں پھول پیش کیے جائیںگے۔ گزشتہ روز ایسی بات پر ارکان اسمبلی میں سر پھٹول ہوتے رہ گئی۔ دُکھ ہوتا ہے کہ کیسے کیسے منظر دیکھنے میںآرہے ہیں۔ عجیب بات ہے کہ جو خواتین باقاعدہ الیکشن لڑکر آتی ہیں وہ بہت سنجیدگی اور متانت کامظاہرہ کرتی اور پارلیمانی روایات کا وقار برقرار رکھتی ہیں۔ خواجہ سعد رفیق کی والدہ محترمہ فرحت رفیق مرحومہ کا پنجاب اسمبلی میں کردار مثال کی حیثیت رکھتاہے۔ اس کالم کی تحریر کے وقت قومی اسمبلی کااجلاس پھر شروع ہونے والا ہے، خدا خیرکرے!
٭پنجاب حکومت کی سرکاری رپورٹ کے مطابق حالیہ دھرنوں اورشہروںکی ناکہ بندی سے اور توڑ پھوڑ سے سرکاری اور غیر سرکاری املاک کو 25 کروڑ92 لاکھ روپے کا نقصان پہنچا ہے ۔ قومی اسمبلی میں ہنگامہ بھی اسی بات پر ہوا ہےکہ کھلے عام بغاوت کرنے اور جلاؤ گھیراؤ کو انتہائی ناروا دھمکیاں دینے والوں کے ساتھ مفاہمت کا معاہدہ کیوں کیا گیا ہے؟پتہ نہیں نقصانات کی سرکاری رپورٹ میں شیخوپورہ میں ایک غریب طالب علم کی کیلے کی ریڑھی کا نقصان بھی شامل ہے یا نہیں؟ یہ غریب لڑکا سکول میں پڑھتا ہے اور سکول کے بعد ریڑھی پرکیلے بیچتا ہے۔ گھیراؤ جلاؤ والے مظاہرین نے جس انتہائی شرمناک، بے حیائی اور بے غیرتی کے ساتھ اس کی کیلوں سے بھری ریڑھی لو ٹ لی، اس نے ہر قسم کی اخلاقیات کا جنازہ نکال دیا ہے۔ ان بے غیرت افراد کے ہاتھوں یہ شرمناک منظر بار بار ٹیلی ویژن پر آتا رہا ہے۔ اس سے بیرون ملک کیاتاثر گیا ہوگا!! ان وحشی دہشت گردوں کو سخت سے سخت سزا بھی کم ہوگی!
٭وزیراعظم عمران خان نے چین کے صدر کو پاکستان میں بنے ہوئے فٹ بال کا تحفہ پیش کیا۔ تھڑا سیاست دان علم دین کو ایسے موقع پر ہمیشہ بے تکی سوجھتی ہے ۔ کہہ رہاہے کہ جناب فٹ بال تو چین میں بھی بہت بنتے ہیں، وزیراعظم پاکستان کی بنی ہوئی مٹھائیاں ، ڈی آئی خان اور ملتان کا سوہن حلوا، پنڈی بھٹیاں کی برفی، شرق پور کے گلاب جامن، کراچی کی نہاری اور پراٹھاکباب، لاہور کے سری پائے، کوئٹہ کا دیگی بڑا گوشت ، پشاورکے کباب اوربہاول پور کا فالودہ لے جاتے تو چین کے صدر بہت خوش ہوتے! علم دین نے خواہش کا اظہار کیاہے کہ وزیراعظم آئندہ ان باتوں کاخیال رکھیں۔
٭متنازع مسیحی عورت آسیہ بی بی کے وکیل سیف الملوک نے ہالینڈ میں ایک پریس کانفرنس میں انکشا ف کیا ہے کہ سپریم کورٹ نے آسیہ کی رہائی کے فیصلہ کے فوراً بعد میں نے اسلام آبادمیں اقوام متحدہ کے نمائندہ سے رابطہ کرکے بتایا کہ مجھے جان سے مارنے کی دھمکیاں مل رہی ہیں۔ اس پر مجھے تین سفارت خانوں نے بلایا۔ ایک سفارت خانے میں مجھے تین روزتک بند رکھاگیا۔ کمرےکا دروازہ کھولنے کی بھی اجازت نہیں تھی۔ چوتھے روز اچانک زبردستی ایک طیارے پر سوار کر کے باہر بھیج دیاگیا۔ سیف الملوک نےباہر جانے کا ڈراما ئی منظر نامہ پیش کیا ہے۔ اس نے خود اقوام متحدہ سے رابطہ کیا تھا پھر زبردستی کیسی؟ ویسے بھی کیا حربہ ہے کہ باہر جانے کے لیے آسیہ کے وکیل بن جاؤ! آسیہ تو ادھر ہی رہ گئی ، وکیل باہر چلا گیا!
٭آج دنیا بھر میں ہندو دیوالی منا رہے ہیں۔ یہ ہندوؤں کے لیے خوشیاں منانے کا دن ہے۔ ان کے مطابق اس دن ان کے دیوتا رام چندر سری لنکا کے حکمران راجہ راون کے قبضے سے اپنی پتنی سِیتا کو چھڑا کرلائے تھے۔ اس روز وسیع پیمانہ پر آتش بازی ہوتی ہے اور مسلسل پٹاخے چلائے جاتے ہیں۔ یہ بات قبل ذکر ہے کہ دہلی کو دنیا بھر میں سب سے زیادہ آلودہ شہر قرار دیاجا چکا ہے۔اس کی فضا کی آلودگی عام معیار سے 35 گنا زیادہ ہوچکی ہے اس کے باعث ہسپتالوں میں ناک اور سانس کے ہزاروں مریض آچکے ہیں۔ دہلی کی حکومت نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ دیوالی کے روز وسیع پیمانہ پر آتش بازی کے زہریلے دھوئیں سے فضائی آلودگی میں مزید بے پناہ اضافہ ہو جائے گا۔ حکومت نے آتش بازی پر پابندی کا فیصلہ کیا ہے مگر عوامی سطح پر اس سے کوئی فرق نہیں پڑے گا! یہ بات بھی ہے کہ دیوالی کے موقع پر دن رات مسلسل پٹاخوں سے شہر گونجتے رہتے ہیں اس سے عام لوگ سخت پریشان رہتے ہیں۔




 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


آج کا مکمل اخبار پڑھیں

تازہ ترین خبریں


کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved