کشمیر میں عظمت قرآن کانفرنس
  12  جون‬‮  2018     |     کالمز   |  مزید کالمز

روزے کے ساتھ کشمیر کا سفر کرنا جوئے شیر لانے کے مترادف ' لیکن 24رمضان المبارک کی رات نماز تراویح کے بعد... دارالعلوم تعلیم القرآن للبنات الاسلام کوٹیریاں شہید گلی تحصیل ہجیرہ کی مرکزی مسجد میں عظمت قرآن کانفرنس میں اس خاکسار کو خطاب کے لئے ہر حال میں پہنچنا تھا... سو ہفتے کے دن دو بجے راولپنڈی سے سفر شروع کیا تو پلندری سے ہوتے ہوئے شام تقریباً 7بج کر 20منٹ پر یعنی افطاری کے بعد کوٹیریاں پہنچے... تو اہلیان کوٹیریاں دیدہ دل فرش راہ کئے ہوئے تھے... دارالعلوم تعلیم القرآن للبنات الاسلام کے مہتمم مولوی صابر خان بتاتے ہیں کہ ان فلک بوس پہاڑوں پر بچیوں کا یہ مدرسہ 1989ء میں قائم ہوا تھا' جبکہ کوٹیریاں ضلع پونچھ کی مرکزی مسجد کے قیام کو سو سال سے زائد کا عرصہ بیت چکا ہے... اس مسجد سے قال اللہ و قال الرسولۖ کی صدائیں گونج رہی ہیں... جبکہ مدرسہ تعلیم الاسلام للبنات میں علاقہ بھر کی بیٹیاں دورہ حدیث تک دینی تعلیم کے زیور سے آراستہ ہو رہی ہیں' انہوں نے بتایا کہ ہمارے ہاں بچیوں کی تعلیم کے ساتھ ساتھ تربیت پر بھی پوری توجہ دی جاتی ہے۔ مجھے یاد ہے کہ ضلع پونچھ تحصیل ہجیرہ کے پہاڑی قصبے کوٹیریاں میں ڈھائی سال قبل جب میں ایک کانفرنس سے خطاب کے لئے آیا تھا... تب آزاد جموں وکشمیر پر لاڑکانہ کے ''مجاور'' کی حکومت تھی2005ء کے زلزلے میں اس قصبے کا گرلز سکول مہندم ہوگیا تھا مگر پیپلزپارٹی کو اپنے دور اقتدار میں اس گرلز سکول کی تعمیر کی توفیق نہ ہوئی... پھر مسلم لیگ (ن) کے راجہ فاروق حید رکی حکومت کا سورج طلوع ہوا اور اس علاقے والوں نے تقریباً سو سالہ بزرگ سیاست دان خان بہادر خان کو بھاری ووٹوں سے کامیاب کروا کر پیپلزپارٹی کے برج کو الٹ ڈالا۔ ہفتے کی شام جب یہ خاکسار کوٹیریاں پہنچا تو... مولوی صابر خان نے بتایا کہ آزاد جموں وکشمیر کے وزیراعظم راجہ فاروق حیدر کے مشیر خان بہادر خان کے سیاسی جانشین سردار ارزش ضلع پونچھ کے ایڈمنسٹریٹر سردار عبدالحفیظ کے ہمراہ عظمت قرآن کانفرنس میں شرکت کے لئے پہنچے ہوئے ہیں' افطاری کے بعد سے لے کر نماز عشاء تک کشمیر کے ان جوانسالہ سیاست دانوں کے ساتھ دلچسپ بات جیت رہی' سیاست دانوں سے لے کر جرنیلوں تک... دانشوروں سے لے کر کالم نگاروں تک زیر بحث رہے نوجوان رہنما سردار ارزش نے بتایا کہ وہ روزنامہ اوصاف اور اس خاکسار کے کالم کے پرانے قاری ہیں اور اوصاف کے مالکان کی اسلام پسندی اور کشمیر پالیسی کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ سردار فاروق حیدر کی حکومت نے اس علاقے میں عوامی فلاح و بہبود اور ریلیف کے لئے وہ کام کر دکھائے کہ جو پچھلے بیس سالوں میں نہیں ہوئے تھے۔ اس خاکسار نے زلزلہ کا نشانہ بننے والے ''کوٹیریاں کے گرلز سکول'' کہ جو اب تک دوبارہ تعمیر نہ ہوسکا' کا نکتہ اٹھایا تو انہوں نے یقین دہانی کروائی کہ آئندہ بجٹ میں ... سکول کی بلڈنگ کی تعمیر خان بہادر خان کے سیاسی جانشین کی اولین ترجیح رہے گی۔ ایڈمنسٹریٹر ضلع پونچھ نے مجھے خوشخبری سنائی کہ مین سڑک سے لے کر مسجد تک جو تقریباً سوا کلو میٹر پیدل چل کر آنا پڑتا تھا آئندہ چند مہینوں میں سڑک کی تعمیر کرکے ... عوام کو اس پریشانی سے بھی چھٹکارہ دلا دیا جائے گا۔ علاقے کی ممتاز علمی شخصیت ماسٹر رفاقت حسین اقبال عوامی ریلیف کے کاموں کے ان اعلانات کو سن کر ... باغ' باغ تو ہوئے... مگر گرلز سکول کی جلد سے جلد تعمیر ان کا مطالبہ اپنی جگہ موجود رہا... نماز تراویح کے بعد عظمت قرآن کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اس خاکسار نے عرض کیا کہ ''قرآن پاک کی ایک ایک آیت معجزہ ہے' جو لوگ قرآن پاک سے جڑ گئے' اللہ پاک نے انہیں پستیوں سے نکال کر اوج ثریا کی بلندیوں تک پہنچایا' اسلام اور قرآن پاک سے رشتہ و تعلق کائنات کا سب سے مضبوط رشتہ ہے' قرآن پاک اپنے پڑھنے والوں کو ہدایت کا راستہ بتاتا ہے' قرآن پاک اپنے ساتھ محبت کرنے والوں کو ماں باپ کے بے پناہ احترام کا حکم دیتا ہے' قرآن پاک انسانوں کو انسانیت کی معراج تک پہنچاتا ہے۔ رمضان کریم کو جہاں اور بہت سی خصوصیات نمایاں کر دیتی ہیں ان میں سے ایک قران کریم کا اس ماہ مبارک میں نازل ہونا بھی ہے۔یہی وجہ تھی کہ رسالتماب ۖ اور ان کے صحابہ کرام رضوان اللہ تعالی علیھم اجمعین عام ایام کی نسبت رمضان المبارک میںقرآن پاک کی خصوصی تلاوت کا اہتمام کیا کرتے تھے۔حضرت عبداللہ ابن عمر سے روایت ہے کہ رسول اللہ ۖ نے فرمایا! روزہ اورقرآن دونوں بندے کی سفارش کریں گے۔(یعنی اس بندے کی جو دن میں روزہ رکھے گا اور رات میں اپنے رب کے حضور کھڑا ہو کر قرآن کریم کی تلاوت کرے گا یا سنے گا)۔ روزہ عرض کرے گا ؛۔اے میرے پروردگار !میں نے اس بندے کو کھانے پینے اور نفس کی خواہش پورا کرنے سے روکے رکھا تھا ، آج اس کے حق میں میری سفارش قبول فرمایئے۔اور قرآن کہے گا کہ میں نے اس کو رات کو سونے اور آرام کرنے سے روکے رکھا تھا۔ پروردگار!آج اس کے حق میں میری سفارش قبول فرمایئے...چنانچہ روزہ اور قرآن دونوں کی سفارش اس کے حق میں قبول فرمائی جائے گی۔( اور اس کے لئے جنت اور مغفرت کا فیصلہ فرما دیا جائے گا)۔ (شعب الایمان) اللہ تعالی نے قرآن کریم میں ایک خاص قسم کی تاثیر رکھی ہے جو دنیا کی اور کسی کتا ب میں نہیں ہے۔ پاکستان کی ترقی کا راز قرآن و سنت کے احکامات کی پیروی میں مضمر ہے' قیام پاکستان کا مقصد یہاں دین اسلام کے مقدس نظام کا نفاذ تھا... مگر بگڑے ہوئے حکمرانوں... اور آکسفورڈ مارکہ سیاست دان آج تک پاکستان میں نظام اسلام کے نفاذ کے راستے میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔

قرآن مقدس الہامی کتاب ہے... یہ متبرک مذہبی کتاب ہے... جسے یورپ کی طرز پر لبرل یا سیکولر بننے کا شوق ہے وہ قرآن پاک کا باغی ہے' اس خاکسار نے اپنے خطاب میں مزید عرض کیا کہ ہم روزنامہ اوصاف کے ذریعے قرآن و سنت کی خوشبو کو یونہی عام کرتے رہیں گے... مقبوضہ کشمیر کے مظلوم مسلمانوں کو ظالم اور غاصب ہندوئوں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جاسکتا۔کانفرنس سے سردار ارزش اور مولانا صابر خان نے بھی خطاب کیا' جبکہ بلبل کشمیر حافظ عبدالحمید نے نعتیہ کلام پیش کرکے حاضرین کے قلوب کو گرمایا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved