مسلمانوں کی میت کی تدفین کامسئلہ جلدحل کرلیاجائے گا،کونسلرہیزل سیمن
  8  اکتوبر‬‮  2017     |     یورپ

لوٹن (پ ر) لیڈر آف لوٹن بارو کونسل کونسلر ہیزل سیمن نے کہا ہے کہ لوٹن کی بڑھتی ہوئی آبادی اور اس کی تعمیر و ترقی میں مسلمانوں کا ایک بڑا اور مثبت کردار ہے جسے کونسل نے ہمیشہ سراہا ہے۔ لوٹن کے مسلمانوں کو میت کی تدفین اور میتوں کی رجسٹریشن اور پاکستان میں لے جانے کیلئے جن مشکلات کا اور بالخصوص ویک اینڈ پر سامنا ہے ان کا بہت جلد ازالہ کردیا جائے گا ہماری یہ پوری کوشش ہوگی کہ تمام متعلقہ محکموں کے افسروں کے مشورہ کے بعد مسلمانوں کو ساتوں دن یہ سہولت میسر ہو۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے خطیب ملت علامہ قاضی عبدالعزیزچشتی کی رہائش گاہ پر خصوصی طور پر بلائے گئے ایک اجلاس میں کیا جس میں لوٹن بارو کونسل کے کونسلرز حضرات بھی شامل تھے۔ اس موقع پر مرکزی جماعت اہل سنت یو کے اینڈ اوورسیز ٹرسٹ کے جنرل سیکرٹری اور جامعہ اسلامیہ غوثیہ ٹرسٹ لوٹن کے بانی و مہتمم خطیب ملت علامہ قاضی عبدالعزیز چشتی نے بڑی تفصیل کے ساتھ مسلمانوں کو میتوں کے بالخصوص ویک اینڈ پر حصول اور ان کی تدفین کے حوالے درپیش مسائل سے اجلاس کو آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ مذہب اسلام میں ایک میت کو جتنا ادب و احترام حاصل ہے کسی اور مذہب میں حاصل نہیں ہے اور مسلمان کے انتقال کے بعد اس کی نماز جنازہ اور تدفین جلد از جلد کرنے کا حکم ہے ہمیں اپنی مذہبی روایات کو برقرار رکھنا ہوگا اس کے علاوہ نہ صرف مقامی طور پر بلکہ برطانیہ کے مختلف شہرون سے اعزاء و اقرباء کا تعزیت کے لئے آنا اور جنازے میں تاخیر لواحقین کے لئے مشکلات کا سبب بنتا ہے اس کے علاوہ اگر میت کو پاکستان ' آزاد کشمیر میں بھیجنا ہو تو تاخیر ہر دو ممالک میں رہنے والے اعزا اقرباء کے لئے باعث پریشانی ہوتی ہے ان مسائل کے حل کے لئے کونسل کو کمیونٹی کو درپیش مسائل جلد از جلد حل کرنا ہوں گے۔ مولانا چشتی نے کہا کہ لوٹن میں کارنر آفیسر کی سہولیات ویک اینڈ پر حاصل ہیں مگر اس کیلئے ہسپتال یا جی پی کی طرف سے (C Muse of Death)اور رجسٹرار آفس سے (Death Registeration) کا ہونا ضروری ہے جس کے لئے لوٹن بارو کونسل کا اہم کردار ہے۔مولانا چشتی نے قبرستان کے حوالے سے بھی مشکلات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ویک اینڈ پر تقریباً چھ سو پونڈ کی اضافی رقم کی ادائیگی بھی ایک بڑا مسئلہ ہے اور اس کے ساتھ ہمیں یہ سہولت بھی حاصل تھی کہ قرآن پاک کے بوسیدہ اوراق کو Free of Costقبرستان میں دفنایا جاسکتا تھا مگر اس لئے بھی اب سات سو پونڈ کے چارجز لگائے جارہے ہیں جو نہایت ہی نامناسب ہے اجلاس میں موجود کونسلرز نے مولانا چشتی کے مطالبات جو کہ پوری مسلمان کمیونٹی کے مطالبات اور آواز ہے کی بھرپور تائید کی لیڈر آف کونسل کونسلر جنرل سائمن نے تمام مطالبات کو غور سے سنا اور یقین دہانی کرائی بہت جلد تمام محکموں بشمول ہسپتال' کارنر آفیسر سے مشورہ کے بعد اور تمام مسائل کو حل کرلیا جائے گا۔ اجلاس میں موجود لوٹن بارو کونسل کے کونسلرز نے کہا کہ اس قسم کی سہولیات برطانیہ کے مختلف شہروں میں مسلمانوں کو حاصل ہیں ان کونسلز سے بھی معلومات حاصل کی جاسکتی ہیں مگر اس اہم معاملے میں تاخیر کمیونٹی کی تشویش میں اضافے کا سبب بنے گی یاد رہے کہ گزشتہ ہفتہ کونسلر راجہ محمد اسلم خان کے والد حاجی راجہ محمد صدیق کی نماز جنازہ پر ایک قرارداد کے ذریعہ علامہ چشتی نے کونسل سے یہ مطالبات کئے تھے جس کی روشنی میں یہ اجلاس بلایا گیا۔اجلاس میں سینئر کونسلر اور کیبنٹ ممبر ملک محمود حسین ' کیبنٹ ممبر کونسلر نسیم اختر' سابق میئر کونلر محمد ریاض بٹ' سابق ڈپٹی میئر کونسلر طاہر خان ملک' کونسلر یاسمین خان شامل تھے جبکہ میئر آف لوٹن کونسلر چوہدری محمد ایوب' کونسلر راجہ وحید اکبر' کونسلر راجہ محمد سلیم نے بھی مولانا چشتی کو عدم موجودگی کی وجہ سے اس اہم معاملے میں مکمل حمایت کی تھی آخر میں مولانا چشتی نے تمام معزز مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved