آزادکشمیرکی سیاسی قیادت مسئلہ کشمیرپر اتحادکامظاہرہ کرے،راجہ یاسین
  9  اکتوبر‬‮  2017     |     یورپ

لوٹن (رپورٹ: کامران عابد بخاری )بیڈفورڈ سے لیبر پارٹی کے نو منتخب ر کن برطانوی پارلیمنٹ راجہ یاسین کے اعزاز میں لوٹن کمیونٹی کی طرف سے استقبالیہ تقریب کا اہتمام کیا گیا، استقبالیہ تقریب میں لوٹن نارتھ سے رکن برطانوی پارلیمنٹ کیلون ہوپکنز اور لارڈ بل میکینزی نے بھی شرکت کی۔ تقریب کا آغاز تلاوت کلام الٰہی اور نعت رسول مقبول سے ہوا۔ تقریب کی صدارت سابق ممبر کشمیر کونسل چوہدری محمد خان نے کی جبکہ تقریب میں لوٹن اور گردونواح کی سیاسی، سماجی، کاروباری شخصیات سمیت مقامی کونسلرز نے بھی شرکت کی۔ تقریب سے خطاب میں راجہ یاسین کا کہنا تھا کہ برما کے مسلمانوں پر جو ظلم ہو رہا ہے اور جو مشکلات ہیں ان کو برطانوی پارلیمنٹ میں اٹھایا ہے، دبا ئوبھی بڑھایا ہے اور تجویز پیش کی کہ متعلقہ وزیر فوری طور پر اقوام متحدہ سے اپیل کریں کہ برما کی گورنمنٹ پر پابندیاں لگائیں اور ان کو مجبور کریں کہ برما کے لوگوں کے لئے آسانی پیدا کی جائے، ہم پوری کوشش کریں گے کہ مسئلہ برما پرزور طریقہ سے اٹھایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر تمام کشمیری قوم کا مشترکہ مسئلہ ہے، آزاد کشمیر کی تمام سیاسی قیادت اگر مسئلہ کشمیر سے مخلص ہے تو اپنے تمام تر سیاسی نظریات سے بالاتر ہوکر مسئلہ کشمیر پر اتحاد و اتفاق کا مظاہرہ کریں جبکہ ہندوستان اور پاکستان مسئلہ کشمیر پر بیٹھ کر بات کریں اور پرامن حل تلاش کریں۔ جنگ کسی مسئلے کا حل نہیں ہے۔ انہوں نے لیبر پارٹی کے حوالے سے گفتگو میں کہا کہ برطانوی عوام کے مسائل کا حل صرف لیبر پارٹی ہی ہے۔ اس موقع پر لوٹن سے رکن برطانوی پارلیمنٹ کیلوِن ہوپکنز اور لارڈ بل میکینزی نے برما میں مسلمانوں کی نسل کشی اور کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں کو ان کا حق ملنا چاہیے اور کشمیری قوم کو اپنا مستقبل چننے کا موقع فراہم کرنا چاہیے، 1948 کی اقوام متحدہ کی قرارداد کے مطابق کشمیریوں کو استصواب رائے دئیے جانے پر 70 سال سے عمل نہیں ہوا۔ سابق ممبر کشمیر کونسل چوہدری محمد خان کا کہنا تھا کہ بھارتی حکومت کا رویہ مسئلہ کشمیر کو حل کرنے کے لئے غیر سنجیدہ ہے، بھارت حکومت سنجیدگی سے پاکستان کے ساتھ مذاکرات کر کے مسئلہ کا پرامن حل تلاش کرے اور لائن آف کنٹرول پر فائرنگ کا سلسلہ اور کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کرے۔ پیپلز پارٹی کے مرکزی راہنما سید حسن بخاری نے کہا کہ ہماری بدقسمتی ہے کہ مسئلہ کشمیر پر دوکان داری کی جارہی ہے، ٹی وی اور اخباروں میں فوٹو گرافک عناصر بھی نقصان پہنچا رہے ہیں۔ مسئلہ کشمیر پر سنجیدہ لیڈرشپ سامنے لائی جانی چاہیے تاکہ مسئلہ کشمیر کو روشناس کرنے کے لئے عملی جدوجہد کی جائے، تمام سیاسی جماعتوں کی نام نہاد قیادتوں نے اگر مسئلہ کشمیر کی سنگینی کو نا سمجھا تو کشمیریوں کی آنے والی نسلیں ان کو معاف نہیں کریں گی۔ مسلم کانفرنس لوٹن برانچ کے صدر پروفیسر امتیاز احمد چوہدری نے کہا کہ راجہ یاسین برطانوی ایشیائی نوجوانوں کے لئے رول ماڈل کا درجہ رکھتے ہیں جنہوں نے برطانوی معاشرے میں ایک عام آدمی کی حیثیت سے زندگی کاآغاز کیا، اپنی محنت اور لگن سے برطانوی معاشرتی انصاف پر مبنی نظام کیوجہ سے برطانیہ کے سب سے بڑے ادارے ہائوس آف کامن کے رکن منتخب ہوئے۔ ان کی زندگی نوجوانوں کے لئے مشعل راہ ہے۔ تقریب کے میزبان چوہدری قدیر خان، چوہدری نثار خان، چوہدری عبدالقیوم، راجہ گفتار، فاروق رولوی، چوہدری جاوید، چوہدری اعجاز میراں، چوہدری امتیاز، پروفیسر امتیاز ، چوہدری محمد اقبال و دیگر نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے پروگرام کی رونق کو دوبالا کیا۔ دیگر شرکا سابق ممبر کشمیر کونسل چوہدری محمد خان، کونسلر ریاض بٹ، کونسلر راجہ سلیم، کونسلر طاہر ملک، کونسکر وحید اکبر، کونسلر نسیم ایوب، سابق مئیر پیٹر براہ راجہ اختر، پیپلز پارٹی کے مرکزی راہنما سید حسن بخاری، چوہدری نسیم، پروفیسر امتیاز احمد چوہدری، راجہ اعظم خان ایڈووکیٹ، پروفیسر راجہ ظفر خان، راجہ یعقوب خان، پروفیسر ممتاز بٹ، شبیر حسن ملک، مسعود رانا، آصف مسعود، عبدالقیوم اکاونٹنٹ، راجہ گفتار، جسٹس انتخاب عالم، باسط محمود اور دیگر نے نو منتخب رکن پارلیمنٹ راجہ یاسین کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ راجہ یاسین کی کامیابی تمام ٹیم کی کاوشوں اور ان کی سخت محنت کا نتیجہ ہے، راجہ یاسین نئی نسل کے لئے رول ماڈل ہیں۔ ہماری نوجوان نسل کو بھی تعلیم پر توجہ دینی چاہیے اور برطانیہ کی سیاست کا حصہ بن کر برطانیہ کی تعمیر وترقی میں اہم کردار ادا کرنا چاہیے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved