پاکستان میں سیاسی صورتحال غیریقینی کیفیت سے دوچار،نئے انتخابات ناگزیرہیں،سہیل وڑائچ
  11  اکتوبر‬‮  2017     |     یورپ

اولڈھم(محمد فیاض بشیر) پاکستان میں سیاسی صورتحال غیر یقینی کیفیت سے دوچار ہے۔ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی عوامی مینڈیٹ لیکر نہیں آئے ہیں بلکہ سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کی نااہلی کے بعد برسراقتدار آئے چونکہ عوام نے سابق وزیراعظم کو اقتدار کے ایوان تک پہنچایا تو اخلاقی طورپر حکومت اور اسمبلیاں برخواست کرکے نئے انتخابات کے ذریعے جو بھی اکثریت حاصل کرتا اس جماعت کے سربراہ کو وزیراعظم ہونا چاہئے تھا ملک میں عملاً ایک کمزور حکومت ہے جو بین الاقوامی سطح پر پائیدار اور ٹھوس فیصلے نہیں کرسکتی۔ پاکستان کی معیشت اس وقت زبوں حالی کا شکار ہے اور جب دوبارہ انٹرنیشنل مونیٹری فنڈ(IMF) سے قرضہ جات حاصل کرنے کے لئے جاناپڑے گا تو کمزور حکومت کی وجہ سے سخت شرائط کو مان کر ملک کو مزید قرضوں کے بوجھ تلے دبایا جائے گا۔ نئے انتخابات کا فی الفور اعلان ناگزیر ہے اور جمہوری تسلسل کو برقرار رکھنے اور مضبوطی کا تقاضا ہے۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان کے سینئر صحافی و تجزیہ نگار سہیل احمد وڑائچ نے یو کے اسلامک مشن اولڈھم سنٹر میں انکے اعزاز میں رکھے گئے ایک عشائیہ کے موقع پر حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ دوسری طرف تعلیمی، ٹیکنالوجی، رسل و رسائل، عوام کے اندر شعور، انڈسٹری اور دیگر شعبہ جات میں پاکستان تیزی سے ترقی کی منازل طے کر رہا ہے جو کہ کسی بھی قوم کی ترقی میں اہم ہے۔ الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا میںٹھہراؤ ہو رہا ہے کیونکہ اب عوام شور شرابے چینل کی ریٹنگ کے گرداب سے نکل چکی ہے اور وہ سچائی کو جاننا چاہتی ہے۔ نظام عدل میں ابھی زیادہ انقلابی اصلاحات اور تبدیلیاں لانے کی ضرورت ہے۔ ابھی بھی عدالتوں میں کیسز کے فیصلے کئی سالوں بعد بھی نہیں ہوتے ہیں۔ ختم نبوت پر ہمارا ایمان ہے اس میں کسی دوسری رائے کی گنجائش نہیں ہے۔ لیکن ہمارے آخری نبی حضرت محمدۖ نے دوسرے مذاہب کا عزت و احترام کرنے کا درس دیا ہے اور خود بھی اپنی زندگی میں اس پر عمل درآمد بھی کیا ہے۔پاکستان کو اس وقت قائد اعظم محمد علی جناح اور علامہ اقبال جیسی قیادت کی اشد ضرورت ہے انہوں نے برطانیہ سے تعلیم حاصل کی تھی آپ برطانیہ بھر میں بسنے والے ہم وطن ہمیں ایسی قیادت دیں جو محسن پاکستان اور علامہ اقبال کا کردار ادا کرے اور ملک کو ترقی کی طرف لیکر جائے۔پاکستان کی خارجہ پالیسی میں سب سے اولین نقطہ مسئلہ کشمیر ہے اس پر کسی قسم کا سمجھوتہ ناممکن ہے کشمیریوں کو انکا پیدائشی حق ملنا چاہئے۔ برما میں روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی عالم اسلام اور دنیا کے لئے لمحہ فکریہ ہے اس بارے ٹھوس اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ صحافت کو عبادت سمجھ کر کبھی ذاتی پسند ناپسند کی آڑ میں تجزیہ نگاری نہیں کی اور یہی پیشہ وارانہ ذمہ داریوں کا تقاضا بھی ہے۔ بیرون ممالک بسنے والے ہم وطن ملکی معیشت میں اہم کردار ادا کرنے کے ساتھ ہمارے بلامعاوضہ سفیر بھی ہیں پاکستان بہت جلد ترقی کی منازل طے کرے گا۔مولانا محمد اقبال جو کہ یو کے اسلامک مشن اولڈھم سنٹر کے انچارج ہیں انہیں خوش آمدید کہا اور انکی عاجزی انکساری اور بندہ پروری کو سراہتے ہوئے کہا کہ ان کی یہ خوبیاں دوسروں سے ممتاز کرتی ہیں۔ وائس چیئرمین اسلامک مشن یو کے میاں عبدالحق نے معزز مہمان اور حاضرین کا دلی شکریہ ادا کیا کہ مختصر وقت کے نوٹس پر تشریف لائے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved