فاروق حیدرسہ فریقی کانفرنس کو کشمیر پالیسی کا حصہ بنائیں،سلیم بھٹی
  11  اکتوبر‬‮  2017     |     یورپ

ہائی ویکمب(مسرت اقبال) مسئلہ کشمیر کا پائیدار حل سہ فریقی کانفرنس کیساتھ وابستہ ہے۔ وزیراعظم آزاد کشمیر سہ فریقی کانفرنس کو کشمیر پالیسی کا حصہ بنائیں۔ آج کے دور میں آزاد کشمیر گورنمنٹ کشمیر پالیسی میں نئی حکمت عملی لائیں۔ سہ فریقی کانفرنس اور حق خودارادیت دونوں لازم ملزوم ہیں۔ ان خیالات کا اظہار وٹفورڈ سے مسلم لیگ ن آزاد کشمیر کے نائب صدر محمد سلیم بھٹی نے اپنے ایک بیان میں کیا۔ انہوں نے کہا ہم وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور سینئر وزیر چوہدری طارق فاروق کے دورہ برطانیہ اور یورپ پر خوش آمدید کرتے ہوئے یقین سے کہتے ہیں کہ ان کے دورے سے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے مثبت نتائج نکلیں گے۔ ہم ان کے اس مشن کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔ محمد سلیم بھٹی نے برطانوی وزیراعظم تھریسامے اور ممبران پارلیمنٹ سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ اقوام متحدہ اور سیکورٹی کونسل پر دباؤ ڈالیں کہ وہ مسئلہ کشمیر کے پائیدار حل کیلئے سہ فریقی کانفرنس فوری طلب کرے۔ انہوں نے کہا اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی مسئلہ کشمیر کے حوالے سے اقوام متحدہ اور سیکورٹی کونسل پر جس جرأت کیساتھ کشمیر اور فلسطینیوں کی حمایت کر رہی ہیں وہ خراج تحسین کی مستحق ہیں ان کو امن کا ایوارڈ ملنا چاہئے۔ محمد سلیم بھٹی نے سہ فریقی کانفرنس کی اہمیت کو اس لئے ضروری قرار دیا ہے جس طرح اقوام متحدہ نے روس کو افغانستان سے نکلنے کیلئے افغانستان، امریکہ، برطانیہ، پاکستان، دیگر ملکوں کے تعاون سے قیام امن کانفرنس بلائی اور روس نے جنیوا معاہدے کے تحت اپنی افواج کا افغانستان سے انخلاء کیا تھا۔انہوں نے کہا یہ انتہائی پریشان کن بات ہے کہ جنیوا میں یہ بات بھی سننے اور دیکھنے کو ملی کہ بھارت جنیوا میں کچھ کشمیری قوم پرست جماعتوں اور انسانی حقوق کی تنظیموں کو ایک منظم لابی کرتے ہوئے پاکستان اور مسئلہ کشمیر کو دبانے کیلئے استعمال کر رہا ہے۔ محمد سلیم بھٹی نے کہا ایسی کشمیری قوم پرست جماعتیں جو جنیوا جاکر کشمیر کاز کیخلاف کام کریں وہ کشمیریوں کی نمائندگی کا حق نہیں رکھتیں۔ ان پر پابندی ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم آزاد کشمیر کشمیر لبریشن سیل کو احکامات جاری کریں کہ وہ عالمی فورم پر کشمیر کیمپ قائم کریں تاکہ تمام کشمیری جماعتیں متحد ہوکر بھارت کی کشمیر مخالف پالیسی اور پروپیگنڈے کو بے نقاب کرسکیں۔ محمد سلیم نے کہا یہ بہت بڑا المیہ ہے لاشیں مقبوضہ کشمیر میں گر رہی ہیں اور چند ضمیر فروش کشمیری تنظیمیں چیک یہاں وصول کرنے جنیوا جاتے ہیں۔ ہماری صفوں میں میر جعفر اور میر صادق پیدا ہوگئے ہیں۔ ان کا محاسبہ کرنا انتہائی ضروری ہوگیا ہے۔ محمد سلیم بھٹی نے وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی اور آرمی چیف جنرل محمد باجوہ سے مطالبہ کیا ہے ملک کی سرحدوں پر سیکورٹی انتہائی سخت کردی جائے تاکہ دہشت گرد ملک کے اندر عوام کے جان و مال کو نقصان نہ پہنچاسکیں۔ اس وقت تک ان دہشت گردوں نے ہمارے ملک کو ہر لحاظ سے شدید نقصان پہنچایا ہے۔ انہوں نے کہا پاکستان کے تحفظ کیلئے پوری قوم افواج پاکستان کیساتھ کھڑی ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved