بریگزٹ کو روکنے کی کسی کوشش کو برداشت نہیں کروں گی،ٹریسامے
  10  ‬‮نومبر‬‮  2017     |     یورپ

لندن ( ا و صا ف نیو ز )بر طا نو ی و ز یر ا عظم ٹیریسا مے نے یورپی یونین سے برطانیہ کے انخلاء کی تاریخ اور وقت کو قانون میں شامل کرنے کا منصوبہ پیش کر دیا اور ساتھ ہی متنبہ کیا ہے کہ وہ بریگزٹ کو روکنے کی کسی کوشش کو برداشت نہیں کریں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ یورپی یونین سے انخلاء کے بل میں ترمیم کے ذریعے بریگزٹ پر جمعہ، 29 مارچ 2019 کو برطانوی وقت کے مطابق رات گیارہ بجے باضابطہ عمل ہو جائے گا۔ ایم پیز آئندہ ہفتے اس بل کا جائزہ لیں گے لیکن وزیراعظم نے ایک بار پھر اسے روکنے یا اس عمل کو سست کرنے کے خلاف متنبہ کیا ہے۔ اس حوالے سے ٹیریسا مے کی تحریر ایک روزنامہ اخبار میں شائع ہوئی ہے جبکہ دوسری جانب بریگزٹ مذاکرات کا نیا دور شروع ہونے والا ہے۔ 2016 میں ہونے والے ریفرنڈم میں 51.9 فیصد ووٹرز نے بریگزٹ کے حق میں ووٹ دیا تھا جس کے بعد برطانیہ نے اب یورپی یونین سے علیحدگی اختیار کرنا ہے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ بریگزٹ کے لئے طے شدہ وقت بریگزٹ بل کے پہلے صفحے پر لکھنے کا مقصد یہ ظاہر کرنا ہے کہ حکومت اس عمل کو آگے بڑھانے کے لئے پرعزم ہے۔ اس حوالے سے انہوں نے لکھا کہ کوئی ہمارے عزم پر شک نہ کرے یا اس پر سوال نہ اٹھائے کہ بریگزٹ پر اب عمل ہونا ہے اور یہ بات اس تاریخی قانون کے پہلے صفحے پر سیاہ وسفید میں تحریر ہو گی کہ برطانیہ 29 مارچ 2019 کو برطانوی وقت کے مطابق رات گیارہ بجے یورپی یونین کو چھوڑ دے گا۔ یہ مسودہ قانون دوسری ریڈنگ کے عمل سے گزر چکا ہے اور اب پارلیمانی سفر کے اگلے حصے یعنی کمیٹی کے مرحلے میں اسے ترمیم کی متعدد کوششوں سے گزرنا ہو گا۔ ٹیریسا مے کا کہنا تھا کہ زیادہ تر لوگ یہی چاہتے ہیں کہ سیاست دان بریگزٹ پر اچھی ڈیل کے سلسلے میں مذاکرات کے لئے یکجا ہو جائیں اور تمام اطراف کے ایم پیز اس بل کی سکروٹنی میں مدد دیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر ایم پیز کے خیالات سے بل میں بہتری پیدا ہوتی نظر آئے تو حکومت ان کی بات ضرور سنے گی لیکن ساتھ ہی اس عمل کو روکنے کی کوششوں پر متنبہ بھی کیا۔ انہوں نے مزید لکھا کہ ہم کسی حلقے کو اس بل میں ترامیم کے عمل کو کسی ایسے طریقے کے طور پر استعمال کرنے کی کوششیں برداشت نہیں کریں گے جس کے ذریعے برطانوی عوام کی جمہوری خواہشات کو روکنے یا اس عمل کو سست کرنے یا یورپی یونین سے ہماری علیحدگی کو روکنے کی کوشش کی جائے۔ ایم پیز کو قبل ازیں بتایا جا چکا ہے کہ 300 ترامیم کی جا چکی ہیں اور 54 نئی شقیں بھی تجویز کی گئی ہیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved