الیکشن قریب آتے ہی جوڑتوڑعروج پرہے،تنویراحمدسعید
  12  ‬‮نومبر‬‮  2017     |     یورپ

لندن(پ ر) پاکستان رابطہ کونسل لندن کے چیئرمین تنویر احمد سعید نے کہا ہے کہ پاکستان میں الیکشن جوں جوں قریب آ رہے ہیں سیاسی جوڑ توڑ میں سرگرمیاں اپنے عروج پر ہیں مجلس عمل کا دوبارہ اتحاد اور پرویز مشرف کی سربراہی میں چھوٹی جماعتوں اور گروپوں کے اندر گٹھ جوڑ کا ایک سلسلہ شروع ہوگیا ہے میاں نواز شریف کے خلاف تمام پرانے مقدمات بھی کھولے جارہے ہیں البتہ آصف علی زرداری کے تمام مقدمات ختم کیے جا رہے ہیں کیا اسٹیبلشمنٹ نے یہ فیصلہ کر لیا ہے کہ اگلی حکومت پیپلز پارٹی کی ہوگی اور وزیر اعظم آصف زرداری ہونگے اور ان کے لیے بڑی تیزی سے راہ ہموار کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پرویز مشرف پر آرٹیکل 6 کے تحت عدالت میں کیس چل رہا ہے اور بیماری کے بہانے پاکستان سے فرار ہیں اب ان کی نئی جماعت پاکستان عوامی اتحاد الیکشن میں حصہ لے گا تو کیا پرویز مشرف ملک آکر الیکشن میں حصہ لیں گے ایم، کیو،ایم میں پہلے دن کی پیش رفت سے پرویز مشرف کو بڑی امید پیدا ہوگئی تھی کہ متحدہ ایم، کیو، ایم کے وہ سربراہ بن جائیں گے مگر دوسرے دن کی کاروائی سے انہیں شدید جھٹکا لگا ہے کہ دونوں گروپ اگھٹے نہیں ہو سکے۔ تنویر سعید نے کہا کہ ملک کی تین بڑی پارٹیوں کے خلاف اتحادی محاذ کھڑے ہوگئے ہیں مولانا فضل الرحمان میاں نواز شریف کی حکومت میں اتحادی اور جماعت اسلامی کے،پی،کے میں پی، ٹی، آئی کے ساتھ حکومتی اتحاد بھی شامل مجلس عمل کو بحال کر کے اس پلیٹ فارم سے الیکشن میں حصہ لیں گے اور پی،ٹی، آئی کے لیے بڑی مشکل پیدا ہو جائے گی البتہ جے، یو ،آئی سے ن لیگ کو کوئی نقصان نہیں ہے۔ سندھ میں بھی اگر ایم، کیو، ایم کے دونوں دھڑے ایک ہوجاتے تو پی ، پی کے لیے مشکلات پیدا ہو جاتی مگر ابھی تک وہ اس مشکل سے نکل چکے ہیں البتہ سندھ کی قوم پرست جماعتوںکا رحجان پی، ٹی ،آ ئی کی جانب بڑھ رہا ہے اس طرح اگلہ الیکشن کون جیتے گا اس کے لیے تیاریاں کی جا چکی ہیں مرکز میں ایک کمزور حکومت تشکیل ہوگی۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved