لندن،عام آدمی پارٹی کااجلاس،ارسلان الملک کے قتل کی مذمت
  13  ‬‮نومبر‬‮  2017     |     یورپ

لندن (پ ر) عام آدمی پارٹی کا اجلاس سینئر وائس چیئرمین بیرسٹر یوسف اختر کی زیر صدارت منعقد ہوا جس میں سید عبدالرقیب چیئرمین برطانیہ' خطیب کاظمی جنرل سیکرٹری برطانیہ' انجمن جعفری' عابد نقوی' عارف الحق' العباد احمد اور دیگر مرکزی عہدیداروں کے ساتھ سابق جنرل سیکرٹری جاوید ہلال زیدی عام آدمی پارٹی نے شرکت کی۔ تمام حضرات نے فاتحہ خوانی کے بعد جوان اور نڈر بے باک لیڈر کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ارسلان الملک بہت سادہ طبیعت کے مالک تھے ان کی صلاحیتوں کی جتنی تعریف کی جائے کم ہے ان میں لیڈر شپ کی خوبیاں تھیں غریبوں کی اور پاکستان سے محبت ان کے قتل کا سبب بنی۔ مشترکہ بیان میں کہا گیا کہ ارسلان الملک چیئرمین عام آدمی پارٹی کا قتل پاکستانی قوم کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے اور دیگر چھوٹی جماعتوں کو بھی وارننگ ہے کہ وہ حکومت اور بڑی پارٹیوں کے ساتھ مل جائیں ورنہ ان کا بھی یہی انجام ہوگا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ عارضی طور پر پارٹی کے تمام دفاتر بند کرکے سیاسی سرگرمیاں معطل کردی گئی ہیں۔ سید عبدالرقیب نے اعلان کیا کہ ہم قاتلوں کی جلد گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہیں اور دوسری چھوٹی جماعتوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ میڈیا میں عام آدمی پارٹی کے سربراہ کے قتل کو سنجیدہ لیں اور ہمارے ساتھ تعاون کریں آج عام آدمی پارٹی کے چیئرمین کو شہید کیا گیا ہے کل کو کسی اور کی باری بھی آسکتی ہے اگر اس گندی اور ظالمانہ سیاست جس کا پہلا شہید ارسلان الملک ہے روایت کو ختم کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا ہم ایکسپریس اخبار کے مشکور ہیں جس نے پارٹی چیئرمین کے قتل کی خبر لگا کر قوم کو آگاہ کیا خاص طور پر بلا معاوضہ یہ خبر لگانے پر ان کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ سید عبدالرقیب نے عادل محمود کا خاص شکریہ ادا کیا جس نے تمام ساتھیوں کو ان کے شہید ہونے کی خبر سب سے پہلے ہم سب کو دی تھی اور پارٹی کے تمام امور کی ذمہ داری فی الحال عادل محمود کے ذمے ہے کارکن ان سے رابطہ کریں اور آئندہ کے لائحہ عمل کا انتظار کریں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved