پی پی اوورسیزکوآرڈی نیشن کمیٹی نے من پسندافرادکوعہدے دیئے،منصورراجہ
  3  دسمبر‬‮  2017     |     یورپ

لندن (نمائندہ اوصاف) پاکستان پیپلز پارٹی کی قیادت کو اندھیرے میں رکھ کر برطانیہ کا دورہ کرنے والی اوورسیز کوآرڈینیشن کمیٹی نے برطانیہ میں اپنے پسندیدہ افراد کو اہم عہدوں پر نامزد کیا اس کے لئے کسی سے بھی کوئی مشورہ نہیں کیا' کمیٹی کے اس غیر دانشمندانہ فیصلے پر ہمارے شدید تحفظات ہیں۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان پیپلز پارٹی کے دیرینہ اوورسیز رہنما اور سابق سفارت کار منصور راجہ نے گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو اور آصف علی زرداری سے درخواست کی کہ وہ برطانیہ میں رہائش پذیر پارٹی کے بے لوث کارکنوں کے جذبات کو اہمیت دیں اور نامزدگی کی بجائے پورے برطانیہ میں کارکنان کے ذریعے الیکشن کروائے جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ کوآرڈی نیشن کمیٹی کے چند افراد کی کارکردگی غیر اطمینان بخش ہے اس لئے ان کو اس کمیٹی سے فارغ کردیا جائے۔ اس موقع پر نامزد سینئر نائب صدر برطانیہ راجہ امجد اور ایڈیشنل سیکرٹری جنرل فضل الرحمن نے پارٹی کے اس فیصلے پر اپنے تحفظات کا اظہارکرتے ہوئے اپنے عہدوں سے مستعفی ہونے کا اعلان کیا۔ منصور راجہ نے مزید کہا کہ بے نظیر بھٹو شہید کی ہدایت پر پچھلے انتخابات میں مجھے صدارتی امیدوار نامزد کیا گیا تھا مگر چوہدری ریاض کے اصرار پر انہوں نے حسن بخاری کے مقابلے میں اپنے کاغذات واپس لے لئے تھے اور پارٹی کو کسی تفریق سے بچالیا۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ میں محسن باری کی بجائے پارٹی صدارت میرا حق بنتا تھا۔ انہوں نے کہا کہ اظہر بڑالوی کو پارٹی کا سیکرٹری جنرل نامزد کرنا ایک حیران کن فیصلہ ہے کیونکہ اس کے بارے کارکنان تحفظات رکھتے ہیں اسی طرح گریٹر لندن کے لئے جہاں سلیم کی بطور صدر نامزد کرنا بھی حیران کن ہے ۔ منصور راجہ نے پریس کانفرنس میں مطالبہ کیا کہ موجودہ تنظیم کو تحلیل کرکے برطانیہ کے کارکنان میں سے ایک نئی کوآرڈینیشن کمیٹی بنائی جائے جو کارکنان کی خواہش کو مدنظر رکھتے ہوئے الیکشن کروائے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved