مسلمان اپنے اعمال و کردار کو درست کرنے کی عملی کوشش کریں،علامہ انیس احمد
  4  دسمبر‬‮  2017     |     یورپ

اولڈہم(پ ر )سواد اعظم اھلسنت والجماعت کے زیر اہتمام ،ادارہ ارشاد الاسلام اولڈھم میں منعقدہ سالانہ مقصد میلاد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کانفرنس سے خطاب کرتے ھوئے علما کرام نے کہا کہ ھر مسلمان یہ بات ذھن نشین کر لے کہ توحید و سنت کے مطابق ایمان وعمل ھو گا تو اخروی کامیابی ملے گی؛ ان کا کہنا تھا کہ شرک خدا کو اور بدعت مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کو بالکل برداشت نہیں. شرک سے ایمان تباہ اور بدعت سے اعمال کا ثواب ضائع ھو جاتا ھے ، علما کرام نے قرآن و حدیث کی روشنی میں مزید کہا کہ مشرک اللہ تعالی کا اور بدعتی حضور صلی اللہ علیہ وسلم کا باغی ھو تا ھے،مشرک پر جنت حرام ھونے کا اعلان قرآن کرتا ھے اور بدعتی حوض کوثر پر حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے ھاتھ مبارک سے جام کوثر پینے سے محروم ھو گا یہ اعلان فرمان مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کرتا ھے، مقررین نے کہا کہ ھمارے آقا صرف مسلمانوں کے لیئے ھی نہیں بلکہ جہانوں کے لیئے رحمت بنا کر بھیجے گئے ھیں ، آپ صلی اللہ علیہ وسلم اپنے مشن رسالت میں پوری طرح کامیاب ھو کر اس دنیا سے تشریف لے گئے.رحمت اللعالمین صلی اللہ علیہ وسلم کے لائے ھوئے پیغام کو عام کرنا اور دنیا کے ایک ایک انسان تک پہنچانا اور سب نبیوں کی مشترکہ دعوت اللہ تعالی کی توحید لوگوں کو سمجھانا اوران کے عقائد کو شرک کی غلاظتوں سے بچانا اسی طرح ان کے اعمال و اخلاق کو بدعات و منکرات سے محفوظ رکھنا ھر عالم دین کی بنیادی اور اولین ذمے داری ھے ، مہمان خصوصی.مفسر قرآن علامہ انیس احمد قاسمی بلگرامی نے کہا کہ لوگوں کی اصلاح کے لیئے اللہ نے نقوش اتارے اور نفوس بھیجے ، ان کا کہنا تھا کہ اصل چیز ھی، مقصد میلاد مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کو سمجھنا سمجھانا اور اس پر عمل کرنا ھے ،یہی وہ چیز ھے جو صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین نے اپنائی تو دنیا پر چھا گئے. انہوں نے اپنے عمل وکردار سے اسلام کی روشنی ساری دنیا میں پھیلائی ،آج مسلمان کردار کی بجائے گفتار کے غازی بنے ھوئے ھیں.جسکا نتیجہ یہ ھے کہ ذلت ورسوائی اور مار کٹائی ھی مسلمانوں کا مقدر بن کر رہ گئی ھے.ضرورت اس بات کی ھے کہ مسلمان اپنے اعمال و کردار کو درست کرنے کی عملی کوشش کریں،مولانا قاری تصور الحق مدنی نے اپنے خطاب میں کہا کہ جب سے مسلمانوں میں اپنانے کی بجائے منانے کا رواج داخل ھوا ھے ،ان میں عقائد و اعمال اخلاق و معاملات کی کمزوریاں بھی اور زیادہ ھوگئی ھیں ،جن کی اصلاح کی بنیادی ذمے داری علما کرام کی ھے. بد قسمتی یہ ھے کہ علمائے کرام سے آج وہ کام کماحقہ ادا نہیں ھو رھا جیسا کہ ھونا چاھیئے تھا ، مولانا عادل فاروق نے انگریزی میں خطاب کرتے ھوئے کہا کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے تیرہ سالہ مکی دور کو آج امت کے سامنے بیان نہیں کیا جاتا،حالانکہ وہ حالات سن کر مسلمان اپنے ایمان کو مضبوط کر سکتے ھیں، مولانا اسد میاں شیرازی نے کہاکہ ھم حضور خاتم الانبیا حضرت محمد مصطفی احمد مجتبی صلی اللہ علیہ وسلم کے میلاد کا مقصد سمجھیں، در و دیوار گلی و بازار کو چمکانیاور سجانے سے زیادہ اپنے جسموں اور انفرادی و اجتماعی زندگی کو سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم کے مطابق ڈھالنے کا اھتمام کریں، مفتی محمد تقی نے کہا کہ مسلمان گھروں کے ونڈوز میں لائٹیں لگانے کا مقابلہ کرنے سے زیادہ احکامات اسلام پر عمل پیرا ھونے کا مقابلہ کرنیکا رواج ڈالیں. یہ بات ذھن میں رکھیں کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ ھمارا تعلق سالانہ کی بجائے روزانہ کی بنیاد پر مستحکم ھونا چاھیئے ، مولانا محمد شفیق نے کہا کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے ماریں کھا کر اللہ کی توحید کو بیان کیا آج ھمارے جلسوں میں اس توحید کو بیان نہیں کیا جاتا. جو مسئلہ سب نبیوں نے سنایا.آج ھماری زبان پر وہ کیوں نہیں آتا؟ ان کا کہنا تھا کہ عقیدہ توحید ایمان کی بنیاد اور سنت نبوی اعمال کی روح ھے ، غیر اقوام کی نقالی کرنے کی بجائے ، مسلمانوں کو چاھیئے کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم سے دین اسلام کی عملی تربیت حاصل کر کے ساری دنیا میں اسلام کا پیغام پہنچانے والے صحابہ کرام رضوان اللہ علیھم اجمعین کے طور طریقے اپنائیں اور حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ اپنی عملی و حقیقی محبت کا اظہار کریں ، سواداعظم اھلسنت والجماعت کے ناظم اعلی مولانا قاری عبدالرشید نے کہا کہ اسلام میں عیدیں صرف دو ھی ھیں جن کے نام عید الفطر اور عید الاضحی ھیں .حضور ص اپنے یوم ولادت سوموار کے دن روزہ رکھا کرتے تھے .مسلمان سوچیں اور غور و فکر کریں کہ ثواب اسی کام کا ھو گا جو حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت کے مطابق ھو گا.روزہ اور عید ایک ھی دن کیسے جمع ھو سکتے ھیں؟نبی جس دن روزہ رکھیں امتی اسی دن عید منائیں سوچنے سمجھنے اور اصلاح کرنے کا مقام ھے.کانفرنس میں خواتین بچوں نوجوانوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی مولانا حامد خان. محمد طارق عثمانی مولانا عمر فاروق ودیگر نے انتظامات کی نگرانی کی۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
100%
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved