اتوار‬‮   21   جنوری‬‮   2018
عوام کی سیاسی و اخلاقی تربیت کی ضرورت ہے،چوہدری دائود
  9  جنوری‬‮  2018     |     یورپ

برمنگھم( پ ر) جماعت اسلامی آزاد جموں و کشمیر برطانیہ مڈلینڈ کے کنونیر چوہدری دائود پہلوان نے کہا ہے کہ کشمیر اور پاکستانی جماعتوں میں کوئی تنظیم اور نظم کی پابندی نہیں ہے جن لوگوں کے اندر خدمت کا جذبہ نہیں ہوتا وہ ذاتی مفادات اور عہدوں کی خاظر تنظیمیں بناتے ہیں ان کا کوئی مستقبل نہیں ہوتا یہی وجہ ہے کہ لوگ اپنے نام اور عہدوں کی خاطر جماعتیں بناتے ہیں اور پھر جلدی ٹوٹ بھی جاتی ہیں غیر جمہوری لوگ جماعتوں کو نہیں چلا سکتے اور ڈکٹیٹر بن کر مسلط ہوجاتے ہیں اور پھر گروپ بندیاں شروع ہوجاتی ہیں اور کمیونٹی بھی تقسیم ہو جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مختلف کشمیری اور پاکستانی جماعتوں میں صلاحیتوں اور دیانت کو نہیں دیکھا جاتا مفاد پرست لوگ جن کے پاس کرپشن اور نا جائز دولت ہوتی ہے وہ اپنا اثر رسوخ استعمال کر کے ہر کام کے راستے میں رکاوٹ بن جاتے ہیں انہیں ملک اور قوم کے ساتھ کوئی دلچسپی نہیں ہے آج پاکستان اور آزاد کشمیر میں یہی طبقہ تمام خرابیوں کی جڑ ہے جس نے ہر جگہ انتشار اور بحران پیدا کر رکھا ہے اور پوری قوم مسائل کا شکار ہے برطانیہ جیسے جمہوری ملک میں بھی کوئی سبق نہیں سیکھا۔ چوہدری دائود نے کہا کہ عوام کو سیاسی اور اخلاقی تربیت کی ضرورت ہے کسی جماعت میں کوئی تربیتی نظام نہیں ہے با اثر لوگ دولت اور گلو بٹوں کے بل بوتے پر جماعتوں میں گھس جاتے ہیں یہی وجہ ہے کہ ملک کے سیاستدان اور اداروں کی ملکی اور قومی مفادات کے لیے کوئی خدمت اور کارکردگی نہیں ہے تعلیم یافتہ طبقے نے اس میں زیادہ خرابیاں اور بربادی پیداکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یورپین ممالک نے اپنے عوام کی ایسی تربیت کی ہے ان کے اندر ذمہ داری کا احساس پیدا کیا سیاست میں کرپشن نہیں ہے میرٹ پر مبنی لوگوں کو ذمداری دی جاتی ہے کوئی سفارشی نظام نہیں ہے عہدوں کے لالچی لوگوں کی حوصلہ شکنی کی جاتی جب کہ اس طرح کی خوبیاں مسلمانوں میں زیادہ ہونی چاہئے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved