برطانوی کابینہ میں ردوبدل،اہم ترین وزراء اپنے عہدوں پربرقرار
  9  جنوری‬‮  2018     |     یورپ

لندن( او صا ف نیو ز )ایک استعفے کا باعث بننے والے اور لیبر کے بقول ''تعلقات عامہ کی بے رونق مشق'' والے ردوبدل کے بعد ٹیریسا مے کی کابینہ کا پہلا اجلاس منعقد ہوا۔ جسٹین گریننگ نے محکموں میں تبدیلی سے انکار کے بعد اپنا عہدہ چھوڑ دیا ہے جبکہ ہیلتھ سیکرٹری جیریمائی ہنٹ وزیراعظم کو قائل کرنے میں کامیاب رہے ہیں کہ وہ انہیں زیادہ مضبوط کردار کے ساتھ ان کے عہدے پر برقرار رکھیں۔ کابینہ کے تمام اہم ترین وزراء اپنے عہدوں پر برقرار رہے ہیں۔ جونیئر وزراء کی تبدیلیوں کا سلسلہ جاری ہے جس کے مطابق جو جونسن کو یونیورسٹیوں سے ٹرانسپورٹ کے شعبے میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔ کنزرویٹو پارٹی کے نئے چیئرمین برینڈن لیوس کے مطابق یہ ردوبدل مکمل ہونے تک ایک تازہ ہوا کے جھونکے کی مانند ہو گا۔ دوسری جانب بی بی سی کے مطابق بعض ٹوری ایم پیز نے اسے ''خفت آمیز'' اور ''بوجھل'' قرار دیا ہے۔ آج جن وزارتوں میں تبدیلی کا اعلان کیا گیا ان کے مطابق جو جونسن کی جگہ سام گیماہ یونیورسٹیوں کے وزیر کا عہدہ سنبھالیں گے جبکہ مارک گارنیئر وزیر تجارت کا عہدہ کھو بیٹھے ہیں جس کے بارے میں بعض ذرائع کا کہنا ہے کہ ان کے جانے کا ناروا کردار کے حالیہ الزامات سے کوئی تعلق نہیں۔ ٹرانسپورٹ کے وزیر جان ہیز، صحت کے وزیر فلپ ڈونے اور تعلیم کے وزیر رابرٹ گڈول کو بھی اپنے عہدوں سے فارغ کر دیا گیا ہے۔ الوک شرما کو ہائوسنگ سے ایمپلائمنٹ میں تبدیل کر دیا گیا ہے جبکہ ڈومینک راب کو ان کی جگہ ہائوسنگ کا وزیر بنا دیا گیا ہے اور ڈومینک راب کی جگہ روروی سٹیوارٹ وزیر انصاف بن گئے ہیں۔ مارگوٹ جیمز، ہیریٹ بالڈون اور کیرولین ڈائنینیج کو بالترتیب کلچر، فارن آفس اور صحت کا وزیر مملکت بنا دیا گیا ہے۔جو جانسن کو سرکاری یونیورسٹیوں کے ریگولیٹری ادارے کے بورڈ میں کالم نگار ٹوبی ینگ کی تقرری پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا تھا۔ سابق میئر لندن اور بورس جانسن کے بھائی جو جانسن اپنے اس نئے عہدے میں وزیر لندن بھی ہوں گے۔ بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کنزرویٹو کے نئے ڈپٹی چیئرمین جیمز کلیورلی کا کہنا تھا کہ انہیں اس ردوبدل پر لگنے والی اخباروں کی سرخیوں پر کوئی پریشانی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج اور کل کا دن ردوبدل چلتا رہا اور ایسی باتوں پر ہمیشہ میڈیا میں بہت لے دے ہوتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج جو ہو رہا ہے اس کی سرخیاں لگ رہی ہیں کل اور اس سے آگے واقعی اہم باتیں سامنے آئیں گی جو اس بارے میں ہوں گی جو ہم کر رہے ہیں اور جو کچھ ہم حکومت میں رہتے ہوئے کر کے دکھا رہے ہیں۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved