اتوار‬‮   21   جنوری‬‮   2018
زینب جیسے واقعات کی روک تھام کاحل شرعی سزائوں کا نفاذہے،جمعیت علمائے برطانیہ
  10  جنوری‬‮  2018     |     یورپ

ہڈرزفیلڈ (پ ر )جمعیت علمائے برطانیہ کے قائدین مولانا سید اسد میاں شیرازی. مولانا محمد اکرم اوکاڑوی. مولانا قاری عبدالرشید اور دیگر نے قصور میں دل ھلا دینے والے واقعہ پر کہا کہ حکمرانوں کے بچے تو محفوظ ھیں اور عوام کے بچوں کے غیر محفوظ ھونے کا آئے روز کوئی واقعہ سامنے آجاتا ھے. قصور میں سات سالہ بچی کا اغوا.اس کی عصمت دری اور پھر اس کے قتل کا واقعہ کھلی درندگی ھے.جسم میں دل اور دل میں درد رکھنے والا ھر انسان اور اولاد کی دولت سے مالا مال ھر شخص گہرے صدمے سے دو چار ھو چکا ھے. والدین اس درندگی کے بعد اپنے بچوں کے تحفظ کے بارے میں سخت فکر مند ھو گئے ھیں.ان واقعات کی روک تھام کا واحد حل شرعی سزائوں کے فوری نفاذ میں مضمر ھے .ادھر جرم اور ادھر فوری سزا کا قانون ھی انسانیت کے دشمنوں کو لگام دے سکتا ھے. پاکستان اسلام کے نام پر بنایا گیا ھے اور اسلام کا نظام ھی پاکستان کے عوام کی جان و مال عزت و آبرو کا تحفظ کریگا.بجائے نفاذ اسلام کے 70سال گزر گئے پاکستان کے درو دیوار کو اسلامی نظام کے نفاذ کی راہ تکتے.پاکستان میں نفاذ اسلام سے فراری و باغی حکمراں جو اسلامی شناخت و قوانین کو پاکستان سے مٹانے اور بدلنے کے درپے ھیں وہ اپنے لیئے دنیا و آخرت کا خسارا کما رہے ہیں .قبل ازیں بزرگ عالم دین اور جمعیت علمائے برطانیہ کے سرپرست مولانا عبدالرشید ربانی آف ڈیوز بری اور سواد اعظم اہل سنت والجماعت کے ناظم اعلی مولانا قاری عبدالرشید آ ف اولڈھم نے حکومت پاکستان کی طرف سے جاری کئے گئے سو روپے کے 'سکے' سے 'اسلامی جمہوریہ' کی عبارت کاٹ کر صرف حکومت پاکستان پرنٹ کرنے پر اپنے مشترکہ رد عمل میں کرتے ھوئے کہا کہ جس ملک کے معرض وجود میں آنے کا مقصد ھی اسلام تھا اور اسی مقدس مشن کی خاطر ھزاروں جانوں کے نذرانے پیش کئے گئے.ہزاروں مسلمان خواتین کی عصمتیں تار تار کی گئیں کس قدر افسوس کا مقام ھے کہ مسلم لیگ کی حکومت ھی پاکستان سے اسلام کا نام مٹانے پر تل چکی ھے . اس سے پہلے مسلمانوں کے مشترکہ و اجتماعی عقیدہ ختم نبوت صلی اللہ علیہ وسلم پر شب خون مارا اور ذلت رسوائی مول لی.اور اب سو روپے کے سکے پر "اسلامی جمہوریہ" پاکستان لکھنے کی بجائے 'حکومت پاکستان' لکھ دیا.اسلام کا نام لینے والے حکمرانوں کے اعمال و کردار جب اسطرح اسلام مخالف ھوں تو پھر ایسے حکمرانوں کو اللہ تعالی کی ذات بھی اقتدار کے ایوانوں سے اٹھا کر باھر سڑکوں پر دے مارتی ھے. اور پھر وہ ذلیل و رسوا ھو کر لوگوں سے پوچھتے پھرتے ھیں کہ مجھے کیوں نکالا گیا؟ ان رہنما ئوں کا یہ بھی کہنا تھا کہ مسلم لیگ کی حکومت قیام پاکستان کے وقت قوم کو دیا ھوا وعدہ 'نفاذ اسلام' 70سال گزرنے کے باوجود پورا نہیں کر سکی.اسطرف قدم آگے بڑھانے کے برعکس پاکستان میں نام اسلام اور عقائد اسلام کے خلاف آئے روز نت نئے ہتھکنڈے آزما رھی ھے.جس کی وجہ شاید آنے والے انتخابات جیتنے اور اقتدار حاصل کرنے کے لیئے باھر والے آقائوں کو خوش کرنا ھو سکتا ھے.ان حرکتوں کا جواب مسلم لیگ نون کو آنے والے انتخابات میں دینی قوتوں کو جتوا کر عوام کو دینا چاہیے. اور اس کے لئے زمین کافی حد تک ہموار بھی ھو چکی ھے.


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

  قائد اعظم محمد علی جناح  
  اسکندر مرزا  
  لیاقت علی خان  
  ایوب خان  
آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved