کشمیرویلفیئرکاقیام حکومتی کارکردگی پرسوالیہ نشان ہے،دائودپہلوان
  11  جنوری‬‮  2018     |     یورپ

برمنگھم(پ ر) جماعت اسلامی آزاد جموں و کشمیر برطانیہ مڈلینڈ کے کنونیر چوہدری دائود پہلوان نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر اور پاکستان میں مسلم لیگ ن کی حکومت ہے برطانیہ آباد کشمیر کمیونٹی کے مسائل میں عدم دلچسپی کے نتیجے میں ن لیگ آزاد کشمیر سے وابستہ لوگ اپنی ہی حکومت کے خلاف میدان میں آگے ہیں اور کشمیر ویلفیئرکے نام سے گروپ تشکیل دیا گیا ہے پرانے لیگی راجہ فاروق حکومت کی پالیسیوں پر عدم اعتماد کا اظہار کر رہے ہیںکہ حکومت مسائل حل کرنے میں بُری طرح ناکام ثابت ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب سے آزاد کشمیر میں ایڈ منسٹریٹرمقرر کیے گے ہیں برطانیہ میں سنیئر ن لیگی جنہیں موجودہ تقرریوں میں بھی نظر انداز کیا گیا وہ فاروق حیدر حکومت پر خوش نہیں ہیں وزیر اعظم کے گذشتہ سال دورے کے دوران ن لیگیوں نے راجہ فاروق حیدر پر کافی دبائو بھی ڈالا تھا کہ انہیں کہیں ایڈجسٹ کیا جائے اور وزیر اعظم نے صاف انکار کر دیا تھا کابینہ میں کوئی اضافہ نہیں کیا جائے گا اور ماضی کی طرح مشیروں کی کوئی فوج بھرتی نہیں کی جائے گی اور اس پر ن لیگی کافی ناراض اور پریشان تھے ایڈ منسٹریٹروں کی تقرری کے بعد اب حکومت کے خلاف کھل کر میدان میں آچکے ہیں۔ چوہدری دائود نے کہا کہ بیرون ملک پاکستان کا سفارت خانہ ذیلی دفاتر ممبر اورسیز اسمبلی اور مسلم لیگ ن کا برطانیہ میں باقاعدہ تنظیمی ںنظم قائل ہونے کے باوجود مسائل کے حل کرنے کے لیے کشمیر ویلفیئر کا قیام حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے کہ آخر کیا وجہ ہے کہ لوگ اپنی ہی حکومت کے خلاف کھڑا ہونے کے لیے مجبور ہوگئے ہیں اور کیا حکومت پر دبائو ڈالنے میں کامیاب ہونگے یا آگے چل کر یہ سارے لوگ راجہ فاروق حیدر کے خلاف کشمیر ویلفیئر کے ساتھ تعاون جارہی رکھیں گے اور یہ پہلا موقع ہے کہ برسر اقتدار پارٹی کے خلاف برطانیہ میںحکومتی پارٹی سامنے آئی ہے کوئی فورم قائم ہوا ہے اس کے ساتھ بھرپور تعاون بھی کرنا چاہئے مسائل اور مشکلات ساری کمیونٹی کے مشترکہ ہیں ۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 انٹر نیٹ کی دنیا میں سب سے زیادہ پڑھے جانے والے مضا مینں
loading...

 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved