مضبوط پاکستان مسئلہ کشمیرکے حل کیلئے ناگزیرہے،واجدعلی
  6  فروری‬‮  2018     |     یورپ

برمنگھم (پ ر ) سابق صدارتی مشیر برائے اوورسیز ، کنزرویٹو پارٹی کے نامزد اُمیدوار برائے کونسلر برمنگھم کونسل واجد علی برکی نے کہا ہے کہ نواز شریف نااہل ہونے کے بعد مکمل طور پر بوکھلاہٹ کا شکار ہو چکے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ وہ مظفرآباد میں خطاب کے دوران کشمیری سے اظہار یکجہتی کی بجائے اپنی ناہلی کا رونا روتے رہے ۔ ان خیالات کا اظہار انھوںنے اپنے ایک بیان میں کیا انھوں نے کہا ہے کہ مضبوط اور مستحکم پاکستان مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ناگزیر ہے یہی وجہ ہے کہ بھارت پاکستان کے اندر دہشت گردی سے غیر مستحکم کرنا چاہتا ہے تاکہ پاکستان کشمیریوں کی حمایت ترک کر دے ۔ واجد علی برکی نے کہا ہے کہ کشمیریوں اپنے پاکستانی بھائیوں کی طرف سے ہر سال اظہار یکجہتی کے لیے ان کے شکر گزار ہیں لیکن پاکستان کو کشمیر کے حوالے سے ایک مضبوط موقف اور پالیسی اپنانے کی ضرورت ہے ۔بھارت عالمی سطح پر پاکستان مخالف پروپیگنڈہ میں کوئی موقع بھی خالی ہاتھ نہیں جانے دیتا ۔ انھوں نے کہا ہے گل بھوشن یادیو کی گرفتاری کی صورت میں عالمی برادری کے سامنے بھارتی دہشت گردی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ عالمی برادری اور انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والی تنظمیں پاکستان اور کشمیر میں بھارت کی دہشت گردی اور کشمیریوں پر انسانیت سوز مظالم پر بھرپور ایکشن لینا چاہیے لیکن نام نہاد انسانی حقوق کے دعوے داروں کی خاموشی لمحہ فکریہ ہے۔ واجد علی برکی نے کہا ہے کہ آزادکشمیر اور مقبوضہ اور دنیا بھر میں آباد کشمیریوں کو چاہیے کہ وہ سیاسی گروہ بندیوں میں بٹنے کی بجائے ایک ہو جائے اور اپنے مقصد و حصول کو سمجھیں تا کہ دشمن کو شکست دی جائے۔ انھوں نے کہا ہے گروہ بندیوں میں بٹنے سے کشمیرکاز کو نقصان پہنچ رہا ہے جو کہ شہیدوں کے خون سے غداری ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved