بھارت مقبوضہ کشمیرمیں مظالم بندکرے،برطانوی ارکان پارلیمنٹ کاکشمیریوں سے اظہاریکجہتی
  6  فروری‬‮  2018     |     یورپ

لندن(اوصا ف نیو ز )بھارتی مقبوضہ کشمیر کے عوام کے ساتھ یکجہتی کا ایک شاندار مظاہرہ اس وقت دیکھنے میں آیا جب برطانوی ارکان پارلیمنٹ نے کشمیری عوام کے انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزیوں کو ہولناک قرار دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارت، اپنے زیرقبضہ کشمیر میں مظالم کا سلسلہ فی الفور بند کرے اور کشمیر کے دیرینہ تنازعہ کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرے۔ ارکان پارلیمنٹ کشمیر پر ہونے والے ایک سیمینار سے خطاب کر رہے تھے جس کا اہتمام پاکستان ہائی کمیشن لندن اور جموں کشمیر سیلف ڈیٹرمینیشن موومنٹ انٹرنیشنل نے مشترکہ طور پر 5 فروری کو برطانوی پارلیمنٹ میں کیا۔ متعدد لارڈز، ایم پیز اور ایم ای پیز نے اس موقع پر خطاب کیا۔ اس کے علاوہ میئرز، کونسلروں، کشمیری رہنمائوں، سول سوسائٹی کے ارکان اور انسانی حقوق کی تنظیموں، کشمیری کمیونٹی اور صحافیوں کی بڑی تعداد نے سیمینار میں شرکت کی۔ اس موقع پر اپنے خطاب میں قائمقام ہائی کمشنر زاہد حفیظ چودھری نے بین الاقوامی برادری پر زور دیا کہ وہ آگے آئے اور بھارت پر زور دے کہ وہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی کا سلسلہ بند کرے۔ زاہد حفیظ چودھری نے کہا کہ پاکستان سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ کو کشمیر پر خصوصی نمائندے کی تقرری کی درخواست کر چکا ہے۔ انہوں نے پاکستان کی یہ تجویز بھی دہرائی کہ کشمیر کے دونوں اطراف میں حقائق کا پتہ لگانے کے لئے برطانوی ارکان پارلیمنٹ کا مشن بھیجا جائے۔ قائمقام ہائی کمشنر نے کشمیر میں بھارتی مظالم کی مذمت کی اور کشمیری عوام کے حق خودارادیت کے لئے پاکستان کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت کا اعادہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ بات چیت کے ذریعے تنازعہ کشمیر کو حل کرنے پر بھارت کی عدم آمادگی کشمیری عوام کی مشکلات میں اضافے کا باعث بن رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ اور بین الاقوامی برادری کشمیر کو متنازعہ علاقہ تسلیم کریں۔ مقررین نے بھارتی سکیورٹی فورسز کے ہاتھوں بھارتی مقبوضہ کشمیر میں ڈھائے جانے والے مظالم اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر گہری تشویش کا اظہار کیا اور بھارتی سکیورٹی فورسز کی جانب سے استعمال کئے جانے والے کالے قوانین کے فوری خاتمے کا مطالبہ کیا۔ چیئرمین جموں کشمیر سیلف ڈیٹرمینیشن موومنٹ انٹرنیشنل راجہ نجابت حسین نے امید ظاہر کی کہ رواں سال کے اواخر میں کشمیر پر ایک اور مباحثہ برطانوی پارلیمنٹ میں منعقد کیا جائے گا جس میں کشمیری عوام کی حالت زار اور علاقائی امن وخوشحالی کے لئے تنازعہ کے تصفیہ کی اہمیت کو اجاگر کیا جائے گا۔ ''یوم یکجہتی کشمیر'' ہر سال 5 فروری کو جموں وکشمیری عوام کے حق خودارادیت کی حمایت کے اظہار کے لئے منایا جاتا ہے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved