انقرہ،یوم یکجہتی کشمیرسیمینارمیں سینکڑوں ترکوں کی شرکت،کشمیریوں کی حمایت
  7  فروری‬‮  2018     |     یورپ

انقرہ( او صا ف نیو ز )معاشرے کے مختلف طبقات کی نمائندگی کرنے والے سینکڑوں ترکوں نے ''یوم یکجہتی کشمیر سیمینار'' میں شرکت کی اور بھارتی مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام کے ساتھ بھرپور یکجہتی کا اظہار کیا اور ان کے جمہوری حق خودارادیت کے لئے غیرمتزلزل حمایت کا اعادہ کیا۔ یہ سیمینار اکنامک اینڈ سوشل ریسرچز سنٹر (ای ایس اے ایم) اور انقرہ کے پاکستانی سفارتخانے کی جانب سے مشترکہ طور پر سوموار کی شام یوم یکجہتی کشمیر کے سلسلے میں منعقد کیا گیا۔ ممتاز شخصیات، سیاسی کارکنوں، تدریسی ماہرین، محققین، طلبہ، میڈیا، سول سوسائٹی نمائندوں، اور پاکستانی کمیونٹی کے ارکان کی بڑی تعداد نے سیمینار میں شرکت کی۔ صدر سعادت پارٹی تیمل کرملالو، ترکی کے نائب وزیر خارجہ احمد یلدیز، صدر ای ایس اے ایم رسائی کوتان اور ترک پارلیمنٹ میں ترکی پاکستان پارلیمنٹری فرینڈشپ گروپ کے چیئرمین محمد بالتا نے شرکاء سے خطاب کیا۔ انہوں نے اپنے بنیادی حقوق کی خاطر کشمیری عوام کی انتھک جدوجہد کو خراج تحسین پیش کیا اور اس دیرینہ تنازعہ کو اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق جلد حل کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے تنازعہ کشمیر کے حتمی تصفیہ تک پاکستان اور کشمیری عوام کے لئے ترک حمایت جاری رکھنے کی یقین دہانی بھی کرائی۔ ترکی کی جانب سے مسلسل حمایت کو سراہتے ہوئے ترکی میں پاکستان کے سفیر سائرس سجاد قاضی نے کہا کہ پاکستانی عوام اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہیں۔ انہوں نے حاضرین کو انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزیوں کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ کسی بھی طرح کی وحشیانہ قوت کشمیری عوام کے عزم کو توڑنے میں کامیاب نہیں ہو پائی۔ بعد ازاں ممتاز ماہر تدریس اور ترک پارلیمنٹ کے سابق رکن ڈاکٹر اویا اکونیک نے کشمیر پر ایک پینل گفتگو کی میزبانی کی۔ پینل ارکان میں پروفیسر ڈاکٹر سینسر امر، پروفیسر ڈاکٹر ایم سیفیتین ایرول اور طالب علم و محقق آئدین گوون شامل تھے۔ پینل ارکان نے تنازعہ کشمیر کی اصل وجوہات پر تفصیلی گفتگو کی۔ ان کا خیال تھا کہ جنوبی ایشیا میں امن واستحکام کا انحصار تنازعہ کشمیر کے کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق حل پر ہے۔ اس موقع پر ایک دستاویزی فلم بھی دکھائی گئی جس میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی سکیورٹی فورسز کی جانب سے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کو اجاگر کیا گیا۔ کانفرنس کے مقام پر جموں وکشمیر کے مظلوم عوام کی ان کہی مشکلات پر ایک تصویری نمائش کا اہتمام بھی کیا گیا تھا۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved