2018کشمیریوں کی آزادی کا سال ثابت ہو گا ، راجہ شبیر
  8  فروری‬‮  2018     |     یورپ

لیوٹن (پ۔ر) بھارت جموں کشمیر میں مظالم ڈھا کر کشمیریوں کی نسل کشی ہی نہیں کر رہا بلکہ اقوام متحدہ کے انسانی بنیادی حقوق کے چارٹر اور بین القوامی قوانین کی سر عام خلاف ورزیاں کر رہا ہے۔5 فروری کو دنیا بھر میں کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا گیا جس سے ثابت ہوتا ہے کہ اقوام عالم کشمیریوں کے حق آزادی کو تسلیم کرتی ہے اور کشمیریوں کے مسئلہ کشمیر کے حل میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے چارٹر اور قانون کے مطابق کشمیریوں کی حمایت کرتی ہے ۔ اقوام متحدہ اور عالمی برادری اپنی قراردوں کے مطابق استصواب رائے کے زریعہ حق آزادی دے بھارت کی ظالمانہ کارروئیاں اور جموں کشمیر میں پائلٹ گن کا استعمال اور کنٹرول لائن پر مسلسل گولہ بھاری کے زریعے کشمیریوں کو نشانہ بنا کر بالخصوص سویلین آبادی کو زخمی و شہید کر رہا ہے جو انتہائی ظالمانہ اور پُر تشدد کارووئیاں ہیں اقوام متحدہ فوری اقدامات کر کے بھارت کو ان ظالمانہ کارروایئوں سے روکے۔ دنیا بھر میں بھارت کی یہ مکرو ازیت ناک کارروائیوں کے خلاف آواز بلند ہو رہی ہے ۔ان خیالات کا اظہار یورپ اینڈ ایشیاء ہیومین رائٹس کمیشن کے چیئر مین راجہ محمد شبیر خان ایڈوکیٹ نے 5 فروری کو کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے موقع پر کیا ۔ انھوں نے کہا کہ انشاء اﷲ 2018 کشمیریوں کی آزادی کا سال ثابت ہو گا ، اور کشمیری عوام آزادی کی منزل کے قریب ہیں ۔ چیئر مین ہیومین رائٹس کمیشن نے کنٹرول لائن پر بھارت کی جانب سے پُر تشدد کاررویئوں کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ انسانی بنیادی حقوق کی خلاف ورزیئوں پر اب بین القوامی دنیا خاموش نہیں رہے گی ۔ انھوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر آزاد کشمیر بیس کیمپ کی حکومت اور عوام اور بالخصوص پاکستان کی سیاسی قیادت و حکومت اور عوام نے کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے جس طرح والہانہ جذبات کا اظہار کیا ہے وہ باعث افتخار اور قابل ستائش ہے اب وقت آ گیا ہے کہ بھارت کو مسئلہ کشمیر کے حل کی طرف بڑھنا ہو گا اور جموں کشمیر کی عوام کو آزادی دینا پڑیں گی جو کشمیریوں کا بنیادی حق ہے ۔ چیئر مین ہیومین رائٹس کمیشن نے مزید کہا کہ مردان یونیورسٹی کے طالب علم مشال خان کے مقدمہ میں دس مہینوں میں دہشت گردی کی عدالت کی طرف سے فیصلہ آنا حوصلہ افزا اقدام ہے ۔ جس سے لواحقین کو جلد انصاف ملا ہے اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچانے میں جلد انصاف کے تقاضے پورے ہوں گے ۔ انھوں نے امید ظاہر کی کہ مشال خان کے مقدمہ کے مرکزی کردار کو بھی جلد گرفتا ر کر کے انصاف کے کٹہرے میں لاء کر مقدمہ کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ چیئر مین ہیومین رائٹس کمیشن نے کہا کہ اسی طرح کے،پی ،کے کے ایک خاتون کو سرے عام ننگا گھمانے کے مقدمہ کی بھی فوری کارروئی کر کے ملزمان کو گرفتار کیا جا کر انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے گا ۔ اور میڈیکل کی طالبہ آصمہ رانی کے ملزمان کو بھی فوری طور پر گرفتار کر کے انصاف کے تقاضے پورے کیے جائیں ۔ چیئرمین ہیومین رائٹس کمیشن نے کہا کہ پاکستان کی عدلیہ میں باصلاحیت اور اچھے ججز کی کمی نہیں اور امید ظاہر کی کہ مستقبل میں پاکستان کی عدلیہ آئین و قانون اور رول آف لاء کے مطابق مثبت اور پاکستان کی عوام کی امنگوں کے مطابق صاف اور شفاف اور انصاف کے تقاضے پورے کرتے ہوئے فیصلے دے کر پاکستان کے شہریوں اور بالخصوص سیاسی زعماء کو سستا اور بروقت انصاف فراہم کرے گے۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں





  اوصاف سپیشل

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

آج کا مکمل اخبار پڑھیں

کار ٹونز


یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved