عاصمہ جہانگیرکی خدمات کوہمیشہ یادرکھاجائے گا،بیرسٹرامجدملک
  14  فروری‬‮  2018     |     یورپ

را چڈیل ( فیا ض بشیر )ایسوسی ایشن آف پاکستانی لائیرز برطانیہ نے اپنی ساتھی، سابق چیئرپرسن سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن اور ہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان اور انسانی حقوق کی علمبردار اسماء جہانگیر ایڈووکیٹ کی موت پر اظہار افسوس کیا ہے جو 11 فروری کو انتقال کر گئی تھیں۔ چیئرمین اے پی ایل، راکڈیل لاء ایسوسی ایشن کے پہلے ایشیائی صدر اور ایس سی بی اے و ایچ آر سی پی کے تاحیات رکن بیرسٹر امجد ملک نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ہم ان طبقات کی ایک پرزور آواز سے محروم ہو گئے ہیں جن کی آواز عام طور پر ہمارے معاشرے میں نہیں سنی جاتی اور جو ممنوعہ مسائل پر بات کرنے سے گریزاں رہتے ہیں۔ عاصمہ جہانگیر کی موت سے لاقانونیت، امتیاز اور تعصبات کے خلاف تاریخی تحریک کا ایک باب ختم ہو گیا ہے۔ انسانی حقوق، قانون کی حکمرانی، سب کے لئے بلاامتیاز انصاف، صنفی امتیاز اور مظلوم طبقات کے لئے ان کی فعال خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ وہ انسانی اقدار کی ایک علامت تھیں اور ان کی خدمات آنے والی نسلوں، جونیئر وکلاء اور انسانی حقوق کے کارکنوں کے لئے مثالی حیثیت رکھتی ہیں۔ وہ ایک انتہائی شفیق، منکسر المزاج لیکن پرجوش کارکن تھیں جنہوں نے ان مقاصد کی خاطر کام کیا جن پر وہ یقین رکھتی تھیں اور اپنی رائے کا دفاع کیا۔ بیرسٹر امجد ملک نے مزید کہا کہ اے پی ایل اور برطانیہ کے وکلاء نے جولائی 2011 میں گریٹر مانچسٹر میں اسماء جہانگیر کی خدمات پر انہیں اعزاز سے بخشا۔ انہوں نے سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی صدر کی حیثیت سے دونوں ممالک کی وکلاء برادری کے درمیان فاصلے دور کئے اور انہیں 2011-2012 میں پاکستان کی ایس سی بی اے کانفرنسوں میں ''دہشت گردی اور منصفانہ سماعت'' اور ''قیادت اور طرزحکمرانی'' کے موضوعات پر مقالے پڑھنے کے لئے مدعو کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایشیا میں انسانی حقوق کی عظیم علمبردار سے محروم ہو گیا ہے اور ہماری ہمدردیاں ان کے اہل خانہ کے ساتھ ہیں۔ مرحومہ کے لئے دعائے مغفرت کے ساتھ انہوں نے پاکستان اور اس کے عوام سے اپیل کی کہ وہ اسی اعزاز کے ساتھ انہیں رخصت کریں جس کی وہ حقدار تھیں اور اپنی ساری زندگی بیباکی اور اصولوں کی بنیاد پر گزاری۔


اس خبر کے بارے میں اپنی رائے دیجئے
پسند آئی
 
ٹھیک ہے
 
کوئی رائے نہیں
 
پسند ںہیں آئی
 


 سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں






آج کا مکمل اخبار پڑھیں

یورپ

کالم /بلاگ


     
     
تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ روزنامہ اوصاف محفوظ ہیں۔
Copyright © 2016 Daily Ausaf. All Rights Reserved