07:24 am
جرمنی سے امریکی فوج کا انخلا نیٹو کیلئے باعث تشویش ہوگا، جرمن وزیر دفاع

جرمنی سے امریکی فوج کا انخلا نیٹو کیلئے باعث تشویش ہوگا، جرمن وزیر دفاع

07:24 am

برلن۔ : جرمن وزیر دفاع انیگریٹ کرامپ کارین برگ نے کہا ہے کہ جرمنی سے فوج کے انخلاء کی امریکی دھمکی سے دونوں ممالک کے تعلقات کو نقصان نہیں پہنچے گا، تاہم مجموعی طور پر یہ نیٹو اتحاد کے لیے باعث تشویش بات ضرور ہوگی۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق جرمن وزیر دفاع انیگریٹ کرامپ کارین برگ گزشتہ روز اپنے ایک انٹرویو میں کہا کہ اگر امریکی فوجی یورپ میں ہی ٹھہرتے ہیں تب تو یہ نیٹو کے لیے ایک عزم ہوگا لیکن اگر انہیں بحرالکاہل میں تعینات کیا جاتا ہے تو اس کا مطلب یہ ہوگا کہ امریکا کی حکمت عملی بدل گئی ہے، پھر اس سے نیٹو کے اندر نئی بحث شروع ہو گی۔انہوں نے کہا کہ روس سے توانائی کی سپلائی کے لیے متنازعہ نارڈ سٹریم پائپ لائن پر بات چیت کی جاسکتی ہے تاہم پابندیاں عائد کرنے سے متعلق امریکی دھمکی عالمی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہے۔
 
انہوں نے کہا کہ جرمن حکومت کی واضح پالیسی ہے کہ اس سلسلے میں امریکی پابندیوں کی دھمکی عالمی قوانین کے عین مخالف ہے اور نارڈ سٹریم2 پروجیکٹ پر نیٹو ارکان کے ساتھ ساتھ یورپی یونین میں بھی بحث چل رہی ہے اور اس بات پر تشویش ظاہر کی جارہی ہے کہ کہیں جرمنی روس کی گیس کی سپلائی پر ہی انحسار نہ کرنے لگے لہذا ہم نے بات چیت کے ذریعے اس تشویش کو کسی حد تک کم کردیا ہے تاہم اس معاہدے کے حوالے سے یوکرین اور پولینڈ کے مفادات پر بھی بات کرنے کی ضرورت ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ ماہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جرمنی میں تعینات امریکی فوجیوں کے انخلا کے ایک منصوبے پر دستخط کیے تھے جس کے مطابق ساڑھے 9 ہزار فوجیوں کو جرمنی سے نکال لیا جائے گا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے جرمنی سے دفاع پر مزید خرچ کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا تھا کہ جرمنی کو نیٹو کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے اپنی مجموعی گھریلو پیداوار (جی ڈی پی) کا 2 فیصد بجٹ دفاع کے لیے مختص کرنا چاہیے اور اگر جرمنی نے اخراجات سے متعلق اپنی یہ ذمہ داریاں پوری نہیں کیں تو امریکا جرمنی میں تعینات ساڑھی34 ہزار فوجیوں میں 10 ہزار تک کی کمی کر دے گا۔