06:20 pm
وزراء کاحفیظ پرعدم اعتماد،جیالوں کی گرفتاریاں مرکزی حکومت کی بوکھلاہٹ ہے(امجدایڈووکیٹ،سعدیہ دانش)

وزراء کاحفیظ پرعدم اعتماد،جیالوں کی گرفتاریاں مرکزی حکومت کی بوکھلاہٹ ہے(امجدایڈووکیٹ،سعدیہ دانش)

06:20 pm

گلگت (نمائندہ خصوصی) پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کے صوبائی صدر امجد حسین ایڈووکیٹ نے شہید سیف الرحمان کے برسی کے جلسے پر رد عمل کااظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ اس طرح کی جلسیاں چلاس کے سید چراغ شاہ پچا چلاس بازار میں روزانہ کرتے ہیں مسلم لیگ ن کی سینئر قیادت اور وزراء نے شرکت نہیں کرکے حفیظ پر عدم اعتماد کردیا ہے جو موجود تھے وہ حواری تھے شخصیات نہیں پورے بلتستان سے ایک حواری نے شرکت کی
مشیر اطلاعات تو ہمنوا ہے ڈپٹی سپیکر کا کوئی لین دین کا مسئلہ تھا اسلئے وہ بھی شریک نہیں ہوئے انہوںنے کہاکہ حفیظ الرحمن کی حکومت میں برسی کے جلسوں کی یہی حالت ہیں تو حکومت نہ ہو تو یہ صرف کشروٹ تک محدود ہوگا۔ انہوںنے کہاکہ برسی کے جلسے میں عوام کی عدم شرکت حفیظ کے لئے نوشتہ دیوار ہیں انہوںنے کہاکہ سیف الرحمان کی برسی میں سینئر مسلم لیگی قیادت اور وزراء کی بڑی تعداد اور پورے بلتستان ریجن نے شرکت نہیں کرکے حفیظ کو واضح پیغام دیا ہے کہ وقت قریب آچکا ہے ۔پیپلزپارٹی کے صدر نے کہاکہ گزشتہ جلسوں کی طرح اس دفعہ سرمایہ کار نظر نہیں آئے جو ہر برسی کے جلسے میں بڑے بڑے اشتہارات دیتے تھے اس دفعہ کوئی اشتہار نظر نہیں آیا ۔ حفیظ پر سرمایہ کاری کرنے والوں نے بھی شاید محسوس کرلیا ہے انہوںنے کہاکہ حفیظ کی حیثیت چلاس کے سید چراغ شاہ پچا جیسی ہوگئی ہے۔گلگت ( اوصاف نیوز ) پاکستان پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کی سیکریٹری اطلاعات سعدیہ دانش نے میڈیا کو جاری اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ کوئی بھی رکاوٹ،جبر، ظلم اور تشدد جیالوں کو اپنے قائد سے دور نہیں رکھ سکتی، یہ وہ جیالے ہیں جو"جئے بھٹو" کا نعرہ لگا کر پھانسی کا پھندا چومتے ہیں، پر امن اور نہتے کارکنان ریاستی جبر اور تشدد اس بات کا ثبوت ہے کہ ضیاء کے مشن پر عمل پیرا حکومت بھٹو کے نواسے سے کتنی خوفزدہ ہے، پیپلزپارٹی کی قیادت کو خطرات کا سامنا ہے اس کے باوجود حکومت جان بوجھ کر مکمل سیکورٹی دینے سے کترا رہی ہے۔سعدیہ دانش نے کہا کہ خود دھرنے دیکر ملکی معیشت اور سلامتی کو نقصان پہنچانے والے اور اداروں کے تقدس کو پامال کرنے والے عمران خان نیب اور پولیس کے زریعے بدترین سیاسی انتقام اور ریاستی جبر اور ظلم کی داستان رقم کر کے اپنا آمرانہ چہرہ بے نقاب کیاہے۔ بلاول بھٹو زرداری بین الاقوامی سطح پر مقبول اور عوامی لیڈر ہیں جن کو کھلے عام سیکورٹی خطرات کا سامنا ہے اور ان کی سیکیورٹی پر کوئی بھی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ چئیرمین بلاول بھٹو زرداری اور آصف علی زرداری آئین اور قانون کی پاسداری کرتے ہوئے پیش ہوئیلیکن حکومت انہیں سیکورٹی فراہم کرنے میں ناکام رہی،سینکڑوںپر امن کارکنوں کی گرفتاری حکومتی بوکھلاہٹ کا ثبوت ہے۔گلگت(شمس الرحمن شمس) پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کے صوبائی صدر امجد حسین ایڈووکیٹ ،سنیر نائب صدر جمیل احمد صوبائی سیکریٹری اطلاعات سعدیہ دانش نے کہا کہ حفیظ الرحمن گلگت بلتستان کا چراغ شاہ بن گیا ہے حفیظ نے جو جلسی کیا ہے اس طرح کی جلسیاں چراغ شاہ دیامر میں روزانہ کی بنیاد پر کرتا ہے حفیظ الرحمن پیپلز پارٹی پر تنقید کرنے کے بجاے اپنی جماعت کو سنھبالے کیونکہ ن لیگ کو اشرف صدا اور فاروق میر کی حد تک محدود کر کے رکھ دیا ہے مشرف نے جتنا نقصان مسلم لیگ ن کو نہیں پہنچایا تھا اتنا نقصان حفیظ نے پہنچایا ہے جلسے بلتستان اور دیامر کی قدآور شخصیات نے جلسے میں شرکت ہی نہیں کی دیامر اور بلتستان کے ایک وزیر ببھی جلسے میں موجود نہیں تھے حفیظ الرحمن اب عوامی مقبولیت کھو چکے ہیں انہوں نے مزید کہا کہ حفیظ نے جب چار سالہ کارکردگی کے لئے وزراء کا اجلاس بلایا تو کسی بھی ذمہ دار وزیر نے شرکت نہیں کیا حفیظ الرحمن عملاً ختم ہو چکے ہیں انشا اللہ جب سپریم اپلیٹ کورٹ میں فل بینچ بیٹھے گا تو اس دن حفیظ جعلی ڈگری کیس میں نااہل ہو جاے گا انہوں نے مزید کہا کہ نوکریاں بھیچنا کوئی بری بات نہیں ن لیگ نے گلگت بلتستان کی عزتوں کو نیلام کیا حفیظ لرحمن نے ساتھ ساتھ ٹھیکے بھی سرعام فروخت کئے نوکریوں میں کسی غریب آدمی کا بلا ہوا ہوگا لیکن حفیظ الرحمن نے خاص مافیے کے ذریعے کرپشن اور لوٹ مار کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ ن لیگ گلگت بلتستان سے مکمل ختم ہو چکی ہے اب نظریاتی لوگ بھی حفیظ الرحمن کی وجہ سے ن لیگ سے نفرت کر رہے ہیں اور اندرونی بغاوتیں کر رہے ہیں حفیظ الرحمن اب جتنا بھی جھوٹ بھولیں اب ن کا گلگت بلتستان سے نام مٹ چکا ہے انہوں نے مزید کہا کہ گلگت بلتستان میں موجودہ صورت حال میں ٹھکیوں میں بھی حفیظ ہاتھ پاوں مارنا چاہتا ہے سلطان آبادپل پر جو ٹھکیدار پری ہوے ہیں ان کو ہٹا کر من پسند ٹھکیداروں کو پری کرنے کے لئے ورکس کے حکام کو دباو ڈال کر رہا ہے مگر اس بار ایسا ہونا نہیں دینگے اور شدید احتجاج کرینگے۔

تازہ ترین خبریں