05:42 pm
وزراء کے کرپشن بارے بیانات وائٹ پیپر،تحقیقاتی ادارے آنکھیں کھولیں(سعدیہ دانش)

وزراء کے کرپشن بارے بیانات وائٹ پیپر،تحقیقاتی ادارے آنکھیں کھولیں(سعدیہ دانش)

05:42 pm

گلگت (شمس الرحمن شمس) پیپلزپارٹی گلگت بلتستان کی صوبائی سکریٹری اطلاعات سعدیہ دانش نے کہا ہے کہ صوبائی وزراء ایک دوسرے کی کرپشن کا پول کھول رہے ہیں اور انکے بیانات اعترافِ جرم ہیں یہ بیانات بذاتِ خود حکومت کے خلاف وہائٹ پیپر ہیں۔ اسکے بعد بھی اگر تحقیقاتی ادارے آنکھیں بند رکھیں گے تو پھر یہ بہت بڑی زیادتی ہوگی۔گڈ گورننس کا راگ الاپنے والی حفیظ سرکار کی کرپشن کی داستانیں اب کھل کر سامنے آنے لگی ہیں
۔ٹھیکوں کی اپنوں میں بندربانٹ اور نوکریوں کی فروخت کے علاوہ اب تک کوئی کارکردگی نظر نہیں آئی۔اب تو صوبائی حکومت کے ذمہ دار لوگ اور وزرائ￿ خود کھلی کرپشن کا اعتراف کر رہے ہیں۔جن لوگوں نے اربوں روپے کی کرپشن کی ہے وہ پیپلز پارٹی پر الزامات لگا رہے تھے۔نیب اور دیگر ادارے اگر شفاف تحقیقات کریں تو ہر منصوبے کے پیچھے کرپشن کی داستانیں ہیں اور یہ سب وزیراعلیٰ کی ایما پر ہورہا ہے بڑے بڑے پراجیکٹ میں وزیراعلیٰ پارٹنر بنے ہوئے ہیں پیپلزپارٹی مطالبہ کرتی ہے کہ اس معاملے کی تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمیشن تشکیل دیا جائے تاکہ کرپٹ لوگوں کو منظرِ عام پر لا کر احتساب کیا جا سکے۔انہوں نے مزید کہا کہ ججوں کی تقرری جوڈیشل کونسل کے ذریعے کی جائے ورنہ اپنی مرضی کے ججوں کی تعیناتی عدلیہ کے ساتھ کھلواڑ کے مترادف ہوگا اور پیپلز پارٹی اس کے خلاف بھرپور احتجاج کرے گی.دوسری طرف گلگت اور سکردو میں اعصاب شکن لوڈ شیڈنگ سے نظامِ زندگی مفلوج ہوچکا ہے۔بجلی کا نام و نشان تک نہ?ں ہے جبکہ حفیظ سرکار سمارٹ میٹرز کے ذریعے کمیشن کے بہانے تلاش کر رہی ہے۔گلگت بلتستان کے عوام اندھیروں میں ہیں اور صوبائی حکومت کرپشن کے نت نئے طریقے دریافت کرنے میں لگی ہوئی ہے۔گلگت بلتستان میں بدترین بجلی بحران پر وزیر اعلیٰ اور وزرائ￿ کی خاموشی لمحہِ فکریہ ہے بجلی بحران کے خاتمے کے نام پر جو جنریٹر لائے گئے ہیں اس کے پیچھے بھی کرپشن اور کمیشن کی داستان چھپی ہوئی ہے۔گلگت اور سکردو میں مکمل طور پر اندھیروں کا راج ہے اور متعلقہ محکمے سوئے ہوئے ہیں.طلبہ,کاورباری افراد سمیت تمام شعبہ ہائے زندگی بری طرح متاثر ہو رہے ہیں۔

تازہ ترین خبریں