06:11 pm
محکمے ترقیاتی بجٹ کا100فیصداستعمال یقینی بنائیں(قائمہ کمیٹی)

محکمے ترقیاتی بجٹ کا100فیصداستعمال یقینی بنائیں(قائمہ کمیٹی)

06:11 pm

گلگت(اوصاف نیوز)محکمہ پلاننگ کی طرف سے اسمبلی کی قائمہ کمیٹی کو سرکاری محکموں کو ریلیز کردہ ترقیاتی بجٹ اور اسکے استعمال کی تفصیلات کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ اس سال اگر محکموں نے بجٹ خرچ کرنے میں سستی سے کام لیا توآئندہ مالی سال کے ترقیاتی بجٹ میں کٹ لگنے کا خدشہ ہے۔کئی سرکاری محکمے سستی دکھا رہے ہیں اورانکے پاس ترقیاتی بجٹ پڑاہوا،
کئی محکموں نے ابھی تک ترقیاتی بجٹ کے تیسرے کوارٹر کے لیے ڈیمانڈ بھی نہیں بھیجا ہے جبکہ مالی سال ختم ہونے میں کم وقت باقی ہے۔ترقیاتی بجٹ کی مد میں وفاق سے 9.9 ارب کی ریلیز مل چکی ہے جسکو محکموں نے مجموعی طور پر 55 فیصد خرچ کیا ہے اور45 فیصد باقی ہے۔4.2 ارب کی ریلیز وفاق سے ملنا باقی ہے ریلیز شدہ پیسے جب تک خرچ نہیں کرینگے وفاق مزید ریلیز نہیں دیتا ہے۔اس پر کمیٹی نے سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ محکمے ترقیاتی بجٹ کے استعمال میں نہایت سستی سے کام لے رہے ہیں جسکی وجہ سے علاقے کا ترقیاتی عمل متاثر ہورہا ہے ۔اس صورتحال کو ہر گز برداشت نہیں کیا جائیگا۔گزشتہ سال منظور شدہ ترقیاتی سکیمیں ابھی تک ٹینڈر نہیں ہوئی ہیںجوکہ علاقے کے ساتھ ذیادتی ہے۔کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ ترقیاتی بجٹ کے سو فیصد استعمال کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات کرینگے اور جو بھی اس میںغفلت سے کام لے اسکے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائیگی۔قائمہ کمیٹی برائے محکمہ پلاننگ،ورکس اور واٹراینڈ پاور کا اجلاس چیئرپرسن رانی عتیقہ غضنفر کی صدارت میں گزشتہ روزاسمبلی کے کمیٹی روم میں منعقد ہوا جس میں کمیٹی کے ممبران ڈپٹی سپیکر جعفراللہ خان،ممبراسمبلی سلیمہٰ بی بی اور محکمو ں کے ذمہ داروں نے بھی شرکت کی۔اجلاس میں کمیٹی نے ترقیاتی بجٹ کے استعمال کی رفتار کو غیرتسلی بخش قرار دیتے ہوئے فیصلہ کیا ہے کہ سو فیصد بجٹ کے استعمال کو یقینی بنانے کے لیے تمام قائمہ کمیٹیوں کا مشترکہ اجلاس چھ اپریل کو طلب کرکے تما م محکموں کے سربراہان کے ساتھ ملکر لائحہ عمل طے کیا جائیگا۔اس اجلاس میں جن محکموں نے ترقیاتی بجٹ کے استعمال میں سستی سے کام لیا ان سے وجوہات معلوم کرینگے اور ترقیاتی بجٹ کے سو فیصد استعمال کو ہر صورت یقینی بنائیںگے۔اس موقع پر قائمہ کمیٹی نے سیکریٹری ورکس کی اجلاس میں عدم شرکت پر سخت برہمی کاظہار کرتے ہو ئے کہا کہ یہ دوسر ی دفعہ سیکریٹری ورکس اجلاس میں شرکت نہیں کررہے ہیںاور اسمبلی کی کمیٹی کی تضحیک کررہے ہیں۔اس قسم کا رویہ کسی صورت قابل برداشت نہیں ہے۔کمیٹی نے اسمبلی سیکریٹریٹ کو ہدایت کی ہے اس پر سیکریٹری کو لیٹر لکھے اور اگلے اجلاس میں ان کی شرکت یقینی بنائیں۔تاہم کمیٹی کے اجلاس میں محکمہ ورکس کے دو آفیسران نے تاخیر سے پہنچ کر کمیٹی کو تفصیلات سے آگاہ کیا۔اس موقع پر سیکریٹری واٹر اینڈ پاور نے کمیٹی کو گلگت بلتستان میں جاری بجلی کے منصوبوں ،ترقیاتی بجٹ کی تفصیلات اور بجلی کی موجودہ صورتحال پر تفصیلی بریفنگ دی۔کمیٹی نے محکمہ واٹر اینڈ پاور کی بریفنگ پر اطمنان کا اظہار کرتے ہوئے ہدایات جاری کیے ہیں کہ ہینزل پاور پروجیکٹ کو جلد از جلد ٹینڈر کرانے کے لیے کشمیر آفیئرز کے ساتھ مئوثر رابطہ قائم کرے اور اس منصوبے کومیرٹ پر جوبھی اترے اس کمپنی کو ٹھیکہ دے کر جلد کام شروع کرائے۔کمیٹی نے محکمہ واٹر اینڈ پاور کو یہ بھی ہدایت کی ہے کہ آئندہ غیر ضروری طور پر نالوں پر پاور منصوبے لگانے سے گریز کرے کیونکہ سردیوں میں نالوں کا پانی کم ہو تا جس سے بجلی کی پیداوار کم ہوتی ہے اور گرمیوں میں نالوں میں سیلاب کا خطرہ ذیادہ ہوتا ہے جسکی وجہ سے علاقے میں بجلی کا شدید بحران پیدا ہوا ہے۔

تازہ ترین خبریں