06:19 pm
طلبہ ملک کاسرمایہ،اپنی تمام ترصلاحیتیں حصول علم کے لیے وقف کریں،فورس کمانڈر

طلبہ ملک کاسرمایہ،اپنی تمام ترصلاحیتیں حصول علم کے لیے وقف کریں،فورس کمانڈر

06:19 pm

چلاس(محمدقاسم)فورس کمانڈر گلگت بلتستان میجر جنرل احسان محمود نے کیڈٹ کالج چلاس فرسٹ پیچ اوٹ پاسنگ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ طلبہ ملک کا سرمایہ اور ملکی ترقی کا ضامن ہوتے ہیں۔اپنے تمام تر صلاحیتں حصول علم کے لئے وقف کریں اور ملکی سطح کے کلیدی عہدوں پہ فائز ہو کر ملک کا نام روشن کریں ایک روشن مستقبل آپ کا منتظر ہے اور ایک دن ضرور آپ کے خواب شرمندہ تعبیر ہونگے
۔انہوں نے کہا کہ دیامر کے طلباء پے پناہ اور خدادا صلاحیتوں کے مالک ہونے کے ساتھ ساتھ اور نہایت ذہین اور فطین ہیں۔ان کی صلاحیتوں کو نکھار دیا جائے تو عالمی سطح پہ اپنی ذہانت کا لوہا منوا کر ملک کا نام روشن کریں گے۔انہون نے کہا کہ جب سے دیامر تعلیمی جرگہ کی بنیاد رکھی ہے دیامر میں تعلیمی پسماندگی کے خاتمے کے لئے مثبت آرا اور تجاویز سامنے آر ہے ہیں۔علاقے کے تمام لوگوں کی مشاورت سے دیامر میں علم کا چراغ روشن ہوگا اور علاقے کے کلچر اور اسلام کی روشنی کو ملحوظ خاطر رکھ کر علم کی شمع سے ہر فرد کو روشناس کرایا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ حصول علم کے لئے اچھی بلڈنگ اور محل کی ضرورت نہیں۔ایک اچھا معلم پانچ کلاسوں میں طلبائ￿ کو پڑھا سکتا ہے۔اگر معلمین کی کمی ہوگی تو معاشرے کے اندر سے اساتذہ نکلیں گے۔انہوں نے پرنسپل کیڈٹ کالج چلاس اور تمام سٹاف کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ آپ کی شب روز محنت کے نتیجہ میں کیڈٹ کالج چلاس ایک اعلی مقام حاصل کر چکی ہے۔قوم آپ کی محنت اور خلوص کے مقروض ہیں۔آپ معاشرے کی تعمیر و ترقی میں اہم کردار ادا کیا خو کہ تاریخ کے سنہرے حروف میں لکھا جا ئگا۔قبل ازیں کیڈٹ کالج چلاس گراونڈ میں کیڈیٹس نے شاندار پریڈ کا مظاہرہ کر کے سامعین کو محفوظ کیا تو شرکائ￿ کے خوب تالیاں بجا کر پاکستان اور پاک فوج زندہ باد کے فلک شگاف نعرے لگائے۔اس کے بعداقبال ہاوس کے کیڈیٹ مبین احمد ترنگفہ نے جناح ہاوس کے بشیر احمد سلطان کو پرچم حوالہ کیا۔جناح ہاوس رواں سال کا چیمپیئن رہا اور اعزازی طور پہ پرچم حوالہ کر دیا۔تقریب کے آخر میں مہمان خصوصی فورس کمانڈر گلگت بلتستان میجر جنرل احسان محمود نے کیڈٹ کالج چلاس میں نمایاں کارکردگی اور پوزیشن دیکھانے والے کیڈیس کو نقد انعام سے نوازا۔اس موقع پہ دیامر کے مختلف محکموں کے سربراہان کے علاوہ مختلف سیاسی، مذہبی،سماجی اور کیڈیس کے والدین نے پروگرام میں شرکت کر کے اوٹ پاسنگ پریڈ کو چار چاند لگا دئے۔چلاس(محمدقاسم)فورس کمانڈر گلگت بلتستان میجر جنرل احسان محمود نے فنی تربیت برائے خصوصی افراد کے اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ سپیشل افراد معاشرے کا اہم حصہ ہیں ان پہ توجہ دیکر ان میں پوشیدہ صلاحیتوں سے پورا معاشرہ مستفید ہو سکتا ہے۔ان کو ہنر مند بناکر معاشرے میں اعلی مقام کا مستحق بنایا جائیگا۔یہی چراغ جلیں گے تو روشنی آئے گی۔قراقرم کیمپس دیامر میں منعقدہ تقریب سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ معاشرے کی اہمیت اور افادیت دین اسلام نے واضع کیا ہے۔پاکیزہ معاشرہ کی تشکیل نہ ہوتی تو انسان پہاڑ کے اوپر جوگیوں میں رہایش پذیر ہوتے۔آپس میں لڑتے اور تنہائی میں زندگی گرارتے پہ مجبور ہوتے۔اللہ نے اجتماعیت کی تشکیل دی اور آج مل جل کر زندگی گزار رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد معاشرے پر بوجھ قطعی طور پر نہیں ہیں۔یہ اللہ کی طرف سے خصوصی انعام ہیں۔اور معاشرے کے دیگر افراد کے لئے آزمائش بھی ہیں۔انکے ہمارے اوپر حقوق ہیں۔ ہم نے انکے حقوق کا خیال رکھنا ہے۔ان کو ہنر مند بنا کے ایک باوقار شہری بنانا ہماری اولین ترجیح ہے۔ان کے اندر صلاحیتوں کا خزانہ موجود ہے۔ان کے صلاحتوں کو اجاگر کرنے میں پاک آرمی کا بنیادی کردار ہے۔اور پاک آرمی اس کے پشت پہ کھڑی ہے۔ان کی مزید تربیت اور ٹکنیکل معاونت کا سلسلہ جاری رہے گا۔انہوں نے معذور افراد کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ اپنے ہنر کے ذریعے اپنا مقام خود پیدا کریں۔اور اس قدر باوقار بن جائیں کی معاشرے کے دیگر افراد آپ کے نقش قدم پہ چلیں اور لوگ آپکے ہنر سے مستفید ہوں۔انہوں نے جی بی سکاوٹس کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ ان کی انتھک کوششوں سے سپیشل افراد معاشی طور پر اپنے پاوں پہ کھڑے ہونے کے قابل ہوگئے۔اس موقع پہ انہوں نے تمام معذور افراد سے فردا" فراد" ملے اور حال احوال دریافت کیا اور تمام معذور افراد میں ٹکنیکل کٹ بھی فراہم کیے۔جبکہ معذور ایسوسی ایشن دیامر کے صدد رفیع اللہ نے نایاب مرغ زریں کا تحفہ بھی پیش کیا۔تقریب ہیں دیامر کے سیاسی سماجی اور دیگر افراد نے شرکت کی۔چلاس(ڈسٹرکٹ رپورٹر) فورس کمانڈر گلگت بلتستان میجر جنرل احسان محمود نے کہا دیامر کی مقامی میڈیا نے ہمیشہ مثبت کردار ادا کیا ہے۔دیامر کی میڈیا کا اچھا اور مظبوظ کردار رہا ہے۔دیامر کی مقامی میڈیا کو خود مشاہدہ کر رہا ہوں یہاں کے صحافی علاقے کے بہتر انداز میں مثبت رپورٹنگ کر رہے ہیں۔