05:44 pm
دسوواٹرچینل فوراً بحال کیاجائے ورنہ گلگت سکردوروڈپردھرنادینگے،عمائدین حراموش

دسوواٹرچینل فوراً بحال کیاجائے ورنہ گلگت سکردوروڈپردھرنادینگے،عمائدین حراموش

05:44 pm

گلگت (اوصاف نیوز) عمائدین حراموش نے دھمکی دی ہے کہ دسو واٹر چینل کی بحالی کے لئے فوری اقدامات نہ اٹھائے گئے تو گلگت سکردو روڑ پر دھرنا دیا جائے گا اور دھرنا تب تک جاری رہے گا جب تک واٹر چینل کی بحالی پر کام کا آغاز نہیں کیاجاتا۔ اوصاف سے گفتگو کرتے ہوئے دسو حراموش سے تعلق رکھنے والے عمائدین سابق ممبر یونین کونسل میر عالم ،شاہجان اور مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما حسن ترنگھ نے کہا ہے کہ حراموش
کے عوام کو سبز باغ دیکھا کر ووٹ بٹورنے والے مشکل کی اس گھڑی میں غائب ہیں اور اسلام آباد میں بیٹھ کر اخباری بیانات کے ذریعے عوام کو بیوقوف بنانے کی کوشش کررہے ہیں جبکہ مقامی انتظامیہ کئی مرتبہ گزاری گئی درخواستوں پر ٹس سے مس نہیں ہورہی ہے اور 400 سے زائد گھرانوں پر مشتمل دسو گائوں کربلا کا منظر پیش کررہا ہے ہزاروں درخت سوکھ رہے ہیں اور ہزاروں کنال پر کاشت کی گئی فصل تباہ ہورہی ہے لیکن اکتوبر سے لیکر اب تک نہ تو عوامی نمائندوں نے واٹر چینل کی بحالی کے لئے سنجیدہ اقدامات اٹھائے ہیں اور نہ ہی انتظامیہ نے۔ انہوںنے کہاکہ صوبائی وزیر تعمیرات ڈاکٹر اقبال اورلیڈر آف اپوزیشن دونوں کا تعلق حراموش سے ہے لیکن دونوں نے حراموش کے عوام کو بے یارو مددگار چھوڑ رکھا ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے عمائدین دسو حراموش نے اس بات پر بھی افسوس کااظہار کیاکہ 5 روز تک عمائدین حراموش وزیر اعلیٰ سے ملنے کے لئے تگ و دو کرتے رہے لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی اور وزیر اعلیٰ نے ملاقات کیلئے وقت نہ دیکر بھر پور تعصب کا مظاہرہ کیا ہے اور اگر اس طرح کا واقعہ جگلوٹ سئی ، پڑی ، محمود گڑھ یا مناور میں پیش آتا تو گھنٹوں کے اندر فنڈز کی فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے اقدامات کیلئے احکامات جاری ہو چکے ہوتے ، میر عالم ، شاہجہان اور حسن ترنگفہ نے اوصاف سے گفتگو کرتے ہوئے مزید بتایا کہ اکتوبر 2018میں لینڈ سلائیڈنگ کا سلسلہ شروع ہو گیا تھا اور علاقے کے عوام نے اپنی مدد آپہ کے تحت چینل کا کام مکمل کرکے پانی کا نظام بحال کر دیا تھا لیکن مارچ میں ہونے والے سلائیڈنگ کی وجہ سے پانچ سو میٹر چینل کا نام و نشان تک مٹ چکا ہے اور ایک ہفتے کے اندر اس چینل کی بحالی کیلئے اقدامات نہ اٹھائے گئے تو گلگت سکردو روڈ پر دھرنا دیکر احتجاج کیا جائیگا ۔

تازہ ترین خبریں