05:51 pm
فوجی عدالتوں سے سزایافتہ علی رحمت گلگت جیل میں ہارٹ اٹیک سے چل بسے(لواحقین کااحتجاج)

فوجی عدالتوں سے سزایافتہ علی رحمت گلگت جیل میں ہارٹ اٹیک سے چل بسے(لواحقین کااحتجاج)

05:51 pm

گلگت ( نمائندہ خصوصی ) رینجرز پر فائرنگ کرنے کے الزام میں فوجی عدالتوں سے عمر قید کی سزا پانے والے علی رحمت ساکن مجینی محلہ ڈسٹرکٹ جیل گلگت میں دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گئے ، لواحقین کا احتجاج ، ڈسٹر کٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گلگت میں توڑ پھوڑ ، پونیال روڈ ، ہسپتال روڈ ، مجینی محلہ مغل پورہ میں احتجاجی دھرنا ، ہوم سیکریٹری ، آئی جی جیل خانہ جات ، سپرٹنڈنٹ جیل کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ
۔ 13اکتوبر 2005میں فسادات کے دوران رینجرز پر فائرنگ کے الزام میں 14افراد کے خلاف فوجی عدالتوں سے عمر قید کی سزا ہوئی تھی ملزمان ڈسٹرکٹ جیل گلگت میں اسیری کے دن کاٹ رہے ہیں ان ملزمان میں ایک ملزم علی رحمت ساکن مجینی محلہ مغل پورہ کو گزشتہ روز دل کا دورہ پڑا جسے فوری طور پر ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال گلگت لایا گیا لیکن وہ جانبر نہیں ہو سکے اور انتقال کر گئے ، مرحوم کے انتقام کی خبر سن کر انکے لواحقین فوری طور پر ہسپتال پہنچے اور سخت احتجاج کرتے ہوئے ہسپتال کے کمروں کے شیشے بھی توڑ دئیے ، پیر کے روز صبح 9بجے کے قریب لواحقین نے سخت احتجاج کرتے ہوئے پونیال روڈ ، ہسپتال روڈ اور مجینی محلہ مغل پورہ میں احتجاجی دھرنا دیکر روڈ بند کر دیا ۔ بعد ازاں حکام بالا سے مذاکرات کے بعد دھرنا ختم کر دیا گیا ، مرحوم کے صاحبزادے کمیل عباس نے سٹی تھانہ گلگت میں درخواست گزاری ہے کہ آئی جی جیل خانہ جات ، ہوم سیکریٹری ، سپرٹنڈنٹ جیل ، ڈپٹی سپرٹنڈنٹ جیل کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے ، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ حکام بالا کی عدم دلچسپی اور غفلت کے باعث انکے والد علی رحمت بر وقت علاج کی سہولت میسر نہ ہونے سے زندگی کی بازی ہار گئے ہیں لہذا انکے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے ۔

تازہ ترین خبریں